’\u06a9\u0644 \u067e\u06cc \u0688\u06cc \u0627\u06cc\u0645 \u06a9\u0648 \u0634\u0627\u06cc\u062f \u063a\u0644\u0637 \u067e\u06cc\u063a\u0627\u0645 \u0686\u0644\u0627 \u06af\u06cc\u0627‘

03/12/2022 2:58:00 PM

اعظم سواتی کیلئے احتجاج کی ہدایت کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ میرے ساتھ ایسا ہو تو میں تو خودکش حملوں کیلئے تیار ہوجاؤں، میرے ذہن میں صرف ایک چیز ہو کہ میں نے بدلہ کیسے لینا ہے 🔗 @ImranKhanPTI #AajNews #ImranKhan #AzamSwati

اعظم سواتی کیلئے احتجاج کی ہدایت کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ میرے ساتھ ایسا ہو تو میں تو خودکش حملوں کیلئے تیار ہوجاؤں، میرے ذہن میں صرف ایک چیز ہو کہ میں نے بدلہ کیسے لینا ہے 🔗 ImranKhanPTI AajNews ImranKhan AzamSwati

\u0639\u0645\u0631\u0627\u0646 \u0646\u06d2 \u0648\u0641\u0627\u0642\u06cc \u062d\u06a9\u0648\u0645\u062a \u06a9\u0648 \u0645\u0634\u0631\u0648\u0637 \u0628\u0627\u062a \u0686\u06cc\u062a \u06a9\u06cc \u067e\u06cc\u0634\u06a9\u0634 \u06a9\u06cc \u062a\u06be\u06cc

Comments فائل فوٹو پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ ہم نے فیصلہ کرلیا ہے اسمبلیوں کو تحلیل کرنا ہے، ہم نے پی ڈی ایم والوں کو صرف ایک پیغام دیا، کل سمجھانے کی کوشش کی لیکن شاید غلط پیغام چلا گیا۔ پارلیمانی پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ 66 فیصد پاکستان میں الیکشن ہوا تو وفاقی حکومت کا کام ختم ہوجائے گا، ملک ہالٹ ہوجائے گا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ میں نے کل ان کو سمجھانے کی کوشش لیکن شاید غلط پیغام چلا گیا۔ ”میں نے کہا کہ ملک کیلئے آپ کو آفر کر رہا ہوں ، الیکشن تو جب بھی ہوں گے چاہے اکتوبر میں ہوں یا اگست میں تحریک انصاف نے جیتنا ہے وہ بھی اس لئے کہ لوگ ان کی پچھلی سات سالہ کارکردگی سے متنفر ہیں۔“ عمران خان نے گزشتہ روز پارلیمانی اجلاس کے بعد خطاب میں وفاقی حکومت کو مشروط بات چیت کی پیشکش کی تھی۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت کو چاہئے الیکشن پر بیٹھ کر ہم سے بات کرے، آئیں بات کریں اور عام انتخابات کی تاریخ دیں۔ چئیرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ”مفتاح اسماعیل کہتا ہے اسحاق ڈار ملک کو ڈیفالٹ کی طرف لے جارہا ہے، اور اسحاق ڈار کہتا ہے کہ مفتاح اسماعیل نے اپنے دور میں کچھ نہیں کیا، دونوں ہی سچ بول رہے ہیں، ان کے اوپر نہ پاکستان کے اندر سے کوئی اعتماد کررہا ہے نہ باہر سے۔“ انہوں نے کہا کہ ”پچھتر فیصد پاکستانی کہہ رہے ہیں کہ الیکشن کرائے جائیں، کیونکہ وہ بھی یہ سمجھ گئے ہیں کہ حکومت فیل ہوگئی ہے، تو ہم نے صرف ان کو یہ کہا کہ ہم تو یہ کرنے جارہے ہیں، آپ کو اگر ملک کی فکر ہے، آپ سے ملک سنبھالا نہیں جارہا اور ملک جارہا ہے ڈیفالٹ کی طرف تو آپ بھی الیکشنز کروا دیں، ایک جنرل الیکشن ہوجائے بجائے اس کے کہ 66 فیصد پاکستان میں ہو، یہ میرا کہنے کا مقصد تھا۔