کینیڈا کے مسلمان خاندان کی تدفین: ’ایسے چھوٹے چھوٹے واقعات کے بعد ہی چیزیں بڑھنے لگتی ہیں‘ - BBC News اردو

کینیڈا میں دہشت گردی کے واقعہ میں ہلاک ہونے والے افضال خاندان کی تدفین، ہر مذہب کے سینکڑوں افراد کی شرکت

13/06/2021 12:33:00 PM

کینیڈا میں دہشت گردی کے واقعہ میں ہلاک ہونے والے افضال خاندان کی تدفین، ہر مذہب کے سینکڑوں افراد کی شرکت

کینیڈا میں دہشت گردی کے واقعہ میں ہلاک ہونے والے چار پاکستانی نژاد افراد کو سنیچر کی سہ پہر انٹاریو صوبے کے شہر لندن کے اسلامک قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا ہے۔ جازے میں شرکت کے لیے ہر مذہب سے تعلق رکھنے والے کینیڈین شہری مختلف شہروں سے سینکڑوں میل کا سفر کرکے سنیچر کے روز لندن پہنچے۔

Getty Images’لندن میں ہم نے چار خوبصورت انسانوں کو کھو دیا اور اس غم کی گھڑی میں ہم سب ایک خاندان کے طور پر ان کی آخری رسومات کے لیے اکھٹے ہوئے ہیں۔‘عمر خامسیہ نیشنل کونسل اور کینیڈین مسلم کی جانب سے کمیونٹی انگیجمنٹ آفسر ہیں۔ ماضی میں مسلمانوں کے ساتھ البرٹا کے صوبے میں پیش آنے والے واقعات کا حوالہ دیتے ہوئے انھوں نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ایسے ایسے دن دیکھے ہیں جو آج بھی ہمارا دل چھلنی کرتے ہیں۔۔۔ حجاب پہننے والی عورتوں پر متعدد حملے ہوتے آئے ہیں اور اب اس میں 6 جون کا دردناک دن بھی شامل ہو گیا ہے جس میں ایک خوبصورت خاندان کو نفرت سے بھرے ایک شخص نے گاڑی تلے کچل ڈالا۔‘

پاک فوج نے افغان آرمی کے کمانڈر سمیت 46اہلکاروں کو پناہ ‌دے دی 'زرداری اور نوازشریف کو لوگ قبول کرنے پر تیار نہیں' 2021 میں بھی خواتین کھلاڑیوں کے لباس پر واویلا کیوں؟ - BBC News اردو

وہ کہتے ہیں کہ آج جو اتنے افراد یہاں جمع ہیں اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ پیار محبت سے ہم ہر طرح کی نفرت پر قابو پا سکتے ہیں۔کینیڈا میں کورونا کے باعث بین الصوبائی سفری پابندیاں عائد ہونے کے باوجود ہر مذہب سے تعلق رکھنے والے کینیڈین شہری مختلف شہروں سے سینکڑوں میل کا سفر کرکے سنیچر کے روز لندن پہنچے۔

کینیڈا میں دہشت گردی کے واقعہ میں ہلاک ہونے والے چار پاکستانی نژاد افراد کو سنیچر کی سہ پہر انٹاریو صوبے کے شہر لندن کے اسلامک قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا ہے۔اس خاندان کی آخری رسومات لندن شہر میں واقع اسلامک سنٹر آف ساؤتھ ویسٹ انٹاریو میں ادا کی گئی جس میں سینکڑوں مسلمان کے علاوہ دوسرے مذاہب کے بے شمار افراد نے بھی شرکت کی۔۔ اس موقع پر مسلمانوں کی آنکھیں تو اشکبار تھیں ہی لیکن غیر مسلموں کو بھی شدتِ غم سے روتے دیکھا گیا۔ headtopics.com

