اودھے پور میں ایک شخص کا سر تن سے جدا کرنے کے الزام میں دو افراد گرفتار - BBC News اردو

28/06/2022 8:40:00 PM

انڈیا: اودھے پور میں ایک شخص کا سر تن سے جدا کرنے کے لیے الزام میں دو افراد گرفتار، علاقے میں شدید کشیدگی

انڈیا: اودھے پور میں ایک شخص کا سر تن سے جدا کرنے کے لیے الزام میں دو افراد گرفتار، علاقے میں شدید کشیدگی

بھارتی ریاست راجھستان کے ڈسٹرکٹ اودھے پور میں ایک شخص کا سر تن سے جدا کیے جانے کے واقعے کے بعد حالات کشیدہ ہیں۔

خبر رساں ادارے اے این آئی نے کہا ہے کہ قتل کے واقعے کے بعد اودھے پور کے کچھ علاقوں میں احتجاج شروع ہو گیا ہے۔ اودھے پور کے ایس پی منوج کمار نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ ’یہ اندھوناک قتل ہے۔ کچھ ملزمان کی شناخت کر لی گئی ہے، پولیس کی ٹیمیں ملزمان کی تلاش کر رہی ہیں۔ ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

اودھے پور پولیس کیا کہتی ہے؟کیا اس قتل کی وجہ بی جے پی کی رہنما نوپر شرما کی سوشل میڈیا پر حمایت میں کی جانے والی پوسٹ ہے؟ اس سوال کے جواب میں ایس پی نے میڈیا کو بتایا ہے ’ہم ان ریکاڈز کو دیکھ رہے ہیں۔ ابھی ہم جائے وقوعہ پر صورتحال کنٹرول کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ہم ہر چیز کو ملحوظ خاطر رکھ کر تفتیش کاروں سے بات کر رہے ہیں۔‘

مزید پڑھ:
BBC News اردو »

“Lahore da pawa Akhtar lawa” ye Chaudhary Akhtar lawa kon hai aur kya karta hai? Janiye…

'لاہور دا پاوا اختر لاوا' یہ چوہدری اختر لاوا کون ہے اور کیا کرتا ہے؟ جانیے#akhtarlawa #lahoredapawa #yasirshami مزید پڑھ >>

جب آزادی اظہار کے نام پہ اور سیاست کے نام پہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی شان میں گستاخی کے مرتکب ہوں گے تو یہ ردعمل فطری ہے۔ تمام مذاہب کے بڑوں کو اس بارےسوچنا اور عمل کرنا ہو گا۔ مسلمانوں کی طرف سےکسی کےمذہبی جذبات مجروح ہوئے کیا؟

عمران خان کے خلاف سنگین غداری کے مقدمے کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائرپی ٹی آئی کی باغی رہنما عائشہ گلالئی نے مطالبہ کیا ہے کہ افواج پاکستان کے خلاف مہم چلانے پر عمران خان کے خلاف غداری کا مقدمہ چلایا جائے۔

کراچی میں لوڈشیڈنگ کیخلاف جگہ جگہ احتجاج، ماڑی پور میں خاتون جاں بحق - ایکسپریس اردوماڑی پور میں 22 گھنٹے سے احتجاج جاری، مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پولیس کی ہوائی فائرنگ اور لاٹھی چارج آج کراچی اور اور اس کے ارد گرد عوام کا بھرپور احتجاج ہوا جن کا تعلق کسی بھی پارٹی سے نہیں تھا بیچارے غریب عوام تھے ہماری طرح کے لوگ تھے ان پر ظلم کیا گیا لیکن آج کوئی بھی ٹی وی ٹاک شو میں اس کی بات نہیں کرے گا بھرپور بات ہونی چاہیے مجرموں کو سزا ملنی چاہیے جس نے ظلم کیا Dear all 'Nan 20 rs ka ho gya hai' ac waly kamron sy nikalna pary ga, himmat karni ho gee. pmln_org PakPMO CMShehbaz Marriyum_A MaryamNSharif hinaparvezbutt BBhuttoZardari HamidMirPAK ImranRiazKhan asmashirazi AnwarLodhi ImranRiazKhan KhawajaMAsif SaleemKhanSafi