“ عمران خان کا کہنا تھا کہ ان کے ہینڈلرز دوسرا این آر او لینے میں ان کے سہولت کار بنے، جنرل مشرف پر سب سے بڑی تنقید ان کے این آر او دینے پر ہوئی تھی، آپ نے پانچ ملین ڈالر اپنے بچوں کو کہاں سے بھیجے وہ تو آپ کی انکم میں شو ہی نہیں ہو رہا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ ہمیں ٹیکنیکل ناک آؤٹ کرنے کی کوشش کررہے ہیں، اس لئے ہم پنجاب اور کے پی کی اسمبلیاں تحلیل کرنے جارہے ہیں، الیکشنز پی ٹی آئی کی نہیں ملک کی ضرورت ہے، جتنی دیر تک یہ اسمبلی میں بیٹھے ہیں ان کا گراف نیچے جارہا ہے، اسی لئے الیکشن میں تاخیر ہو تو ہمیں تو فائدہ ہی فائدہ ہے، لیکن ملک اس سطح پر پہنچ گیا ہے کہ الیکشن نہ ہوئے تو ملک ادھر پہنچ جائے گا جدھر کوئی کچھ نہیں کرسکے گا۔ عمران خان نے کہا کہ ان کی ساری دولت ملک سے باہر ڈالرز میں ہے، روپیہ گرے گا تو ان کو فائدہ ہوگا، انہوں نے تو باہر بھاگ جانا ہے، الیکشن کمیشن تو ان کی پارٹی کا کوئی ممبر لگتا ہے جو کوشش کررہا ہے کہ کسی طرح ان کو جتانا ہے، میری پوری پیش گوئی ہے کہ یہ اور ان کے لیڈرز تیسری مرتبہ باہر بھاگیں گے، لیکن ملک کو تباہی کے کنارے پر کھڑا کرکے۔ عمران خان نے کارکنوں کوالیکشن کی تیاری کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ آپ سب کو اپنے اپنے حلقوں میں اب نکل جانا چاہئیے، ہم نے صرف ان کو کہا ہوا ہے کہ اگر آپ جنرل الیکشنز کی تاریخ دینے کیلئے بات کرنا چاہتے ہیں تو ہم بات کریں گے، نہیں تو ہم عنقریب اپنی اسمبلیاں تحلیل کرکے الیکشن کا اعلان کردیں گے۔ اگر وہ نہیں آتے تو اسی مہینے اپنی صوبائی اسمبلیاں تحلیل کردیں گے۔ ’میرے ساتھ ایسا ہو تو میں تو خودکش حملے کیلئے تیار ہوجاؤں‘ اعظم سواتی کیلئے احتجاج کی ہدایت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ ایسا ہو تو میں تو خودکش حملے کیلئے تیار ہوجاؤں، میرے ذہن میں صرف ایک چیز ہو کہ میں نے بدلہ کیسے لینا ہے، اگر اعظم سواتی کو کچھ ہوا تو ہم سب ایف آئی آرز کاٹیں گے ان سب لوگوں پر جو ذمہ دار ہیں اس پر تشدد اور پکڑ کر کوئٹہ لے جانے والوں پر، ہمارے جسٹس سسٹم کا مزاق اڑ گیا ہے۔.0 ویڈیو میں اہلکار کو ساتھیوں کے سامنے مسافر سے غیر ملکی کرنسی لیتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے—فوٹو:ٹوئٹر اینٹی نارکوٹکس فورس (اے این ایف) نے اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر اپنے عملے کی غیر قانونی اقدام میں ملوث ہونے کے بارے میں حقائق جاننے کے لیے انکوائری شروع کردی ہے۔ ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق معاملے میں ملوث تینوں متعلقہ اہلکاروں کو سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہونے کے بعد معطل کر دیا گیا، ویڈیو میں انہیں بیرون ملک جانے والے مسافر سے رشوت لیتے ہوئے دکھایا گیا۔ ویڈیو میں ایک اہلکار کو اپنے ساتھیوں کے سامنے مسافر سے غیر ملکی کرنسی لیتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے، اہلکار کو یہ کہتے ہوئے بھی سنا جا سکتا ہے کہ سامان بہت زیادہ ہے، ایک شاپر لو اور دوسرا چھوڑ دو۔ ویڈیو میں سنا جاسکتا ہے کہ اہلکار کہتا ہے کہ اگر وہ دوسرا شاپر لینا چاہتا ہے تو کوئی خدمت کرے، اہلکار کو یہ کہتے ہوئے بھی سنا جا سکتا ہے کہ بیگ میں یورو، پاؤنڈ یا کوئی اور چیز نہیں ہے۔ مسافر اے این ایف اہلکار کو 2 غیر ملکی کرنسی نوٹ دیتا ہے جنہیں وہ اہلکار اپنے پاس رکھ لیتا ہے، مسافر اہلکار سے کہتا ہے کہ اسے کھانا لینا ہے جس پر اہلکار اسے کچھ رقم رکھنے دیتا ہے۔ اے این ایف نے جاری پریس ریلیز میں کہا کہ اے این ایف اہلکاروں کی غیر قانونی اقدام میں ملوث ہونے کی سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو کی انتہائی اعلیٰ سطح کی انکوائری کے ذریعے جانچ پڑتال کی جا رہی ہے تاکہ حقائق کا پتا لگایا جا سکے، بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ انکوائری کو حتمی شکل دینے تک متعلقہ حکام کو معطل کر دیا گیا ہے۔.0 فیڈرل سروس ٹریبونل کے دو رکنی بینچ نے غلام محمود ڈوگر کو معطل کردیا تھا—فائل/فوٹو: ٹوئٹر سپریم کورٹ نے سروس ٹریبونل کا فیصلے معطل کرتے ہوئے سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کو بحال کرتے ہوئے وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کردیا۔ جسٹس اعجازالاحسن اور جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی پر مشتمل سپریم کورٹ کے بینچ نے سی سی پی لاہور غلام محمود ڈوگر کی درخواست پر سماعت کی جہاں ان کے وکیل عابد زبیری نے دلائل دیے۔ سپریم کورٹ نے غلام محمود ڈوگر کی درخواست پر سروس ٹربیونل کے خصوصی بینچ کے فیصلے کے خلاف اپیل پر وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کردیا۔ وکیل عابد زبیری نے دلائل دیے کہ غلام محمود ڈوگر کو فیڈرل سروس ٹربیونل نے بحال کیا تھا تاہم بعد میں سروس ٹربیونل کے دو رکنی بینچ نے بحالی کا فیصلہ معطل کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹربیونل کے دو رکنی بینچ کا فیصلہ دوسرا دو رکنی بینچ معطل نہیں کر سکتا اور حکومت کی نظرثانی درخواست بھی ٹربیونل میں زیرالتوا تھی۔ سپریم کورٹ کی جانب سے معطل سی سی پی او لاہور کی بحالی کے حکم کے بعد عمران خان پر حملے کی تفتیش کے لیے تشکیل دی گئی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) بھی فعال ہوگئی ہے۔ خیال رہے کہ وفاقی حکومت نے 5 نومبر کو سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کو عمران خان پر قاتلانہ حملے کے خلاف پی ٹی آئی کارکنان کے احتجاج کے دوران گورنر ہاؤس کی سیکیورٹی یقینی نہ بنانے پر معطل کردیا تھا۔ ڈان اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ گورنر ہاؤس کے عہدیداروں نے چیف سیکریٹری اور آئی جی پی کو خط لکھا جس میں کہا گیا کہ ایک ہجوم نے دی مال کے مین گیٹ توڑنے کی کوشش کی، ٹائر جلائے، سی سی ٹی وی کیمروں کو نقصان پہنچایا اور احاطے میں داخل ہونے کی کوشش کی۔ خط میں مظاہرین کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ کیپٹل سٹی پولیس نے مظاہرین کو روکنے کے لیے کوئی اقدام نہیں کیا اور نہ ہی حملہ آوروں کے خلاف مقدمہ درج کیا۔ وفاقی حکومت کی جانب سے جاری نوٹی فکیشن میں کہا گیا تھا کہ مزید احکامات جاری ہونے تک غلام محمد ڈوگر کی معطلی پر فوری طور پر عمل درآمد ہوگا۔ بعد ازاں غلام محمود ڈوگر نے لاہور ہائی کورٹ میں اپنی معطلی کے خلاف درخواست دائر کی تھی تاہم عدالت عالیہ نے ان کی درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کردی تھی۔ انہوں نے مؤقف اپنایا تھا کہ وفاقی حکومت نے 27 اکتوبر کو 3 روز میں عہدے کا چارج چھوڑنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا، وفاق کے نوٹیفکیشن کا جواب دینے پر عجلت میں 5 نومبر کو عہدے سے معطل کر دیا، سی سی پی او لاہور کی معطلی کا حکم نامہ معطل کیا جائے۔ جس کے بعد فیڈرل سروس ٹریبونل اسلام آباد نے غلام محمود ڈوگر کو لاہور کیپیٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) کے عہدے پر برقرار رہنے کی اجازت دی تھی تاہم دو رکنی بینچ نے انہیں معطل کرنے کا حکم جاری کردیا تھا۔ سروس ٹریبونل اسلام آباد کے فیصلے کے خلاف غلام محمود ڈوگر نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کردی تھی۔ اس سے قبل ستمبر میں وفاقی حکومت نے غیر معمولی اقدام کرتے ہوئے سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کی خدمات واپس لینے کے ساتھ ساتھ انہیں تاحکم ثانی اسٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کی ہدایت کی تھی۔ دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی نے سی سی پی او کو چارج چھوڑنے سے روکتے ہوئے کہا تھا کہ وفاقی حکومت نہ تو سی سی پی او کو ہٹا سکتی ہے اور نہ ہی ان کا تبادلہ کر سکتی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا تھا کہ فیڈرل سروس کا ملازم ہونے کی وجہ سے پولیس اہلکار کو تبادلے کے احکامات جاری ہونے کے 7 روز کے اندر اسٹیبلشمنٹ ڈویژن اسلام آباد کے احکامات پر عمل کرنا ہوگا۔ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن اسلام آباد کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن میں کہا گیا تھا کہ گریڈ 21 کے پولیس افسر غلام محمود ڈوگر جو اس وقت پنجاب حکومت کے ماتحت خدمات انجام دے رہے ہیں، ان کا تبادلہ کردیا گیا ہے اور انہیں ہدایت کی گئی ہے کہ وہ فوری طور پر تاحکم ثانی اسٹیبلشمنٹ ڈویژن میں رپورٹ کریں۔.Comments فائل فوٹو پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ ہم نے فیصلہ کرلیا ہے اسمبلیوں کو تحلیل کرنا ہے، ہم نے پی ڈی ایم والوں کو صرف ایک پیغام دیا، کل سمجھانے کی کوشش کی لیکن شاید غلط پیغام چلا گیا۔ پارلیمانی پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ 66 فیصد پاکستان میں الیکشن ہوا تو وفاقی حکومت کا کام ختم ہوجائے گا، ملک ہالٹ ہوجائے گا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ میں نے کل ان کو سمجھانے کی کوشش لیکن شاید غلط پیغام چلا گیا۔ ”میں نے کہا کہ ملک کیلئے آپ کو آفر کر رہا ہوں ، الیکشن تو جب بھی ہوں گے چاہے اکتوبر میں ہوں یا اگست میں تحریک انصاف نے جیتنا ہے وہ بھی اس لئے کہ لوگ ان کی پچھلی سات سالہ کارکردگی سے متنفر ہیں۔“ عمران خان نے گزشتہ روز پارلیمانی اجلاس کے بعد خطاب میں وفاقی حکومت کو مشروط بات چیت کی پیشکش کی تھی۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت کو چاہئے الیکشن پر بیٹھ کر ہم سے بات کرے، آئیں بات کریں اور عام انتخابات کی تاریخ دیں۔ چئیرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ”مفتاح اسماعیل کہتا ہے اسحاق ڈار ملک کو ڈیفالٹ کی طرف لے جارہا ہے، اور اسحاق ڈار کہتا ہے کہ مفتاح اسماعیل نے اپنے دور میں کچھ نہیں کیا، دونوں ہی سچ بول رہے ہیں، ان کے اوپر نہ پاکستان کے اندر سے کوئی اعتماد کررہا ہے نہ باہر سے۔“ انہوں نے کہا کہ ”پچھتر فیصد پاکستانی کہہ رہے ہیں کہ الیکشن کرائے جائیں، کیونکہ وہ بھی یہ سمجھ گئے ہیں کہ حکومت فیل ہوگئی ہے، تو ہم نے صرف ان کو یہ کہا کہ ہم تو یہ کرنے جارہے ہیں، آپ کو اگر ملک کی فکر ہے، آپ سے ملک سنبھالا نہیں جارہا اور ملک جارہا ہے ڈیفالٹ کی طرف تو آپ بھی الیکشنز کروا دیں، ایک جنرل الیکشن ہوجائے بجائے اس کے کہ 66 فیصد پاکستان میں ہو، یہ میرا کہنے کا مقصد تھا۔“ عمران خان کا کہنا تھا کہ ان کے ہینڈلرز دوسرا این آر او لینے میں ان کے سہولت کار بنے، جنرل مشرف پر سب سے بڑی تنقید ان کے این آر او دینے پر ہوئی تھی، آپ نے پانچ ملین ڈالر اپنے بچوں کو کہاں سے بھیجے وہ تو آپ کی انکم میں شو ہی نہیں ہو رہا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ ہمیں ٹیکنیکل ناک آؤٹ کرنے کی کوشش کررہے ہیں، اس لئے ہم پنجاب اور کے پی کی اسمبلیاں تحلیل کرنے جارہے ہیں، الیکشنز پی ٹی آئی کی نہیں ملک کی ضرورت ہے، جتنی دیر تک یہ اسمبلی میں بیٹھے ہیں ان کا گراف نیچے جارہا ہے، اسی لئے الیکشن میں تاخیر ہو تو ہمیں تو فائدہ ہی فائدہ ہے، لیکن ملک اس سطح پر پہنچ گیا ہے کہ الیکشن نہ ہوئے تو ملک ادھر پہنچ جائے گا جدھر کوئی کچھ نہیں کرسکے گا۔ عمران خان نے کہا کہ ان کی ساری دولت ملک سے باہر ڈالرز میں ہے، روپیہ گرے گا تو ان کو فائدہ ہوگا، انہوں نے تو باہر بھاگ جانا ہے، الیکشن کمیشن تو ان کی پارٹی کا کوئی ممبر لگتا ہے جو کوشش کررہا ہے کہ کسی طرح ان کو جتانا ہے، میری پوری پیش گوئی ہے کہ یہ اور ان کے لیڈرز تیسری مرتبہ باہر بھاگیں گے، لیکن ملک کو تباہی کے کنارے پر کھڑا کرکے۔ عمران خان نے کارکنوں کوالیکشن کی تیاری کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ آپ سب کو اپنے اپنے حلقوں میں اب نکل جانا چاہئیے، ہم نے صرف ان کو کہا ہوا ہے کہ اگر آپ جنرل الیکشنز کی تاریخ دینے کیلئے بات کرنا چاہتے ہیں تو ہم بات کریں گے، نہیں تو ہم عنقریب اپنی اسمبلیاں تحلیل کرکے الیکشن کا اعلان کردیں گے۔ اگر وہ نہیں آتے تو اسی مہینے اپنی صوبائی اسمبلیاں تحلیل کردیں گے۔ ’میرے ساتھ ایسا ہو تو میں تو خودکش حملے کیلئے تیار ہوجاؤں‘ اعظم سواتی کیلئے احتجاج کی ہدایت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ ایسا ہو تو میں تو خودکش حملے کیلئے تیار ہوجاؤں، میرے ذہن میں صرف ایک چیز ہو کہ میں نے بدلہ کیسے لینا ہے، اگر اعظم سواتی کو کچھ ہوا تو ہم سب ایف آئی آرز کاٹیں گے ان سب لوگوں پر جو ذمہ دار ہیں اس پر تشدد اور پکڑ کر کوئٹہ لے جانے والوں پر، ہمارے جسٹس سسٹم کا مزاق اڑ گیا ہے۔.

مزید پڑھ:
Aaj TV Urdu »
Loading news...
