’اگر اس ملک میں انصاف ہے تو گرفتار شہباز شریف کو نہیں عاصم باجوہ کو ہونا چاہیے‘ - BBC News اردو

شہباز شریف کی گرفتاری پر مریم نواز کا ردِ عمل: ’کبھی مولانا فضل الرحمان کو نوٹس بھیجا جاتا ہے تو کبھی شہباز شریف کو گرفتار کیا جاتا ہے، ہے کسی میں اتنی ہمت کے عاصم سلیم باجوہ کو نوٹس بھیجے۔‘

28/09/2020 6:07:00 PM

شہباز شریف کی گرفتاری پر مریم نواز کا ردِ عمل: ’کبھی مولانا فضل الرحمان کو نوٹس بھیجا جاتا ہے تو کبھی شہباز شریف کو گرفتار کیا جاتا ہے، ہے کسی میں اتنی ہمت کے عاصم سلیم باجوہ کو نوٹس بھیجے۔‘

پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز شریف نے شہباز شریف کی گرفتاری کے بعد پریش کانفرنس میں حکومت اور نیب کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے اور کہا ہے کہ اگر اس ملک میں ذرا سا بھی قانون اور انصاف ہے تو گرفتاری شہباز شریف کی نہیں، عاصم سلیم باجوہ کی ہونی چاہیے تھی۔

انھوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف کا تعلق ایک کاروباری گھرانے سے تھا جو 1930 سے کاروبار کر رہا ہے اور ان کا وسیع کاروبار سیاست میں آنے سے پہلے کا تھا، لیکن عاصم سلیم باجوہ ایک تنخواہ دار ملازم تھے ان کا لکھ پتی نہیں کروڑ پتی نہیں ارب پتی بن جانا، یہ ہے قابلِ احتساب الزام۔

معروف تُرک شیف پاکستان پہنچ گئے آزادیٔ اظہار دوسروں کو اذیت دینے کے لیے نہیں، وزیر اعظم کینیڈا - ایکسپریس اردو 20 ریال کے نئے نوٹ پر انڈیا کی سعودی عرب سے شکایت - BBC News اردو

’نیب چیئرمین کہتے ہیں کہ وہ فیس نہیں کیس دیکھتے ہیں، تو وہ کیس انھیں نظر نہیں آ رہا؟ اگر عاصم باجوہ کے بچوں کا عاصم باجوہ پر مالی طور پر انحصار نہیں ہے تو شہباز شریف کے بچوں پر زبردستی اسے حوالے سے مقدمے کیوں بنائے گئے۔‘انھوں نے پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر کی بات کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف نے سر توڑ کوششوں کے باوجود اپنے بھائی کا ساتھ نہیں چھوڑا۔

’ان کی بیوی کو اشتہاری بنا دیا گیا، ان کے بیٹوں پر ریفرنس بنائے گئے اور حمزہ شہباز شریف کو گرفتار کیا گیا ہے لیکن شہباز شریف اڑے رہے‘۔انھوں نے کہا کہ میڈیا پر بھی قدغنیں لگائی گئیں اور عاصم سلیم باجوہ سے متعلق لکھی گئی تحقیقاتی تحریر کو شائع ہونے سے روکا گیا، اور پھر ان کی وضاحت چلائی گئی۔

،تصویر کا ذریعہGetty Imagesانھوں نے کہا کہ اگر میڈیا کو آپ دبائیں گے اور عدلیہ پر دباؤ ڈالیں گے تو اس سے زیادہ کوئی چیز اداروں کو متنازع نہیں بنا سکتی۔مریم کا کہنا تھا کہ ’ش میں سے ن نکالنے والے، ن میں سے ش اور م نکالنے والوں کی چیخیں نکل گئیں کیوںکہ ن اور ش ہمیشہ ایک ساتھ رہیں گے۔‘

