\u0646\u0648\u0627\u0632 \u0634\u0631\u06cc\u0641 \u06a9\u0648 \u0639\u0644\u0627\u062c \u06a9\u06cc\u0644\u0626\u06d2 \u0628\u06cc\u0631\u0648\u0646\u0650 \u0645\u0644\u06a9 \u0628\u06be\u06cc\u062c\u0646\u06d2 \u06a9\u0627 \u0641\u06cc\u0635\u0644\u06c1 \u0648\u0632\u06cc\u0631\u0627\u0639\u0638\u0645 \u06a9\u0627 \u062a\u06be\u0627\u060c \u0627\u0633\u062f \u0639\u0645\u0631

23/01/2022 6:15:00 AM

اب وزیر اعظم کو یقین ہے کہ وہ میڈیکل رپورٹس جن کی بنیاد پر نواز شریف کو علاج کے لیے ملک سے باہر جانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا تھا، جھوٹی تھی، اسد عمر #PTIGovernment #NawazSharif #DawnNews مزید پڑھیں:

Ptıgovernment, Nawazsharif

اب وزیر اعظم کو یقین ہے کہ وہ میڈیکل رپورٹس جن کی بنیاد پر نواز شریف کو علاج کے لیے ملک سے باہر جانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا تھا، جھوٹی تھی، اسد عمر PTIGovernment NawazSharif DawnNews مزید پڑھیں:

\u0637\u0628\u06cc \u0645\u0627\u06c1\u0631\u06cc\u0646 \u06a9\u0627 \u062e\u06cc\u0627\u0644 \u062a\u06be\u0627 \u06a9\u06c1 \u0646\u0648\u0627\u0632 \u0634\u0631\u06cc\u0641 \u06a9\u0648 \u06a9\u0686\u06be \u0646\u06c1\u06cc\u06ba \u06c1\u0648\u06af\u0627 \u0644\u06cc\u06a9\u0646 \u062d\u06a9\u0648\u0645\u062a \u0639\u0644\u0627\u062c \u0633\u06d2 \u0631\u0648\u06a9\u0646\u06d2 \u06a9\u0627 \u0627\u0644\u0632\u0627\u0645 \u0642\u0628\u0648\u0644 \u06a9\u0631\u0646\u06d2 \u06a9\u0648 \u062a\u06cc\u0627\u0631 \u0646\u06c1\u06cc\u06ba \u062a\u06be\u06cc\u060c \u0648\u0641\u0627\u0642\u06cc \u0648\u0632\u06cc\u0631

اسد عمر نے کہا کہ حکومت اپنے فیصلے خود کرنے میں مکمل طور پر آزاد ہے —تصوایر: اے ایف پی/رائٹرزوفاقی کابینہ کے ایک اہم رکن اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو طبی بنیادوں پر بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کے حکومتی فیصلے کے بارے میں کہا ہے کہ یہ فیصلہ '100' فیصد صرف وزیراعظم عمران خان نے لیا تھا۔

جیو نیوز کے پروگرام نیا پاکستان میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر نے کہا کہ جب سابق وزیراعظم کو بیرون ملک بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا تو وہ کمرے میں موجود پی ٹی آئی کے 6 سے 8 سینئر رہنماؤں میں سے ایک تھے۔ڈان اخبار کیکے مطابق انہوں نے یہ بھی انکشاف کیا کہ سابق وزیر اعظم کو جانے کی اجازت دینے کے بارے میں اختلاف رائے تھا۔

مزید پڑھ:
DawnNews »

TONIGHT WITH MONALAM | 29 September 2022 || ABBTAKK

#abbtakk #tonightwithmonalam #twm Welcome to AbbTakk’s Official Channel where we bring the latest news, events and topics affecting you, from across the coun... مزید پڑھ >>