Failed to load news.

ImranKhanPTI Fitna

\u0627\u0633\u0644\u0627\u0645 \u0627\u0653\u0628\u0627\u062f: \u0645\u0633\u0627\u0641\u0631 \u0633\u06d2 \u0631\u0634\u0648\u062a \u0644\u06cc\u0646\u06d2 \u06a9\u0627 \u0627\u0644\u0632\u0627\u0645: \u0627\u06d2 \u0627\u06cc\u0646 \u0627\u06cc\u0641 \u06a9\u06d2 3 \u0627\u06c1\u0644\u06a9\u0627\u0631 \u0645\u0639\u0637\u0644\u0645\u0639\u0627\u0645\u0644\u06d2 \u0645\u06cc\u06ba \u0645\u0644\u0648\u062b \u0627\u06c1\u0644\u06a9\u0627\u0631\u0648\u06ba \u06a9\u0648 \u0633\u0648\u0634\u0644 \u0645\u06cc\u0688\u06cc\u0627 \u067e\u0631 \u0648\u06cc\u0688\u06cc\u0648 \u0648\u0627\u0626\u0631\u0644 \u06c1\u0648\u0646\u06d2 \u06a9\u06d2 \u0628\u0639\u062f \u0645\u0639\u0637\u0644 \u06a9\u0631 \u062f\u06cc\u0627 \u06af\u06cc\u0627\u060c \u0648\u06cc\u0688\u06cc\u0648 \u0645\u06cc\u06ba \u0645\u0633\u0627\u0641\u0631 \u0633\u06d2 \u0645\u0628\u06cc\u0646\u06c1 \u0637\u0648\u0631 \u067e\u0631 \u0631\u0634\u0648\u062a \u0644\u06cc\u062a\u06d2 \u062f\u06a9\u06be\u0627\u06cc\u0627 \u06af\u06cc\u0627\u06d4

\u0633\u067e\u0631\u06cc\u0645 \u06a9\u0648\u0631\u0679 \u0646\u06d2 \u0633\u06cc \u0633\u06cc \u067e\u06cc \u0627\u0648 \u0644\u0627\u06c1\u0648\u0631 \u063a\u0644\u0627\u0645 \u0645\u062d\u0645\u0648\u062f \u0688\u0648\u06af\u0631 \u06a9\u0648 \u0628\u062d\u0627\u0644 \u06a9\u0631 \u062f\u06cc\u0627\u063a\u0644\u0627\u0645 \u0645\u062d\u0645\u0648\u062f \u0688\u0648\u06af\u0631 \u06a9\u06cc \u0627\u067e\u06cc\u0644 \u067e\u0631 \u0639\u062f\u0627\u0644\u062a \u0646\u06d2 \u0648\u0641\u0627\u0642\u06cc \u062d\u06a9\u0648\u0645\u062a \u06a9\u0648 \u0646\u0648\u0679\u0633 \u062c\u0627\u0631\u06cc \u06a9\u0631\u062f\u06cc\u0627\u060c \u0633\u0631\u0648\u0633 \u0679\u0631\u06cc\u0628\u0648\u0646\u0644 \u06a9\u06d2 \u062f\u0648 \u0631\u06a9\u0646\u06cc \u0628\u06cc\u0646\u0686 \u0646\u06d2 \u0633\u06cc \u0633\u06cc \u067e\u06cc \u0627\u0648 \u0644\u0627\u06c1\u0648\u0631 \u06a9\u0648 \u0645\u0639\u0637\u0644 \u06a9\u0631\u0646\u06d2 \u06a9\u0627 \u0641\u06cc\u0635\u0644\u06c1 \u062f\u06cc\u0627 \u062a\u06be\u0627\u06d4

’\u06a9\u0644 \u067e\u06cc \u0688\u06cc \u0627\u06cc\u0645 \u06a9\u0648 \u0634\u0627\u06cc\u062f \u063a\u0644\u0637 \u067e\u06cc\u063a\u0627\u0645 \u0686\u0644\u0627 \u06af\u06cc\u0627‘\u0639\u0645\u0631\u0627\u0646 \u0646\u06d2 \u0648\u0641\u0627\u0642\u06cc \u062d\u06a9\u0648\u0645\u062a \u06a9\u0648 \u0645\u0634\u0631\u0648\u0637 \u0628\u0627\u062a \u0686\u06cc\u062a \u06a9\u06cc \u067e\u06cc\u0634\u06a9\u0634 \u06a9\u06cc \u062a\u06be\u06cc