انھوں نے کہا کہ عمران خان کو یہ خوف ہے کہ شہباز شریف ان کے متبادل ہیں، عمران خان ایک کمزور وکٹ پر کھیل رہے ہیں جو مسلط شدہ ہو، جس کی اتنی حیثیت نہ ہو کہ گلگت بلتستان کی میٹنگ جی ایچ کیو میں چل رہی ہے اور وہ ساتھ والے کمرے میں بیٹھا ہے۔’پنجاب کی عوام کی نظر میں شہباز اکلوتی آپشن ہیں۔ عمران خان کے پاس جب تک بیساکھیاں ہیں اور ادارے بھی جو عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں ان کو بھی توجہ دینی چاہیے کہ ایک ناتجربہ شخص، ایک نادان دوست نے ملک کو اس دوراہے پر لا کر کھڑا کر دیا ہے۔‘

انھوں نے کہا کہ اگر عمران خان کی اسی طرح حمایت کی جاتی رہی، ملک کو اندھیروں میں جھونکا جاتا رہا تو پھر یہ مسلم لیگ ن کے ہاتھ سے بھی بات باہر چلی جائے گی۔’جہاں تک اے پی سی کے ایجنڈا کا تعلق ہے آپ چاہے شہباز شریف کو گرفتار کریں،چاہے مریم نواز کو گرفتار کریں، چاہے آپ میرے ساتھ بیٹھے مسلم لیگ ن کے شیروں کو گرفتار کریں یہ تحریک اب رکنے والی نہیں ہے۔‘

منی لانڈرنگ کیس میں درخواست ضمانت مسترد ہونے پر شہباز شریف گرفتارپاکستان میں لاہور ہائی کورٹ نے قائدِ حزبِ اختلاف اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کی منی لانڈرنگ ریفرنس میں درخواست ضمانت مسترد کر دی ہے جس کے بعد انھیں کمرہ عدالت کے باہر سے حراست میں لے لیا گیا ہے۔

جیل میں مشقت کرنے والا سرکش دانشور صحافی، سلیم عاصمی کُوچ کرگیا - BBC News اردو کسی بھی قیمت پر بنیادی نصب العین سے پیچھے نہیں ہٹیں گے: مسلم لیگ ن وزیراعظم کا ترک صدر سے رابطہ، یورپ میں اسلاموفوبیا کی بڑھتی لہر پر اظہار تشویش

گذشتہ پیشی پر لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے شہباز شریف کے وکلا کو حکم دیا گیا تھا کہ وہ پیر (آج) تک دلائل مکمل کریں۔پیر کے روز شہباز شریف کے وکلا کی جانب سے پیش کیے گئے دلائل کے بعد لاہور ہائی کورٹ نے درخواست ضمانت مسترد کرنے کا فیصلہ کیا جس کے بعد نیب اہلکاروں نے قائد حزبِ اختلاف کو کمرہ عدالت کے باہر سے گرفتار کر لیا۔

انھیں کل یعنی منگل کے روز نیب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔صحافی عباد الحق کے مطابق شہباز شریف نے منی لانڈرنگ کے الزام میں اس سال جون میں ضمانت کے لیے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا اور اس پر لگ بھگ چار ماہ تک سماعت ہوتی رہی اور اس دوران مختلف دو رکنی بنچز نے سماعت کی۔

آج کی سماعت کے دوران شہباز شریف روسٹرم پر آئے اور کہا کہ وہ اپوزیشن لیڈر ہیں اور گلگت بلتستان میں انتخابات ہونے والے ہیں اور حکومت اُن کی زبان بندی چاہتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ اپنے دورِ حکومت میں انھوں نے قومی خزانے کا ایک ارب بچایا اپنے ضمیر کے مطابق فیصلے کیے اور اُن کے فیصلوں سے ان کے خاندان کو کاروباری نقصان ہوا۔