\u0627\u0653\u0631\u0645\u06cc \u0686\u06cc\u0641 \u062c\u0646\u0631\u0644 \u0642\u0645\u0631 \u062c\u0627\u0648\u06cc\u062f \u0628\u0627\u062c\u0648\u06c1 \u06a9\u0627 \u06a9\u0648\u0631 \u06c1\u06cc\u0688\u06a9\u0648\u0627\u0631\u0679\u0631 \u067e\u0634\u0627\u0648\u0631 \u06a9\u0627 \u062f\u0648\u0631\u06c1COAS CorpsHeadquartersPeshawar

\u06a9\u0648\u0648\u0688 \u06a9\u06cc \u0632\u06cc\u0627\u062f\u06c1 \u0634\u0631\u062d \u0648\u0627\u0644\u06d2 \u062a\u0639\u0644\u06cc\u0645\u06cc \u0627\u062f\u0627\u0631\u0648\u06ba \u06a9\u0648 \u0627\u06cc\u06a9 \u06c1\u0641\u062a\u06d2 \u06a9\u06cc\u0644\u0626\u06d2 \u0628\u0646\u062f \u0631\u06a9\u06be\u0646\u06d2 \u06a9\u0627 \u0641\u06cc\u0635\u0644\u06c1\u0627\u062c\u0644\u0627\u0633 \u0645\u06cc\u06ba \u0645\u0633\u0627\u062c\u062f \u0645\u06cc\u06ba \u0645\u06a9\u0645\u0644 \u0648\u06cc\u06a9\u0633\u06cc\u0646\u06cc\u0679\u0688 \u0627\u0641\u0631\u0627\u062f \u06a9\u0648 \u0646\u0645\u0627\u0632 \u06a9\u06cc\u0644\u0626\u06d2 \u062c\u0627\u0646\u06d2 \u0633\u0645\u06cc\u062a \u062f\u06cc\u06af\u0631 \u067e\u0631\u0648\u0679\u0648\u06a9\u0648\u0644\u0632 \u067e\u0631 \u0639\u0645\u0644 \u062f\u0631\u0622\u0645\u062f \u06a9\u0627 \u0641\u06cc\u0635\u0644\u06c1 \u06a9\u06cc\u0627 \u06af\u06cc\u0627\u060c \u0627\u06cc\u0646 \u0633\u06cc \u0627\u0648 \u0633\u06cc The time of Imam Al-Mahdi and Dajjal (Antichrist). Soon the time will come for the appearance of Dajjal, the events are already happening. Muhammad Qasim’s several visions about the appearance of Dajjal and his chaos.

\u0645\u0644\u06a9 \u0645\u06cc\u06ba \u06a9\u0648\u0631\u0648\u0646\u0627 \u06a9\u0627 \u067e\u06be\u06cc\u0644\u0627\u0624 \u062c\u0627\u0631\u06cc\u060c 6 \u06c1\u0632\u0627\u0631 540 \u0646\u0626\u06d2 \u06a9\u06cc\u0633\u0632 \u0631\u067e\u0648\u0631\u0679\u060c 12 \u0627\u0641\u0631\u0627\u062f \u062c\u0627\u06ba \u0628\u062d\u0642\u067e\u0627\u06a9\u0633\u062a\u0627\u0646 \u0645\u06cc\u06ba \u0645\u062c\u0645\u0648\u0639\u06cc \u06a9\u06cc\u0633\u0632 \u06a9\u06cc \u062a\u0639\u062f\u0627\u062f 13 \u0644\u0627\u06a9\u06be 60 \u06c1\u0632\u0627\u0631 19 \u062a\u06a9 \u062c\u0627\u067e\u06c1\u0646\u0686\u06cc \u06c1\u06d2\u060c \u0645\u06c1\u0644\u06a9 \u0648\u0627\u0626\u0631\u0633 \u0633\u06d2 \u062c\u0627\u06ba \u0628\u062d\u0642 \u0634\u06c1\u0631\u06cc\u0648\u06ba \u06a9\u06cc \u0645\u062c\u0645\u0648\u0639\u06cc \u062a\u0639\u062f\u0627\u062f 29 \u06c1\u0632\u0627\u0631 77 \u06c1\u0648\u06af\u0626\u06cc\u06d4