سندھ کے 14 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کے غیر حتمی نتائج، پیپلز پارٹی نے میدان مارلیااب تک کے غیر حتمی اور غیرسرکاری نتائج کے مطابق پیپلز پارٹی نے میونسپل کمیٹی کی 137 اورجی ڈی اے نے 14 نشستیں جیت لیں، 12 آزاد امیدوار کامیاب ہوئے انتخابات تھے یا میدان جنگ تھا؟ جیئی بھٹو کھا گیا تعصب وڈیرہ شاہی اور جہالت اس ہجوم کو قوم بننے کے لیۓ صدیوں کی مسافت طے کرنا ہو گی۔

سوات کے الیکشن میں ہماری کامیابی عمران خان کے بیانیے کی جیت ہے: محمود خانسوات پی ٹی آئی کا گڑھ ہے اور آئندہ بھی رہے گا، خیبر سمیت ملک بھر میں پی ٹی آئی اور عمران خان کی عوامی مقبولیت میں اضافہ ہو رہا ہے: وزیراعلیٰ کے پی کے یہ آپکی بے شرمی کی جیت ہے Dhandi zada election مینگو

ڈالر کے انٹربینک نرخ میں اضافہ، اوپن مارکیٹ میں کمی - ایکسپریس اردوانٹربینک میں ڈالر 47 پیسے بڑھ کر 207.94 روپے اور اوپن مارکیٹ میں ڈالر 2.50 روپے سستا ہوکر 206.50 روپے پر بند

بھارت میں چلتی گاڑی میں ماں اور بیٹی کے ساتھ جنسی زیادتی کا واقعہروڑکی(ڈیلی پاکستان آن لائن ) بھارتی ریاست اتر کھنڈ کے علاقے روڑکی میں خاتون اور اس کی چھ سالہ بیٹی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا انتہائی افوسناک واقعہ