قائد حزب اختلاف شہباز شریف کے وکیل اعظم نذیر تارڑ نے واضح کیا کہ ریفرنس عدالت دائر ہو گیا اور عدالتی حکم پر شہباز شریف عدالت میں پیش ہو رہے ہیں۔اعظم نذیر تارڑ ایڈووکیٹ نے نشاندہی کی کہ یہ سمجھ سے بالاتر ہے اس مرحلے پر گرفتاری کا کیا جواز ہے۔وکیل کے مطابق اگر شہباز شریف ہوتے ہیں اور چھ ماہ جیل میں رکھیں تو اس سے کیا فائدہ ہو گا۔ وکیل نے دلیل دی کہ جس نے ایک ہزار ارب روپے بچائے ہوں وہ چند ارب کا خطرہ کیوں مول لے گا۔

ایڈووکیٹ اعظم نذیر تارڑ نے دعویٰ کیا کہ حکومت بلدیاتی انتخابات سے پہلے شہباز شریف کو جیل میں ڈالنا چاہتی ہے اور شعرہ پڑھا کہ 'سنجیاں ہو جان گلیاں، وچ مرزا یار پھرے۔'ادھر نیب کے وکیل فیصل بخاری نے استدعا کی کہ شہباز شریف سے ابھی تک تفتیش نہیں کی گئی اس لیے اس کی گرفتاری کی ضرورت ہے۔

نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ نیب کسی بھی کرپشن کی تحقیقات شروع کر سکتا ہے اور نیب کا قانون 18 از خود کارروائی کر سکتا ہے۔واضح رہے کہ رواں سال جون میں لاہور ہائی کورٹ نے شہباز شریف کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست منظور کرتے ہوئے انھیں پانچ لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کروانے کی ہدایت کی تھی۔

میاں نواز شریف کے بیانیے کا ساتھ نہیں دے سکتے: ن لیگی رہنماؤں کا اعلان بی جے پی پاکستان کو بھارت کی مقامی سیاست میں گھسیٹنا بند کرے، دفتر خارجہ - ایکسپریس اردو مصدق ملک بھی کرونا وائرس میں مبتلا

شہباز شریف کی گرفتاری پر ردعملمسلم لیگ نواز کی نائب صدر مریم نواز نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ’شہباز شریف کا صرف یہ قصور ہے کہ اس نے نواز شریف کا ساتھ نہیں چھوڑا۔’اس نے جیل جانے کو ترجیح دی مگر اپنے بھائی کو ساتھ کھڑا رہا۔ یہ انتقامی احتساب نواز شریف اور اس کے ساتھیوں کا حوصلہ پست نہیں کر سکتے۔ اب وہ وقت دور نہیں جب اس حکومت اور ان کو لانے والوں کا احتساب عوام کرے گی۔‘

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’اگر اس ملک میں احتساب اور انصاف ہوتا تو شہباز شریف نہیں، عاصم سلیم باجوہ اور اس کا خاندان گرفتار ہوتا۔‘اپوزیشن جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عالمی وبا کے باوجود حزب اختلاف کے ساتھ سیاسی انتقام کا سلسلہ جاری ہے۔ یاد رہے کہ آج ہی کے دن وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سابق صدر

آصف علی زرداری اور ان کی بہن فریال تالپور سمیت 14 ملزمان پر منی لانڈرنگ کے مقدمے میں فرد جرم عائد کر دی ہے، تاہم ملزمان نے فرد جرم سے انکار کیا ہے۔وفاقی حکومت کے ترجمان شبلی فراز نے نجی چینل سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’شہباز شریف کی گرفتاری کو سیاسی نہ بنایا جائے۔۔۔ ان کے خلاف شواہد موجود تھے اس لیے انھیں نیب نے حراست میں لیا ہے۔‘

پنجاب حکومت کے ترجمان فیاض الحسن چوہان نے نیب کے اقدام کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہباز شریف ’اب عدالتی اور تحقیقاتی عمل سے گزریں گے۔‘ان کا کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر نے اپنے شوق سے گرفتاری نہیں دی۔دوسری طرف مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ’آج نیب، نیازی گٹھ جوڑ نے شہباز شریف کو گرفتار کیا ہے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ سنہ 2018 کے عام انتخابات کی طرح گلگت بلتستان کے الیکشن میں دھاندلی کرنے کا منصوبہ بنا لیا گیا ہے۔