سخت گرمی اور شرکا کی کثیر تعداد کی وجہ سے جنازہ مقررہ وقت سے تقریباً ڈیڑھ گھنٹے بعد پڑھایا گیا۔ جنازے کے شرکا میں لندن شہر کے مئیر کے علاوہ بچوں، نوجوانوں اور خواتین کی بڑی تعداد شریک ہوئی۔یاد رہے گذشتہ ہفتے کینیڈا میں دہشت گردی کے واقعے میں ایک خاندان کی تین نسلیں ہلاک ہوئی ہیں جس میں 46 سالہ فزیوتھریپسٹ سلمان افضل، ان کی اہلیہ اور پی ایچ ڈی کی طالبہ 44 سالہ مدیحہ سلمان، نویں جماعت کی طالبہ 15 سالہ یمنیٰ سلمان اور اُن کی 74 سالہ ضعیف دادی شامل ہیں جبکہ اسی خاندان کے نو سالہ فائز سلمان زیرِعلاج ہیں۔

یہ واقعہ اتوار کی شام اونٹاریو کے شہر لندن میں پیش آیا تھا جب 20 سالہ مقامی شخص نے اپنی گاڑی اس خاندان پر اس وقت چڑھا دی تھی جب وہ اپنے گھر کے باہر چہل قدمی کر رہے تھے۔عمر خامسیہ کہتے ہیں کہ ہم اسلاموفوبیا کے خلاف نیشنل ایکشن سمٹ چاہتے ہیں جس میں ہم یہ یقینی بنانا چاہیں گے کہ ہم سے صرف وعدے ہی نہ کیے جائیں بلکہ ایکشن بھی نظر آئے اور اگر ہماری مسلمان بہنیں اور بھائی کینیڈا میں خود کو محفوظ نہیں سمجھ رہے تو اس کے لیے ہم سیاستدانوں کو جوابدہ ٹھہرائیں گے۔‘

،تصویر کا ذریعہGetty Imagesکراچی سے تعلق رکھنے والی عینی تقریباً گذشتہ دو دہائیوں سے لندن کی رہائشی ہیں۔ انھوں نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ وہ اس واقعے کے بعد سے اب تک ’حیرت زدہ‘ ہیں اور انھیں اس بات پر غصہ بھی ہے کہ اس طرح کے واقعات کے باوجود سیاستدانوں نے اس سلسلے کوئی ایکشن نہیں لیا۔

ان کا کہنا تھا کہ حکام نے اسے دہشت گردی کا واقعہ تو قرار دیا ہے لیکن اب ہمیں دیکھنا پڑے گا کہ ان کا اگلا اقدام کیا ہے۔عینی نے بتایا کہ انھوں نے یوٹیوب پر کچھ ویڈیوز دیکھی ہیں جن میں کچھ افراد اس واقعے کو ’سیلیبریٹ‘ کر رہے ہیں۔ وہ کہتی ہیں کہ ’سیاستدان اس حوالے سے کیا ایکشن لیں گے، اسی سے ہمیں پتا چلے گا کہ وہ جو باتیں کر رہے ہیں وہ صحیح ہیں یا صرف دکھاوا ہیں۔‘ headtopics.com

سندھ میں تمام یونیورسٹیز 31 جولائی تک بند رہیں گی ہم آنیوالی نسلوں کیلئے بہتر ملک چھوڑ کر جانا چاہتے ہیں، وزیراعظم طالبان نہ رکے تو بمباری بھی جاری رہے گا، امریکی کمانڈر کا واضح پیغام

ان کا کہنا تھا کہ کوئی بھی فرد اگر مسلمانوں یا دوسری ثقافتوں کے متعلق مذاق میں بھی کچھ کہتا ہے تو حکام کو اسے سنجیدگی سے دیکھنا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’ایسے چھوٹے چھوٹے واقعات کے بعد ہی بڑی چیزیں بڑھنے لگتی ہیں اور ہم کمیونٹی کے طور پر تو ایک دوسرے کا خیال رکھتے ہیں لیکن اصل ذمہ داری سیاستدانوں اور سکیورٹی اداروں پر عائد ہوتی ہے۔‘