\u0648\u0632\u06cc\u0631\u0627\u0639\u0638\u0645 \u0639\u0645\u0631\u0627\u0646 \u062e\u0627\u0646 \u0627\u062a\u0648\u0627\u0631 \u06a9\u0648 \u0628\u0631\u0627\u06c1 \u0631\u0627\u0633\u062a \u0641\u0648\u0646 \u06a9\u0627\u0644 \u0648\u0635\u0648\u0644 \u06a9\u0631\u06cc\u06ba \u06af\u06d2\u0648\u0632\u06cc\u0631\u0627\u0639\u0638\u0645 \u0639\u0645\u0631\u0627\u0646 \u062e\u0627\u0646 \u0627\u062a\u0648\u0627\u0631 \u06a9\u0648 \u0633\u06c1 \u067e\u06c1\u0631 3 \u0628\u062c\u06d2 \u06a9\u06d2 \u0642\u0631\u06cc\u0628 \u0644\u0648\u06af\u0648\u06ba \u0633\u06d2 \u0628\u0631\u0627\u06c1 \u0631\u0627\u0633\u062a \u0641\u0648\u0646 \u06a9\u0627\u0644\u0632 \u0648\u0635\u0648\u0644 \u06a9\u0631\u06cc\u06ba \u06af\u06d2

\u067e\u06cc \u0679\u06cc \u0622\u0626\u06cc \u0628\u06be\u06cc 27 \u0641\u0631\u0648\u0631\u06cc \u06a9\u0648 \u067e\u0646\u062c\u0627\u0628 \u0633\u06d2 \u0633\u0646\u062f\u06be \u06a9\u06d2 \u0644\u0626\u06d2 \u0645\u0627\u0631\u0686 \u06a9\u0627 \u0622\u063a\u0627\u0632 \u06a9\u0631\u06d2 \u06af\u06cc\u060c \u0634\u0627\u06c1 \u0645\u062d\u0645\u0648\u062f \u0642\u0631\u06cc\u0634\u06ccShahMahmoodQureshi PTImarch کمینے لوگ بہت دیکھے مگر ڈبہ پیر جیسا شاید ہی کوئی ہو۔ یہ تو کرو۔ پنجاب کی عوام اسی کا انتظار کر رہی ہے کہ کب آپ ان کے ہتھے چڑہتے ہو۔

\u0627\u0633\u0644\u0627\u0645 \u0622\u0628\u0627\u062f \u06a9\u0686\u06c1\u0631\u06cc \u0645\u06cc\u06ba 15 \u062c\u062c\u0632 \u0633\u0645\u06cc\u062a 58 \u0627\u06c1\u0644\u06a9\u0627\u0631 \u06a9\u0648\u0631\u0648\u0646\u0627 \u0633\u06d2 \u0645\u062a\u0627\u062b\u0631\u0627\u0633\u0644\u0627\u0645 \u0622\u0628\u0627\u062f \u06a9\u0686\u06c1\u0631\u06cc \u0645\u06cc\u06ba \u06a9\u0648\u0631\u0648\u0646\u0627 \u06a9\u06cc\u0633\u0632 \u0645\u06cc\u06ba \u063a\u06cc\u0631 \u0645\u0639\u0645\u0648\u0644\u06cc \u0627\u0636\u0627\u0641\u06d2 \u06a9\u06d2 \u0628\u0639\u062f15...