’نیب نے شہباز شریف کو عمران خان کے حکم پر گرفتار کیا کیونکہ وہ ایسی جماعت کو نشانہ عبرت بنانا چاہتے ہیں جنھوں نے اس ملک کے لیے کام کیا۔ یہ ہر مخالف آواز کو بند کرنا چاہتے ہیں۔‘انھوں نے کہا یہ شہباز شریف کی گرفتاری حزب اختلاف کی اے پی سی کا ردعمل ہے۔،تصویر کا ذریعہ

Getty Imagesشہباز شریف کی گرفتاری کے موقع پر پولیس اور مسلم لیگ کے کارکنان کے درمیان دھکم پیل بھی ہوئی تاہم نیب اہلکار انھیں بحفاظت وہاں سے نکال کر نیب دفتر لے گئے ہیں۔عدالتی فیصلے سے ایک دن قبل آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں شہباز شریف کو نیب کے سامنے پیش ہونا تھا تاہم انھوں نے پیش ہونے کے بجائے ایک تفصیلی جواب جمع کروا دیا۔

اس تفصیلی جواب میں یہ مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ کورونا وائرس اس وقت عروج پر ہے اور نیب کے کچھ افسران بھی کورونا وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں جبکہ میری عمر 69 سال اور میں کینسر کا مریض بھی ہوں اس لیے نیب تحقیقاتی ٹیم مجھ سے سکائپ کے ذریعے سوالات کر سکتے ہیں۔

اس حوالے سے نیب کی جانب سے کہا گیا تھا کہ شہباز شریف کی پیشی کے لیے کورونا وائرس سے بچاؤ کے خصوصی انتظامات کیے گئے تھے۔یاد رہے کہ سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو پاکستان کے قومی ادارہ برائے احتساب (نیب) نے آشیانہ ہاؤسنگ سکیم اور رمضان شوگر ملز کیس سنہ 2018 میں گرفتار کیا تھا تاہم 14 فروری 2019 کو لاہور ہائی کورٹ نے اُن کی ضمانت منظور کی تھی۔

گذشتہسماعت کے دوران کیا ہواتھا؟اس کیس میں ہونے والی گذشتہ سماعت میں نیب پراسیکیوٹر نے کہا تھا کہ شہباز شریف کے وکیل امجد پرویز نے اب تک جو فیصلے پیش کیے ہیں وہ ضمانت بعد از گرفتاری کے ہیں جس پر شہباز شریف کے وکیل نے کہا کہ وہ ابھی ضمانت قبل از گرفتاری کی جانب آ رہے ہیں۔

تاہم اس کے بعد شہباز شریف کے وکیل کی جانب سے وقفے کی درخوست کی گئی جو عدالت نے قبول کرتے ہوئے انھیں ضمانت بعد از گرفتاری پر دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کر دی، جس کے بعد سماعت کچھ دیر کے لیے ملتوی کر دی گئی تھی۔شہباز شریف کے وکیل نے اس موقع پر عدالت کے سامنے ضمانت کے حق میں دلائل دیتے ہوئے کہا تھا کہ قتل کے کیس میں بھی جب چالان پیش ہو جائے اور فرد جرم عائد ہو جائے، تو پھر بھی ضمانت یا ریلیف مل جاتا ہے۔

انھوں نے دعویٰ کیا کہ ان کے مؤکل کو ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کیے ہوئے تین ماہ سے زیادہ عرصہ ہو چکا تھا اور اس دوران نیب نے صرف ایک مرتبہ بلایا جس پر وہ پیش ہوئے۔وکیلِ صفائی نے کہا کہ نیب کے تفتیشی افسر کی جانب سے ان کے مؤکل کو کہا گیا کہ اب مزید تفتیش کی ضرورت نہیں اور جب ضرورت ہو گی آپ کو بتایا جائے گا۔