بی جے پی رہنما کا پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازع بیان، قطر کا انڈیا سے معافی مانگنے کا مطالبہ خبر رساں ادارے اے این آئی نے کہا ہے کہ قتل کے واقعے کے بعد اودھے پور کے کچھ علاقوں میں احتجاج شروع ہو گیا ہے۔ اودھے پور کے ایس پی منوج کمار نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ ’یہ اندھوناک قتل ہے۔ کچھ ملزمان کی شناخت کر لی گئی ہے، پولیس کی ٹیمیں ملزمان کی تلاش کر رہی ہیں۔ ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ اودھے پور پولیس کیا کہتی ہے؟ کیا اس قتل کی وجہ بی جے پی کی رہنما نوپر شرما کی سوشل میڈیا پر حمایت میں کی جانے والی پوسٹ ہے؟ اس سوال کے جواب میں ایس پی نے میڈیا کو بتایا ہے ’ہم ان ریکاڈز کو دیکھ رہے ہیں۔ ابھی ہم جائے وقوعہ پر صورتحال کنٹرول کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ہم ہر چیز کو ملحوظ خاطر رکھ کر تفتیش کاروں سے بات کر رہے ہیں۔‘ منگل کی دوپہر جب کنہیہ لال پر حملہ کیا گیا تو وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے۔ اس واقعے کی ویڈیو بھی منظر عام پر آئی ہے۔ وزیراعلی راجھستان اشوک گلہٹ نے کہا ہے کہ وہ علاقے میں نوجوان کے اندھوناک قتل کی مذمت کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں ہر ایک سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ پر امن رہے اور واقعے کی ویڈیو شئیر نہ کریں۔ انھوں نے کہا ہے کہ لوگ واقعے کی ویڈیو شیئر نہ کریں کیونکہ اس سے مجرموں کی جانب سے سوسائٹی میں نفرت پھیلانے کا مقصد پورا ہو جائے گا۔ اس وقعے کے بعد ہندو تنظمیوں میں غم و غصہ نظر آ رہا ہے اور ان کی جانب سے علاقے کی مارکیٹوں کو بند کرا دیا گیا ہے۔ یہ بھی اعلان کیا گیا ہے کہ یہ بندش غیر معینہ مدت تک کے لیے ہے۔ قتل کے واقعے کے بعد راجھستان کی حکومت نے پوری ریاست میں ہائی الرٹ جاری کیا ہے۔ پولیس کے ڈائریکٹر جنرل سری لاتھر نے پورے میڈیا سے اپیل کی ہے کہ وہ قتل کے اس دہلا دینے والے واقعے کی ویڈیو نشر نہ کریں۔ پولیس کے ایڈیشنل ڈایریکٹر جنرل برائے قانون ہاوا سنگھ گوماریا نے عام لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اس واقعے سے متعلق ویڈیوز کو وائرل نہ کریں۔ ان کا کہنا ہے کہ جنھوں نے یہ ویڈیوز بنائی ہیں ان کے حلاف قانون کے مطابق کارروائی ہو گی۔ درجنوں پولیس اہلکار اور افسران اس واقعے کے بعد اودھے پور میں تعینات ہیں۔ متعلقہ عنوانات بھارت اسی بارے میں .Stay tunned with 24 News HD Android App Share (ویب ڈیسک) تحریک انصاف کی باغی رہنما اور سابق رکن قومی اسمبلی عائشہ گلالئی نے مطالبہ کیا ہے کہ افواج پاکستان کیخلاف تحریک انصاف کے مہم چلانے پر سابق وزیراعظم عمران خان پر غداری کا مقدمہ چلایا جائے۔  تفصیلات کے مطابق انہوں نے سپریم کورٹ کو لکھے مراسلے میں کہا کہ فوج کے خلاف مہم چلانے پر عدالت عظمیٰ ازخود نوٹس لے اور تحریک انصاف پر بطور سیاسی جماعت پابندی عائد کی جائے۔ عائشہ گلالئی نے سپریم کورٹ سے استدعا کی کہ سابق وزیراعظم عمران خان کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے جو شرمناک انداز میں افواج پاکستان کو سیاست میں گھسیٹ رہے ہیں۔ یہ بھی پڑھیں: حکومت کا ادویات پر عائد 17 فیصد سیلز ٹیکس واپس لینے کا فیصلہ سابق رکن قومی اسمبلی نے مزید کہا کہ عمران خان ملک میں فوج اور عوام کے درمیان اشتعال انگیزی پھیلا رہے ہیں، حال ہی میں صوبائی حکومت کے پی میں 736 ملین روپے کا عوامی پیسہ خرچ کرکے کارکنان بھرتی کیے گئے۔ Share.کراچی میں بجلی کی طویل بندش کیخلاف گزشتہ روز سے احتجاج جاری ہے:فوٹو:فائل کراچی کے مختلف علاقوں میں بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ سے پریشان شہری احتجاج پر مجبور ہوگئے، ماڑی پور میں 22 گھنٹے سے احتجاج جاری ہے جس کے سبب ہزاروں گاڑیاں پھنس گئیں جب کہ احتجاج کے دوران ایک خاتون جاں بحق ہوگئیں۔ ایکسپریس نیوز کے مطابق کراچی کے مختلف علاقوں میں بجلی کی طویل بندش پر شہری سراپا احتجاج ہیں۔ مختلف علاقوں میں مظاہرین اورپولیس کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ سے سب سے زیادہ متاثر لیاری اوراس کے اطراف کے علاقوں کے مکین ہوئے جو سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاج کیا۔ شہریوں کے احتجاج کے باعث ماڑی پور روڈ، حب ریور روڈ، آرسی ڈی ہائے وے، ایم ٹی خان، مائی کلاچی روڈ اوربوٹ بیسن تک ٹریلر، ٹرک ٹینکر سمیت گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں۔ ماڑی پور میں مظاہرین نے پولیس پر پتھراؤ کیا جبکہ پولیس نے مظاہرین پرلاٹھی چارج کیا اورآنسو گیس کی شلینگ کی۔ متعدد شہریوں کو گرفتار بھی کرلیا گیا۔ پولیس نے مظاہرین کو ہٹانے کے لیے ہوائی فائرنگ بھی کی تاہم مظاہرین منشتر ہونے کے بعد پولیس جاتے ہی دوبارہ سڑک بند کردیتے ہیں۔ ماڑی پور روڈ پر احتجاج کے دوران ایک خاتون ہلاک ہوگئیں۔ ریسیکو ذرائع کے مطابق لیاری میں ہنگورآباد کی رہائشی 60 سالہ میرا بی بی کا انتقال مبینہ طور پر ماڑی پور میں احتجاج کے دوران ہوا۔ ان کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے اسپتال منتقل کردیا گیا۔ ایس ایس پی سٹی کا کہنا ہے کہ خاتون کی عمر 70 سال تھی اوران کی موت طبعی طور پر ہوئی۔ مظاہرین کا کہنا ہے کہ ہمارے علاقے میں گزشتہ 12 گھنٹے سے بجلی بند ہے۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ کے الیکٹرک کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے۔ دوسری جانب گرفتار مظاہرین کو رہا کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اسی طرح بجلی کے بدترین بحران کے باعث لیاقت آباد، جہانگیر آباد، ناظم آباد، پی آئی بی کالونی اورنگی ٹاؤن، کورنگی اللہ والا ٹاؤن، کورنگی الیاس گوٹھ، لانڈھی فیوچر موڑ سمیت دیگر علاقوں کے مشتعل رہائشیوں نے سڑکیں بلاک کیں، پتھراؤ کیا اور کے الیکٹرک اور حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ کراچی میں گزشتہ روز بھی 14 مختلف مقامات پر لوڈشیڈنگ کے خلاف مظاہرے کیے گئے تھے۔ بجلی کی بندش کے خلاف متعدد علاقوں میں پانی کا بھی بحران پیدا ہوگیا ۔ مختلف علاقوں میں پانی کی عدم فراہمی پر بھی احتجاج کیا گیا ۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ ہر ایک گھنٹے بعد دو گھنٹے کے لیے بجلی بند کر دی جاتی ہے۔ متعدد علاقوں میں 4 سے 6 گھنٹے مسلسل بجلی کی فراہمی معطل رہتی ہے جبکہ بلدیہ اتحاد ٹاؤن ، قائم خانی کالونی ، گلشن غازی اور اطراف کے علاقے ، لائنز ایریا اے بی سینیا لائن اور گلشن ظہور ، نارتھ ناظم آباد نصرت بھٹو کالونی ، کورنگی الیاس گوٹھ ، گلشن عریشہ ، جوہر کمپلیکس ، رضوان سوسائٹی ، ملیر ، اسکیم 33 گارڈن ، برنس روڈ اور سٹی ریلوے کالونی میں رات 11 بجے سے ایک بجے تک اور صبح 4 بجے سے 7 بجے تک اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ہوتی ہے جبکہ غیر اعلانیہ بجلی کی بندش کا کوئی ٹائم ہی نہیں ہے۔.سندھ: پہلے مرحلے کے بلدیاتی انتخابات میں پولنگ کا وقت ختم، ووٹوں کی گنتی جاری ٹاؤن کمیٹیوں میں پیپلز پارٹی 230 نشستوں کے ساتھ دیگر جماعتوں سے کافی آگے ہے، جی ڈی اے کے 34 امیدوار اور 27 آزاد امیدوار کام یاب ہوئے ہیں۔ پی ٹی آئی کے7، جے یو آئی کے 3 اور دیگر جماعتوں کے 7 امیدوار کام یاب ہوچکے ہیں۔ خیال رہے کہ اتوار کو سندھ کے 14 اضلاع میں بلدیاتی انتخاب ہوئے، اس دوران دن بھر کہیں گولیاں، کہیں لاٹھیاں چلیں ، کہیں پورا عملہ ہی اغوا کرلیا گیا۔ بلدیاتی انتخاب کے دوران سانگھڑ، نوشہروفیروز، خیرپور، جیکب آباد، سکھر اورکندھ کوٹ کے متعدد پولنگ اسٹیشن میدان جنگ بن گئے ، سیاسی جماعتوں کےکارکنوں اور مخالف گروہوں میں مارا ماری ہوئی ، پرتشدد واقعات میں دو افراد جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوگئے۔ خراب حالات کے باعث کئی مقامات پر پولنگ روکنا پڑی خراب حالات کے باعث کئی مقامات پر پولنگ روکنا پڑی،کندھ کوٹ کے ایک پولنگ اسٹیشن کے عملے کو ڈاکوؤں نے اغوا کرلیا ، سات گھنٹے بعد عملہ بازیاب کرایا گیا تو پولنگ شروع ہوئی تاہم بعد میں الیکشن کمیشن نے الیکشن ملتوی کرنےکا اعلان کرتے ہوئےکہا کہ یوسی 28 پر ووٹنگ کا عمل نئی تاریخ میں کرایا جائےگا۔ نواب شاہ میں سوشل سکیورٹی پولنگ اسٹیشن پر مسلح افراد نے ہنگامہ آرائی کی اور عملے کو یرغمال بنا کر انتخابی سامان لے کر فرار ہوگئے ۔ سانگھڑ کی یونین کونسل 63 میں کشیدگی کے باعث پولنگ عملہ بھاگ گیا ، ٹنڈوآدم میں مخالف جماعتوں کے تصادم میں ایک امیدوار کا بھائی جاں بحق اور سکھر میں جاگیرانی برادری میں تصادم سے ایک شخص مارا گیا ۔ الیکشن کمیشن کی ہدایت پرمتعدد پولنگ اسٹیشنز پرپولنگ کا وقت بڑھایا بھی گیا۔ مزید خبریں :.