’\u062f\u0648 \u062e\u0648\u0627\u062a\u06cc\u0646 \u06a9\u06cc \u0645\u0644\u0627\u0642\u0627\u062a \u06a9\u06cc \u0648\u062c\u06c1 \u0645\u062d\u0636 \u06cc\u06a9\u0633\u0627\u06ba \u062c\u0646\u0633 \u06cc\u0627 \u0639\u0645\u0631 \u0646\u06c1\u06cc\u06ba \u06c1\u0648\u062a\u06cc‘\u0645\u0634\u062a\u0631\u06a9\u06c1 \u067e\u0631\u06cc\u0633 \u06a9\u0627\u0646\u0641\u0631\u0633 \u06a9\u06d2 \u062f\u0648\u0631\u0627\u0646 \u0631\u067e\u0648\u0631\u0679\u0631 \u06a9\u06d2 \u063a\u06cc\u0631\u0645\u0648\u0632\u0648\u06ba \u0633\u0648\u0627\u0644 \u067e\u0631 \u0646\u06cc\u0648\u0632\u06cc \u0644\u06cc\u0646\u0688 \u0627\u0648\u0631 \u0641\u0646 \u0644\u06cc\u0646\u0688 \u06a9\u06cc \u062e\u0627\u062a\u0648\u0646 \u0648\u0632\u0631\u0627\u0626\u06d2 \u0627\u0639\u0638\u0645 \u06a9\u06cc \u062d\u0627\u0636\u0631 \u062c\u0648\u0627\u0628\u06cc \u0646\u06d2 \u0633\u0648\u0634\u0644 \u0645\u06cc\u0688\u06cc\u0627 \u0635\u0627\u0631\u0641\u06cc\u0646 \u06a9\u06cc \u062a\u0648\u062c\u06c1 \u0633\u0645\u06cc\u0679 \u0644\u06cc\u06d4

\u0627\u0641\u063a\u0627\u0646 \u0637\u0627\u0644\u0628\u0627\u0646 \u0646\u06d2 \u0679\u06cc \u0679\u06cc \u067e\u06cc \u06a9\u06d2 \u062e\u0644\u0627\u0641 \u06a9\u0627\u0631\u0631\u0648\u0627\u0626\u06cc \u06a9\u0631\u0646\u06d2 \u06a9\u06cc \u06cc\u0642\u06cc\u0646 \u062f\u06c1\u0627\u0646\u06cc \u06a9\u0631\u0648\u0627\u0626\u06cc \u06c1\u06d2\u060c \u062f\u0641\u062a\u0631 \u062e\u0627\u0631\u062c\u06c1\u0627\u064f\u0645\u06cc\u062f \u06c1\u06d2 \u06a9\u06c1 \u0627\u0641\u063a\u0627\u0646\u0633\u062a\u0627\u0646 \u0627\u067e\u0646\u06cc \u0633\u0631\u0632\u0645\u06cc\u0646 \u067e\u0627\u06a9\u0633\u062a\u0627\u0646 \u06cc\u0627\u06a9\u0633\u06cc \u062f\u0648\u0633\u0631\u06d2 \u0645\u0644\u06a9 \u06a9\u06cc\u062e\u0644\u0627\u0641 \u062f\u06c1\u0634\u062a \u06af\u0631\u062f\u06cc \u06a9\u06d2 \u0644\u06cc\u06d2 \u0627\u0633\u062a\u0639\u0645\u0627\u0644 \u0646\u06c1 \u06a9\u0631\u0646\u06d2 \u06a9\u0627 \u0648\u0639\u062f\u06c1 \u067e\u0648\u0631\u0627 \u06a9\u0631\u06d2\u06af\u0627\u060c \u0645\u0645\u062a\u0627\u0632 \u0632\u06c1\u0631\u06c1 \u0628\u0644\u0648\u0686