بعد ازاں شہباز شریف نے عدالت سے بات کرنے کی اجازت حاصل کرکے کہا کہ نیب کا الزام ہے کہ ان کے بچوں کے اثاثے درحقیقت ان کے بے نامی اثاثے ہیں۔ انھوں نے عدالت سے کہا کہ اگر عدالت چاہے تو وہ بینچ کو مکمل بریفنگ دے سکتے ہیں۔اس پر عدالت نے کہا تھا کہ اگر وہ عدالت کی معاونت کرنا چاہتے ہیں تو اپنے وکیل سے مشورہ کر لیں، اور اگر کوئی بات رہ جائے تو وہ دلائل کی تکمیل کے بعد کر سکتے ہیں۔

اسی بارے میںآل پارٹیز کانفرنس کا مشترکہ اعلامیہ: اب آگے کیا ہو گا؟21 ستمبر 2020آل پارٹیز کانفرنس کا ایکشن پلان: جنوری میں لانگ مارچ کا اعلان، اسٹیبلشمنٹ سے سیاست میں مداخلت بند کرنے کا مطالبہ20 ستمبر 2020نواز شریف کے خطاب پر سوشل میڈیا ردعمل: ’اے پی سی پیچھے رہ گئی، نواز شریف کی تقریر بہت آگے نکل گئی‘

20 ستمبر 2020اے پی سی کا آنکھوں دیکھا حال: طویل خاموشی کے بعد نواز شریف کا 'ماسٹر سٹروک' اور شہباز شریف کی ’مصالحت کاری‘20 ستمبر 2020عاصم سلیم باجوہ پر احمد نورانی کے الزامات: شہباز شریف کا عمران خان سے قوم کو جواب دینے کا مطالبہ2 ستمبر 2020عاصم باجوہ کا استعفیٰ منظور نہ ہونے پر مریم نواز کا تبصرہ: ’استعفیٰ منظور کر لیتے تو خود بھی مستعفی ہونا پڑ جاتا‘

مزید پڑھ: BBC News اردو »

Sawal with Ehtesham Amir-ud-Din | SAMAA TV | 25 October 2020

#samaanewslive #breakingnews #pakistannewslive Stay up-to-date on the major news making headlines across Pakistan on SAMAA TV’s top of the hour segment. For in-...

Good hinaparvezbutt نوٹس بزدلوں کو بھیجے جاتے ہیں ہماری آرمی تو شیر دل بہادر اور جفا کش ہے اور عاصم باجوہ صاحب بھی بہادر فوج کا حصہ ہیں انکو نوٹس بھیجنا ممکن نہیں چوروں کو نہ پکریں تو کیا کریں Not the whole truth. Hauling one corrupt and hailing the other corrupt ' something rotten in the....' پاکستان آرمی زندہ باد پاکستان آرمی کے خلاف بات نا سنے آرمی ہماری بقا کے لیے کام کرتی ہے

کیا مجرموں ملزموں کو میڈیا پر بیٹھ کر ہرزہ سرائ کی اجازت ملنی چاہئیے؟ جب تک یہ عدالتوں سے clear نہیں ہو جاتے انھیں کسطرح جھوٹے پروپیگنڈوں کو پروموٹ کرنے دیا جاتا کہ یہ لوگوں کہ ذہنوں کو پراگندہ کریں؟ کیا یہ لوگ اپنے کیسس نبٹاچکے؟ کوئ اصول ضوابط کی پاسداری؟ یا شتر بے مہار؟ ن لیگ والوں کو چاہیئے کہ سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردے عاصم باجوہ کے خلاف جسطرح عمران خان نے نواز شریف کے خلاف درخواست دائر کی تھی سپریم کورٹ میں پاناما لیکس پر ، پریس کانفرنسوں اور ٹاک شوز میں بک بک کرنے سے کوئی فائدہ نہیں ھوگا۔

You are accidental leaders not born saviours give back the ill-gotten wealth and live in peace, life is too short for mean anxieties hinaparvezbutt This is a party based on hereditarypolitics and Nepotisim , they are just doing arm twisting and are begging establishment behind closed doors for a deal. why don't they take this General to court? No body stopping them not even PTI ..

