India

India

’اتنا کچھ کھونے کے بعد اس شہریت کا کیا کریں؟'

’میرے شوہر نے ہماری تمام زمین اس کیس کو لڑتے ہوئے بیچ دی۔ اس نے مجھے میری شہریت لوٹانے کے لیے وہ سب کچھ کیا جو وہ کر سکتا تھا۔‘ #India

11.9.2019

’میرے شوہر نے ہماری تمام زمین اس کیس کو لڑتے ہوئے بیچ دی۔ اس نے مجھے میری شہریت لوٹانے کے لیے وہ سب کچھ کیا جو وہ کر سکتا تھا۔‘ India

انڈیا کی ریاست آسام میں 19 لاکھ سے زائد افراد کی انڈین شہریت مشکوک ہو گئی ہے تاہم ان میں سے بیشتر خاندان ٹرائیبونل میں اپیل کرنے کی استطاعت ہی نہیں رکھتے ہیں۔

تاہم شہیدا بی بی کہتی ہیں کہ ان کا بچہ حراستی کیمپ کے سخت ماحول کو برداشت نہیں کر پایا۔

وہ ان لوگوں میں شامل ہیں جو آسام میں مشکوک شہریت کے باعث پہلے بھی متاثر ہو چکی ہیں۔

'میرا بیٹا مر گیا، میری زمین بک گئی، میرا خاوند بھی مر گیا۔ اتنا سب کچھ کھونے کے بعد میں اس شہریت کا کیا کروں گی؟'

بچے کی ہلاکت کے بعد اس کی لاش شہیدا کے بھائی کے حوالے کر دی گئی جنھوں نے بعد میں انھیں دفن کیا۔

انھوں نے بتایا: ’چونکہ مجھے جیل کا کھانا پسند نہیں تھا تو وہ 42 ہفتے جن میں میں جیل میں تھی، وہ ہر ہفتے میرے لیے پھل اور گھر کا بنا ہوا کھانا لایا کرتے تھے۔‘

’وہ مسلسل ہماری فروخت کردہ زمین اور مالی صورتحال کے بارے میں فکرمند رہتے تھے۔ اور پھر ایک دن وہ بھی چلے گئے۔'

انارا خاتون کی چھ سالہ بیٹی شاہین اپنے پیروں پر کھڑی نہیں ہو سکتی۔ انارا کے شوہر قدم علی ’مشکوک ووٹر‘ کیس کے سلسلے میں گوالپورا کے حراستی سینٹر میں پچھلے تین برس سے رہ رہے ہیں جس کے باعث انارا اب تک اپنی بیٹی کے آپریشن کے لیے دس ہزار روپے اکھٹے نہیں کر سکیں۔

'مزدوری کر کے بچوں کا پیٹ پالوں، شوہر کی شہریت کے کیس میں وکیل کی فیس دوں یا بیٹی کا آپریشن کراؤں؟'

عصمت کہتے ہیں ’میں سکول نہیں جا سکتا کیونکہ مجھے کام پر جانا ہوتا ہے اور اگر میں مزدوری نہ کروں تو میری ماں کو بھوکے سونا پڑے گا‘

عصمت آسام کے ضلع دارنگ کے تھیرابری گاؤں کے رہائشی ہیں۔ ہماری گفتگو کے دوران وہ اپنے سکول کے دنوں کی خوشگوار یادیں تازہ کرنے لگے۔ وہ بتانے لگے کہ 'مجھے سکول جانے سے، وہاں پڑھنے سے اور پھر اپنے دوستوں کے ساتھ کھیلنے اور گھومنے پھرنے سے محبت تھی۔‘

ان کے والد کے حراست میں لیے جانے کے بعد سے عصمت کی ذمہ داریوں میں اضافہ ہوا ہے اور وہ گھر کے واحد کمانے والے بن گئے ہیں۔ اس کردار کو کم عمری میں نبھانا خاصہ مشکل ہے۔

اپنے والد سے ملنے جانے کے لیے عصمت کو تیزپور جانا پڑتا ہے جہاں جاتے ہوئے انھیں کم از کم ہزار روپے لگ جاتے ہیں۔

وہ کہتے ہیں ’فی الحال ایسی کوئی قانونی دفعات یا انتظامی ہدایات نہیں ہیں جس سے ایسے بچوں کی مدد کی جا سکے جو والدین کے زیرِ حراست ہونے کی وجہ سے اکیلے ہیں یا کم عمری کی وجہ سے والدین کے ساتھ حراستی کیمپوں میں رہ رہے ہیں۔ قانون اس بارے میں خاموش ہے۔‘

مزید پڑھ: BBC News اردو

کشمیریوں کی حمایت میں پیرس میں تاریخ کی سب سے بڑی ریلی - ایکسپریس اردوریلی کے شرکا نے یورپی یونین سے کشمیر میں ظلم و بربریت اور قتل عام کے خلاف آواز اٹھانے کا مطالبہ کیا

سینٹ کام کمانڈر کی قیادت میں امریکی وفد کی آرمی چیف سے ملاقاتسینٹ کام کمانڈر کی قیادت میں امریکی وفد کی آرمی چیف سے ملاقات DGISPR ArmyChief QamarJavedBajwa CommanderGeneralKennethMcKenzie Meet Kashmir Afghanistan OfficialDGISPR pid_gov MoIB_Official peaceforchange

کشمیر میں مظالم کی نئی لہر سے یوم عاشور کی اہمیت مزید بڑھ گئی: بلاول بھٹوبلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ امام حسینؓ کی پیروی کر کے ناانصافی اور ظلم کے خلاف کامیابی سے ہمکنار ہوں گے، آج کے دن ہم کربلا کے شہدا کو بھی سلام پیش کرتے ہیں۔

پولیس کی جانب سے عاشورہ جلوس کی ڈرون کیمروں سے مانیٹرنگپولیس کی جانب سے عاشورہ جلوس کی ڈرون کیمروں سے مانیٹرنگ ويڈيو لنک: DailyJang

لاہور سے کوئٹہ آنے والی اکبر بگٹی ایکسپریس 20گھنٹے کی تاخیر سے کوئٹہ پہنچ گئیلاہور سے کوئٹہ آنے والی اکبر بگٹی ایکسپریس 20گھنٹے کی تاخیر سے کوئٹہ پہنچ گئی Lahore Quetta AkbarBugtiExpress Delay Train TrainDelay Rawalpindi Railway ShkhRasheed PakrailPK pid_gov MoIB_Official PTIofficial ImranKhanPTI Pakistan

امریکی سینیٹرز کے وفد کی جدہ میں سعودی ولی عہد سے ملاقاتامریکی سینیٹرز کے وفد کی جدہ میں سعودی ولی عہد سے ملاقات USSenators Delegation MohammadBinSalmanBinAbdulazizAlSaud Meet

تبصرہ لکھیں

Thank you for your comment.
Please try again later.

تازہ ترین خبریں

خبریں

11 ستمبر 2019, بدھ خبریں

پچھلا خبر

بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناحؒ کا 71واں یوم وفات - ایکسپریس اردو

اگلا خبر

جمال خاشقجی قتل: آڈیو ریکارڈنگ کی نئی تفصیلات جاری
پچھلا خبر اگلا خبر