،تصویر کا ذریعہMohsin Abbasعمر الغبرا مسلم رکنِ پارلیمنٹ اور لبرل پارٹی آف کینیڈا کی جانب سے وفاقی وزیرِ برائے ٹرانسپورٹ ہیں۔ انھوں نے ہلاک ہونے والے پاکستانی خاندان، کمیونٹی اور لندن کے شہریوں سے اظہارِ افسوس کرتے ہوئے کہا کہ دشت گردی کے اس واقعے کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم سب کو اکھٹے ہو کر ہلاک ہونے والے خاندان اور ایک دوسرے کا سہارا بننا چاہیے اور نفرت انگیزی اور اسلاموفوبیا کا مل کر مقابلہ کرنا چاہیے۔‘عمر الغبرا کے مطابق ان کی حکومت گذشتہ کئی سالوں سے اسلاموفوبیا پر قابو پانے کی کوشش کر رہی ہے اور انھوں نے اس حوالے سے کیے جانے والے اقدامات کی تفصیلات شئیر کرتے ہوئے کہا کہ ’اس سب کے باوجود اب ہمیں احساس ہو رہا ہے کہ یہ ساری کوششیں کافی نہیں ہیں۔‘

ان کا کہنا تھا حکومت اب کمیونٹی کے ہرنماؤں کے ساتھ مل کر مزید اقدامات اور پالیسز پر کام کرنے کا ارادہ رکھتی ہے جس میں آن لائن نفرت انگیز مواد پر پابندی اور کئی دوسرے اقدامات پر عمل درآمد شامل ہیں۔عمر کا کہنا تھا کہ اگرچہ کینیڈا دنیا کا سب سے محفوظ ملک ہے لیکن ہمیں معلوم ہیں کہ اس کے باوجود یہاں نفرت اور پرتشدد واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں اور ہمیں ان واقعات کی شرح زیرو پر لانے کے لیے ہر قسم کے اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے تاکہ ہر شہری خود کو محفوظ سمجھے۔ headtopics.com

،تصویر کا ذریعہGetty Imagesجنازہ گاہ سے قبرستان لے جانے کے دوران شہریوں کی ایک بہت بڑی تعداد نے سڑک کے دونوں اطراف کھڑے ہو کر ہلاک شدگان کو خراج عقیدت پیش کیا۔اس موقع پر وفاقی وزیر ٹرانسپورٹ عمار الغبرا نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس خاندان کو انصاف دلانے کا عزم رکھتے ہیں اور مسلمانوں کی زندگیوں کو محفوظ بنانے کے لیے ہر ممکن کوششیں کریں گے۔

ہلاک ہونیوالوں کے تابوت کینیڈین جھنڈوں میں لپٹے ہوئے تھے اور ان کے جنازہ کو قومی ٹی وی پر براہِ راست دکھایا گیا اور لندن پولیس کے افسران نے گارڈ مارچ بھی پیش کیا۔نماز جنازہ میں خاندان اور رشتہ داروں کے علاوہ سیاسی، سماجی حلقوں کے ساتھ ساتھ کئی سرکاری حکام، اراکین پارلیمنٹ اور صوبائی و وفاقی وزرا نے بھی شرکت کی۔

فحش فلمیں کیس؛ شلپا شیٹھی کے خلاف بھی گھیرا تنگ - ایکسپریس اردو پاکستانی رضاکار جس نے کارگل کے ’برف پوش پہاڑوں پر پھنسے جنگجوؤں کو رسد پہنچائی‘ - BBC News اردو نور مقدم قتل کیس: مرکزی ملزم ظاہرجعفر مزید 2 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے مزید پڑھ: BBC News اردو »

Awaz | SAMAA TV | 13 July 2021

#Samaanewslive #LiveNews #PakistanNewsLiveStay up-to-date on the major news making headlines across Pakistan on SAMAA TV’s top of the hour segment. For in-de...