Right ya to such h gand m guss k path jaee gee......samaj to gaye ho gaye hinaparvezbutt ان حکمرانوں کو شرم سے ڈوب مرنا چاہیے،جو اس ملک میں ریاست مدینہ کا نام استعمال کرتے ہیں اور اس طرح کا احتساب کرتے ہیں، hinaparvezbutt ضمانت دینے والا بھی لاہور ہائی کورٹ ضمانت کینسل کرنے والا بھی لاہور ہائی کورٹ😋 لیکن بھونکنا صرف عمران خان پر ہے

that's the real basic narrative of MNS always against army blaming both Bajwas there's lots of support for her she's just looks like benazir it's time for Maryum Bilawl & some new faces but now it's all clear no Nawaz Zardari Shahbaz or senior member it's a new era new leaders. alisheikh55551 Ethy rakh

🌺🌺🌺🌺🌺 دوستو عدلیہ پر بھروسہ رکھیے جب تک کہ وہ بھروسہ توڑ نہ دے سیاستدانوں bajwas کی لڑائی طاقت کی کشمکش ہے اس میں ملک و قوم کانہیں'ذاتی مفاد ہے مگر طالع آزمایادرکھیں قوم یکسو ہورہی ہے کسی خرابی کی صورت میں توسیع شدہ سپہ سالار ذمہ دارہونگے&جواب بھی انھی سےمانگاجائےگا‼ COAS A Marshal law in Pakistan

Will BBC have interest writting on Platelets drama? Off course not! in k bap ko bula k goli maro in k samny,phir hr city k main road pr in sb gaddaron ko ltkao or 4,4 in ki lashey ltkti rehey,ta k inka ganda khoon sbko bta dy k mulk lootny ka anjam kya hota hy Agreed خلائی مخلوق پاکِستان وردی والی حِساب سے مُبرَا ہیں جو لوگوں کو قُربانی کے دھوکے میں رکھ کے باہِر مُمالِک چُپ کرکے کھا لیتے ہے

بوٹ چوسنے کی تمنّا اب ہمارےدل میں ہے دیکھنا ہے رحم کتنا باجوےکے دل میں ہے باؤ نااہلیا 😜😝😜😝 میں حامد میر جاوید چوہدری اور سلیم صافی پہ لعنت بھیجتا ہوں میں اخبار کا ایڈیٹر ہوں مجھ پہ قاتلانہ حملہ ہوا زرہ سنبھلا تو مجھے گرفتار کرکے دو مقدمات قائم کئے گئے مگر ان تینوں صاحبان نے بار بار رابطہ کرنے کے باوجود بلوچستان کے صحافی کی مدد نہیں کی

نواز شریف ،مریم نواز یا ان کے رفقائے کار میں سے کوئی عاصم سلیم باجوہ کے خلاف عدالت میں کیس دائر کیوں نہیں کرتے؟جیسے عمران خان نے پانامہ سکینڈل سامنے آنےپر نواز شریف کے خلاف کیا تھا۔ یہ خالی بھاشن کا کیا مقصد؟ نواز شریف پربھی جےآئی ٹی تب ہی بنی تھی نا جب ان کا کیس عدالت میں تھا۔ میاں صاحب نے اپنی پوری کوشش کی کہ جن لوگوں نے مینڈیٹ چوری کیا وہ اپنی حرکتوں پر غور کریں مگر لگتا ہے کمپنی سرکار جوتے ہی کھانا چاتی ہے تو اب کیا کیا جا سکتا ہے😡😡😡😡😡😡😡😡