0 اسد عمر نے کہا کہ حکومت اپنے فیصلے خود کرنے میں مکمل طور پر آزاد ہے —تصوایر: اے ایف پی/رائٹرز وفاقی کابینہ کے ایک اہم رکن اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو طبی بنیادوں پر بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کے حکومتی فیصلے کے بارے میں کہا ہے کہ یہ فیصلہ '100' فیصد صرف وزیراعظم عمران خان نے لیا تھا۔ جیو نیوز کے پروگرام نیا پاکستان میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر نے کہا کہ جب سابق وزیراعظم کو بیرون ملک بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا تو وہ کمرے میں موجود پی ٹی آئی کے 6 سے 8 سینئر رہنماؤں میں سے ایک تھے۔ ڈان اخبار کی کے مطابق انہوں نے یہ بھی انکشاف کیا کہ سابق وزیر اعظم کو جانے کی اجازت دینے کے بارے میں اختلاف رائے تھا۔ یہ بھی پڑھیں: نواز شریف کی رپورٹ پر جس کو شک ہے وہ عدالت میں میرا سامنا کرلے، ڈاکٹر طاہر شمسی تاہم انہوں نے کہا کہ اب وزیر اعظم کو یقین ہے کہ وہ میڈیکل رپورٹس جن کی بنیاد پر نواز شریف کو علاج کے لیے ملک سے باہر جانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا تھا، جھوٹی تھیں۔ سوال کے دوران پروگرام کے میزبان شہزاد اقبال نے نشاندہی کی کہ وزیراعظم عمران خان عدلیہ پر نواز شریف کو بیرونِ ملک جانے کی اجازت دینے کا الزام عائد کرتے ہیں، ساتھ ہی اسد عمر سے پوچھا کہ نواز شریف کو علاج کے لیے بیرون ملک روانہ ہونے کی اجازت دینے کا فیصلہ کس کا تھا؟ اس معاملے پر اپنی پوزیشن واضح کرتے ہوئے اسد عمر نے ڈان کو بتایا کہ انہوں نے یہ تبصرہ اس سوال کے تناظر میں کیا جو پوچھا جا رہا تھا یعنی کیا نواز شریف کو ملک چھوڑنے کی اجازت حکومت نے دی تھی یا کسی اور نے۔ انہوں نے کہا کہ 'اس سوال کے جواب میں میں نے کہا کہ حکومت اپنے فیصلے خود کرنے میں مکمل طور پر آزاد ہے اور نواز شریف کو بھیجنے کا فیصلہ صرف اور صرف وزیراعظم نے کیا ہے'۔ مزید پڑھیں: شہباز شریف نے مکمل صحتیابی تک نواز شریف کی واپسی کا امکان مسترد کردیا خیال رہے کہ کرپشن کیس میں سزا پانے والے نواز شریف کو نومبر 2019 میں علاج کے لیے بیرون ملک جانے کی اجازت دی گئی تھی۔ ماضی میں وزیراعظم اور ان کے معاونین نے کئی مرتبہ یہ کہتے ہوئے اپنے فیصلے کو درست ثابت کرنے کی کوشش کی تھی کہ حکومت نے 'حقیقی میڈیکل رپورٹس' کی بنیاد پر انہیں علاج کے لیے جانے کی اجازت دی تھی۔ روانگی سے قبل جب نواز شریف لاہور کے ایک ہسپتال میں زیر علاج تھے، وزیراعظم نے یہ بھی دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے خفیہ طور پر طبی ماہرین کو ان کی صحت کے بارے میں دریافت کرنے کے لیے بھیجا تھا۔ اسد عمر نے ڈان کو یہ بھی بتایا کہ وہ ان لوگوں میں سے ایک ہیں جنہوں نے نواز شریف کو ملک چھوڑنے کی اجازت دینے کے فیصلے کی حمایت کی تھی۔ یہ بھی پڑھیں: حکومت نے نواز شریف کی واپسی کیلئے برطانیہ کو خط لکھ دیا انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر فیصل سلطان اور دیگر طبی ماہرین نے بھی نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس دیکھی ہیں اور انہیں بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کا مشورہ دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’طبی ماہرین کا خیال تھا کہ ’ممکنہ طور پر‘ نواز شریف کو کچھ نہیں ہوگا لیکن میڈیکل رپورٹس بتاتی تھیں کہ ان کی حالت جان کو خطرہ ہوسکتی ہے۔ اسد عمر نے دعویٰ کیا کہ نواز کی میڈیکل ہسٹری کے پیش نظر اور ان کی نئی بیماری کے ساتھ حکومت سیاسی انتقام کی وجہ سے نواز شریف کو علاج سے روکنے کا کوئی الزام قبول کرنے کو تیار نہیں تھی۔ .آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کور ہیڈکوارٹر پشاور کا دورہ January 21, 2022 January 21, 2022 0 اسلام آباد: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ فوج ملک سے دہشتگردی کے خاتمے کیلئے پرعزم ہے ۔ شہدا کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ۔ آئی ایس پی آرکے مطابق سپہ سالار جنرل قمر جاوید باجوہ نے پشاور کور ہیڈکوارٹرکا دورہ کیا۔ کورہیڈکوارٹرز آمد پر کورکمانڈر پشاور لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید نے آرمی چیف کا استقبال کیا۔ آرمی چیف کو پاک افغان بارڈر سے متعلق ، سکیورٹی صورتحال ، ضم ہونے والے اضلاع میں ترقیاتی کاموں کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔ اس موقع پر جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاکستان آرمی کے سپاہیوں ، قبائلی عمائدین ، ایف سی ، لیوی، خاصہ دار اور پولیس اہلکاروں کو خراج تحسین پیش کیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ ملک سے دہشتگردی کے خاتمے کے لئے فوج پرعزم ہے ۔ شہدا کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل قمر جاوید باجوہ نے مزید کہا کہ قبائلی اضلاع میں سماجی و اقتصادی ترقیاتی منصوبوں کے لیے سازگار ماحول کی فراہمی میں سکیورٹی فورسز کا کردار قابل قدر ہے ، سماجی و اقتصادی منصوبے علاقے کے پائیدار استحکام اور ترقی کے لیے ناگزیر ہیں۔ previous post.0 این سی او سی نے اسکولوں میں ٹیسٹ کی شرح میں تیزی لانے کی ہدایت کی ہے---فائل/فوٹو: اے پی نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے ملک میں کورونا وائرس کی صورت حال کا جائزہ لینے کے بعد مثبت کیسز کی زیادہ شرح والے تعلیمی اداروں کو ایک ہفتے کے لیے بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ این سی او سی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق اومیکرون سے زیادہ متاثرہ شہروں میں تعلیمی اداروں میں کووڈ کے ٹیسٹ کیے گئے تاکہ طلبہ میں وائرس کے پھیلاؤ کا تعین کرکے وبا کی حقیقی صورت حال کو یقینی بنائی جائے۔ مزید پڑھیں: اومیکرون ویرینٹ: اسکولوں میں 50 فیصد حاضری کا فیصلہ، انڈور تقریبات پر پابندی بیان میں کہا گیا کہ اعداد وشمار میں مختلف شہروں میں ویکسینین کی سطح اور کیسز کے درمیان ایک تعلق ہے، اسی لیے تعلیمی اداروں کے حوالے سے فیصلہ کیا گیا ہے۔ فیصلے کے حوالے سے کہا گیا کہ تعلیمی اداروں میں اگلے دو ہفتوں کے دوران ٹیسٹ کی شرح میں تیزی سے اضافہ کیا جائے گا اور خاص کر ان شہروں میں جہاں وائرس کا پھیلاؤ زیادہ ہے۔ این سی او سے کہا کہ جن تعلیمی اداروں، اطراف اور سیکشنز میں مثبت کیسز کی شرح زیادہ ہے وہ ایک ہفتے کے لیے بند رکھے جائیں گے۔ صوبائی انتظامیہ سے کہا گیا ہے کہ صحت کے ضلعی حکام، تعلیمی حکام اور اسکول انتظامیہ کے ساتھ مشاورت سے بندشوں کا فیصلہ کرنے کے لیے کیسز کی تعداد کا تعین کریں۔ این سی او سی نے کہا کہ صوبائی اکائیاں اسکولوں میں ویکسینیشن کی خصوصی مہم چلائیں اور 12 سال سے بڑی عمر کے بچوں کی 100 فیصد ویکسینیشن یقینی بنائیں۔ مساجد کیلئے پروٹوکولز اس سے قبل این سی او سی نے کہا تھا کہ اجلاس میں ملک میں کورونا وائرس سے پیدا صورت حال کا جائزہ لیا گیا جہاں مساجد اور عبادت گاہوں کے لیے ضروری پروٹوکولز پر عمل درآمد پر اتفاق کیا گیا۔ یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں کورونا وبا کے آغاز سے ریکارڈ 7 ہزار 678 کیسز رپورٹ این سی او سی نے بتایا کہ مساجد اور عبادت گاہوں میں نماز کے لیے صرف مکمل طور پر ویکسینیٹڈ افراد کو جانے کی اجازت ہوگی، ماسک پہننا لازمی ہوگا۔ بیان میں کہا گیا کہ مساجد سے کارپٹ ہٹانے، 6 فٹ کا سماجی فاصلہ برقرار رکھنے، بزرگ اور بیمار افراد گھروں میں نماز ادا کرنے کو ترجیح دینے اور ہینڈ سینیٹائزیشن جیسے پروٹوکولز پر عمل درآمد کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نماز کے لیے کم تعداد اور وضو گھروں میں کرنے کو ترجیح دی جائے، ہوا کے گزرنے کے لیے دروازوں اور کھڑکیوں کو کھلا رکھنے اور کھلے مقام پر نماز کی ادائیگی کو ترجیح دی جائے۔ این سی او سی نے مساجد کے پروٹوکول میں کہا ہے کہ جمعے کے خطبے کو بھی محدود کرنا چاہیے۔.گلگت بلتستان: 13 کیسز کورونا کی روک تھام کے لیے ملک بھر میں ویکسین لگوانے کا سلسلہ بھی تیزی سے جاری ہےاور گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران ملک میں 7 لاکھ 58 ہزار 982 شہریوں کو کورونا سے بچاؤ کی ویکسین لگائی گئیں۔ این سی او سی کے مطابق ملک میں مجموعی طور پر اب تک ویکسینز کی 17 کروڑ 14 لاکھ 70 ہزار سے زائد خوراکیں لگائی جاچکی ہیں۔ یہ ملک کی مجموعی آبادی کا 35 فیصد اور ویکسین کے لیے اہل قرار دیے گئے افراد کی مجموعی تعداد کا 52 فیصد ہے۔ وبا کی پانچویں لہر واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستان میں کورونا وائرس کے 7 ہزار 678 نئے کیسز سامنے آئے تھے جو وبا کے آغاز سے اب تک ایک روز میں رپورٹ ہونے والے کیسز کی سب سے بڑی تعداد تھی۔ کورونا وائرس کے ویرینٹ او میکرون کے بڑھتےہوئے کیسز کے پیش نظر نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کی جانب مساجد اور عبادت گاہوں کے لیے ایس پیز کا اعلان کیا گیا ہے۔ یہ بھی پڑھیں:ا ومیکرون ویرینٹ: مساجد اور عبادت گاہوں میں صرف ویکسینیٹڈ افراد کو داخلے کی اجازت این سی او سی کے فیصلے کے مطابق مساجد اور عبادت گاہوں میں صرف ویکسینیٹڈ افراد کو داخل ہونے کی اجازت دی جائے گی۔ یاد رہے کہ گزشتہ روز این سی او سی کی جانب سے اسکولوں کے حوالے سے فیصلہ کیا گیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ تعلیمی اداروں میں اگلے دو ہفتوں کے دوران ٹیسٹ کی شرح میں تیزی سے اضافہ کیا جائے گا اور خاص کر ان شہروں میں جہاں وائرس کا پھیلاؤ زیادہ ہے۔ یہاں یہ بات مدِ نظر رہے کہ این سی او سی کی جانب سے وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے کیسز کی 10 فیصد سے زائد مثبت شرح والے علاقوں میں انڈور تقریبات، اور ڈائننگ پر پابندی لگائی جاچکی ہے۔ علاوہ ازیں ان علاقوں میں 12 سال سے کم عمر بچوں کے لیے 50 فیصد حاضری کے ساتھ ایک دن چھوڑ کر ایک دن اسکولز کھولنے کی ہدایت کی گئی ہے اور 12 سال سے زائد عمر کے بچوں کی ویکسینیشن کے ساتھ 100 فیصد حاضری کی اجازت دی گئی ہے۔.