ویسے انگریزوں کے ساتھ دہشتگرد کیوں نہیں لگاتے یہ منافقت کیوں؟ مسلمان کچھ نہ بھی کرے تو دہشتگرد جب آپ لوگ کرو زہنی توازن خراب واہ کیسے منافق لوگ ہو آپ جس طرح نیوزی لینڈ میں ہونے والے دھشتگردی کے واقعہ میں جیسنڈا نے مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا تھا، جسٹن ٹروڈو اور اس کی حکومت نے بھی دھشتگردی کے اس واقعہ میں مسلمان خاندان کے ساتھ ھمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا ہے 👍❤️

Not hlak they are shuhdas you idiot ٹی ایل پی مسلم میڈیا گروپ پلیز جوائن اور شئیر کریں... جزاک اللہ خیرا 😭😭😭 نماز جنازہ میں سجدہ نہیں ہوتا- ہوسکتا ہئے کہ یہ تصویر عام نماز کی ہو جس کے بعد جنازہ ہوا- مختصر یہ کہ یہ تصویر خبر سے مطابقت نہیں رکھتی

ملک میں گدھوں کی تعداد میں اضافے کے ذمہ دار عمران خان ہیں مولانا فضل الرحمانجمعیت علما اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کاکہناہے کہ بجٹ میں غلط اعداد و شمار پیش کئے گئے ،شوکت ترین پر سارا ملبہ ڈال دیا گیا۔ان کاکہناتھا کہ ملک میں رسول اللہ صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم نے فرمایا : ’’ آسانی پیدا کرو ، تنگی پیدا نہ کرو ، سکون پہنچاؤ ، نفرت نہ دلاؤ ۔‘‘ متفق علیہ ۔ Iss jaisay gadhay be kaar hain, matti daalnay k liye use karein in ko, construction / development mn in ka bhi share ho ہاں جی آپ ہر دفعہ بریانی مفت میں چٹ کرجاتے تھے تب ہی تو اُن کی تعداد گھٹتی رھی

آسٹریا میں کورونا کے باعث قلیل وقتی کام کی مدت میں توسیعویانا(اکرم باجوہ)آسٹرین وزیر اقتصادیات مارگریٹ شریمبک نے اعلان کیا ہے کہ کورونا کے باعث قلیل وقتی کام کی مدت میں 30ستمبر تک توسیع کردی گئی ہے۔آسٹرین پارلیمنٹ

ڈریگن بوٹ فیسٹیول کی تعطیل کے دوران 10 کروڑ لوگوں کے دوروں کی توقعچین میں سال 2021 کے ڈریگن بوٹ فیسٹیول کی تعطیل کے دوران لوگوں کے 10 کروڑ دورے متوقع ہیں ،جو سال 2019 کے اسی عرصہ کے تقریبا برابر ہیں۔چائنہ ڈیلی نے جمعہ کو آن MFA_China WuPeng_MFAChina zlj517 رسول اللہ صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم نے فرمایا : ’’ یہ دین ہمیشہ قائم رہے گا ، مسلمانوں کی ایک جماعت اس کی خاطر قیامت تک لڑتی رہے گی ۔‘‘ رواہ مسلم ۔

سعودی عرب میں سانپوں کی54اقسام گرمیوں میں خطرات میں مزید اضافے کی وارننگسانپ کی دنیا میں دلچسپی رکھنے والے ایک سعودی شہری نے گرمیوں کے دوران سعودی عرب میں خطرناک سانپوں کی سرگرمیوں میں اضافے پر متنبہ کیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق

پاکستان کی مقبوضہ کشمیر میں تین معصوم کشمیریوں کے قتل کی شدید مذمت | Abb Takk News

کورونا ڈیجیٹل سرٹیفیکٹ کی منظوری، یورپ میں پابندیوں کے بغیر سفر کی اجازتسٹراسبرگ: (ویب ڈیسک) یورپ کی پارلیمان نے گزشتہ دنوں کورونا ڈیجیٹل سرٹیفیکٹ کی منظوری دی ہے جس کی مدد سے رکن ملکوں کے شہری آزادانہ سفر کر سکیں گے۔