پاکستان پر عذاب عدالتوں میں ہونے والی بے انصافی کی وجہ سے آیا ہوا ہے ۔کبھی ڈکٹیٹر اس ملک پر قابض ہوتے ہیں تو کبھی عمران خان جیسے سیلیکٹڈ حکمران باجواہ ہے وہ باجواہ Bachy Bardasht karo... insaaf waly idaary to barbaad kr diye tumhar sarpanch ne! عاصم باجوہ اس پیزا گروپ کا ایک رکن ہے جو پاکستانیوں کے اربوں لوٹ کر بھی 'فرشتے' ہیں اور اس عوام کو چ بنا کر مزید فرشتے بنیں رہیں گے

rarshadali Kabhi ham nahi thay Kabhi tum nahi thay Ab cheekhooo mat.............. بی، بی، سی نیوز نیٹورک اور رپوٹرز کی 'گ' میں جو آگ لگی ہوئی ہے عاصم باجوہ کے نام سے ہم سب جانتے ہیں اس کے پیچھے کی کہانی۔ zabar10 It is not easy to notice AsimSBajwa corruption singles but involving COAS can not be ruled out. If case notice can be issued 2 Asim thn ultimately COAS names will highlights OfficialDGISPR MaryamNSharif NawazSharifMNS BBhuttoZardari HamidMirPAK MoulanaOfficial AzazSyed

آج سے کئی سال قبل ایوب خان کو گالیاں پڑیں جس پر اس نے استعفی دے دیا۔ وہی گالیاں آج باجوہ اینڈ کمپنی کو پڑی ہیں۔ خدشہ ہے ملک میں بڑی بغاوت ہونے والی ہے Why don’t they file a reference against Gen Bajwa re corruption? They have that option. Great آپکی اطلاع کے لئے عرض ہے کہ ابھی تک مولانا فضل الرحمن صاحب کو کوئی نیب نوٹس نہیں ملا

ان عورتوں کوشہباز شریف کی گرفتاری کا غم نہیں ہے۔۔دوڑ لگی ہے چچا کے گرفتاری کی خبر مریم صفدر کو پہلے کون پہنچائے گا۔۔ تنظیم_سازی پاکستان_زندہ_باد PakistanArmyzindabad اگر اس عاصم باجوہ کو نوٹس بھیجا تو پھر پی ٹی آئ کو کون بچائیں گا کڑپٹ ترین پاڑٹی ہے NawazSharif zindabad پاپا جونز کی رسیدیں تو دینی پڑیں گی جناب.

Kuch Sabit karro toh phir notice jay ga Saleem Bajwa ko ab aaise Jhoot Bakne par toh kuch nahi hota. Maryam acting like a bear with a sore head is understandable. But why is BBC behaving like a cat on a hot tin roof? 😾 😾 😾 73 سال میں پہلی دفعہ پوچھ گچھ شروع ہوئی ہے تھوڑا صبر کریں سب کی باری آئے گی بہت نچوڑ لیا اس ملک کو آپ جیسے چند خاندانوں نے

جرنل باجوہ ان ایکشن لعنتی نیازی Puppets شہباز کو اسلیے گرفتار کیا گیا کہ جی ایچ کیو کا کھانا کھانے کے بعد بھی ایسی کانفرنس کی۔ جو بھی سر نہیں جھکائے گا وہ اندر جائے گا۔ اور اندر جانا بہتر ہے بجائے اس کے کہ ذلت کی بھری چائے قبول کی جائے شہباز شریف کے گرفتاری پر مریم نواز گروپ کافی حوش اور مطمئن ہے لگتا ہے شین لیگ ن لیگ والی بات سچ ہے

چوروں کو نوٹس نہیں بلکہ سیدھا جیل بھیجنا چاہیے۔کرپٹ اپوزیشن گرفتاری غلط بات ہے۔ حالانکہ کہ ماڈل ٹاون میں کیے گیئے ظلم پر شہباز شریف کی پھانسی کی سزا بنتی ہے۔ ڈاکٹرائن نے انصاف کو کچا چبایا ہے عاصم سلیم باجوہ نے باؤجی کی طرح چوری بھی تو نہیں کی مس کیلیبری MaryamNSharif یا اللہ اب بہت دیکھ لیں ان نوازوں شربازوں کی عدالت آنیاجانیان کچھ ایسا کر کے نہ دیکھنی پڑیں یہ آنیاجانیان 😢

حکومت اور اداروں سے گزارش ہے کہ چوروں ڈاکوں کو سنجیدہ سزائیں دیں اور لوٹی دولت کا حصول ممکن بنائیں۔ صرف گرفتاریوں اور ضمانتوں کاشغل اب بند اب بند ہونا چاہیے۔ یہ تو اندھے کو اندھیرے میں دور کی سُوجنے والی بات ہوئی نا. محترمہ کی پارٹی کے تینوں ادوار بھی انہیں کے مرہون منت تھے جن کے یہ ہے. یہ باتیں حکومت کے ہوتے ہوئے کیوں نہیں کیں، کیا اس کے اثاثے ان 2 سالوں میں بنے ہیں. میٹھا میٹھا ہپ ہپ اور کڑوا کڑوا تھو تھو والی باتیں نہ کریں.

Nhain to پھدی پین دی تیری بی بی سی۔۔۔۔۔۔جتنا مرضی پراپوگنڈا کر لو۔۔۔منہ کی کھانی پڑے گیآپ کو عمران خان نے پانامہ احتجاج شروع کیا تو کہا شور نا مچاؤ عدالت جاؤ عمران خان عدالت گیا تو اگلے دن ن لیگ(حنیف عباسی) عمران خان کے خلاف عدالت چلی گئی جس پر خان کو رسیدیں دکھانی پڑیں اب ن لیگ والے شور کیوں مچا رہے اپنے ہی اصول کے مطابق عدالت جائیں اور مانگیں آصف باجوہ سے حساب

In main itna dam hai to prove lay ker addalat jaien press conferences kernay baith jatay hain. نوٹس چوروں کو بھیجے ہیں. آپ کے پاس ثبوت ہیں تو عدالت جاؤ... لٹکاؤ اسے PMLN has gone bonkers... what did Saleem Bajwa did wrong to send send notice to! 😂😂😂😂😂😂😂 کیا 99 کمپنیاں ثابت ہوئی ہیں. اگر نہیں تو الزام لگانے والا. اس پر بات کرنے والی یہ یہ بات پوسٹ کرنا والا. سب کے سب بےغیرت اور کتے ہیں

شہباز شریف کی عبوری درخواست ضمانت پر آج لاہو رہائیکورٹ میں سماعت ہوگی

کٹھن حالات میں اعلیٰ کارکردگی دکھانا وزیراعظم عمران خان کی حقیقی پہچان ہے: شبلی فرازکٹھن حالات میں اعلیٰ کارکردگی دکھانا وزیراعظم عمران خان کی حقیقی پہچان ہے: شبلی فراز Islamabad shiblifaraz Performance Difficult Situation Hallmark PMImranKhan MoIB_Official pid_gov Pakistan

شہبازشریف کی گرفتاری توعدالتی فیصلہ ہے اس میں سیاست کہاں سے آ گئی شبلی فرازوفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز کا کہنا ہے کہ شہبازشریف کی گرفتاری توعدالتی فیصلہ ہے اس میں سیاست کہاں سے آ گئی ہے،معاملے کو سیاسی مقدمہ نہ pid_gov Faraz sb ka naik ulaad peda karne ki khawaish thi tu kanjar kaha se agya 😂 pid_gov تے فیر رسیداں کڈو....

صحت کے نظام کی بہتری تحریک انصاف کی اولین ترجیح ہے، عمران خان | Abb Takk Newsغریب مکاؤ

صحت کے نظام کی بہتری پاکستان تحریک انصاف کی اولین ترجیح ہے، وزیراعظموزیراعظم عمران خان سے انصاف ڈاکٹر فورم کے وفد نے ملاقات کی ،ملاقات میں ڈاکٹر فیصل سلطان اور ڈاکٹر یاسمین راشد نے بھی شرکت کی۔ 😂😂😂😂😂 acha

مجھے سزا دیتے دیتے ملک کو ڈبو دیا گیا ہے، نواز شریف | Abb Takk NewsRight saying,whole country suffererd سازشی جرنیلوں شرم کرو