کورونا سے پاکستان میں ایک کروڑ افراد کے بیروزگار ہونے کا خدشہ

کورونا وائرس سے پاکستان میں ایک کروڑ افراد کے بیروزگار ہونے کا خدشہ

08/04/2020 7:47:00 AM

کورونا وائرس سے پاکستان میں ایک کروڑ افراد کے بیروزگار ہونے کا خدشہ

پاکستان میں منصوبہ بندی کی وزارت کے ذیلی ادارے پاکستان انسٹیٹیوٹ آف ڈویلپمنٹ اکنامکس نے کورونا وائرس کی وجہ سے معاشی سرگرمیوں پر منفی اثرات کا جائزہ لیتے ہوئے ایک کروڑ سے زائد افراد کے بیروزگار ہونے کے خدشے کا اظہار کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹGetty Imagesان کے تجزیے کے مطابق اگر کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے حالات مزید خراب ہوتے ہیں اور حکومت موجودہ حکمت عملی پر کاربند رہتی ہے تو محتاط اندازے کے مطابق تیس سے پچاس لاکھ افراد کا روزگار داؤ پر لگ سکتا ہے۔اگر لاک ڈاؤن کی مدت بڑھتی ہے اور اسے تین مہینے تک بڑھایا گیا تو یہ ایک کروڑ افراد کی ملازمتوں کو خطروں سے دوچار کر سکتا ہے۔

سورج آج خانہ کعبہ کے عین اوپر ہوگا، قبلہ کی درست سمت معلوم کی جاسکتی ہے - ایکسپریس اردو لداخ پر چین کے ہاتھوں ہزیمت کے بعد مودی کی کووڈ پالیسی بھی ناکام اناڑی نے ملک برباد کردیا، وسط مدتی انتخابات کرائے جائیں، ن لیگ - ایکسپریس اردو

ڈاکٹر پاشا کے مطابق کورونا وائرس کا پیدا کردہ معاشی بحران ملک میں تین شعبوں کو بری طرح متاثر کر سکتا ہے جن میں بیروزگاری کی شرح زیادہ ہو سکتی ہے۔ ان میں بڑی اور درمیانی صنعتیں، ہول سیل و ریٹیل کاروبار اور ٹرانسپورٹ کے شعبے شامل ہیں۔’سرکاری کفالت پیکج ناکافی ہے

‘معاشی امور کے ماہر خرم شہزاد کی کورونا وائرس کے پیدا کردہ معاشی بحران پر تجزیاتی رپورٹ نشاندھی کرتی ہے کہ لاک ڈاؤن کے طویل ہونے سے معاشی سرگرمی کے نہ ہونے یا کم ہونے سے ایک کروڑ سے زائد افراد کی ملازمتیں خطرے میں پڑ سکتی ہیں۔ان کی تجزیاتی رپورٹ کے مطابق عالمی بینک کے اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں سنہ 2019 میں ٹوٹل ورک فورس ساڑھے سات کروڑ افراد پر مشتمل ہے جنھیں ماہانہ آٹھ ارب ڈالر کے لگ بھگ تنخواہوں کی مد میں ادا کیا جاتا ہے۔

خرم شہزاد کے مطابق ایک کروڑ سے زائد افراد کے ملازمتوں سے ہاتھ دھونے کی صورت میں وہ ایک ارب ڈالر کی آمدنی سے ماہانہ محروم ہو جائیں گے۔ خرم شہزاد کا کہنا ہے یہ تخمینہ تنخواہ کی کم سے کم سطح پر رکھا گیا ہے۔کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی خراب معاشی صورتحال اور اس کے نتیجے میں بیروزگار ہونے والے افراد کے لیے مرکزی حکومت کی جانب سے ریلیف پیکج کا اعلان کیا گیا ہے جس کے تحت ملک میں ایک کروڑ سے زائد غریب خاندانوں کو نقد رقم کی صورت میں امداد دی جائے گی جو چار مہینے کے لیے بارہ ہزار روپے پر مشتمل ہو گی۔

اس سلسلے میں ڈاکٹر حفیظ پاشا کا کہنا ہے کہ یہ رقم وفاقی حکومت کے ’احساس پروگرام‘ کے تحت ایک کروڑ بیس لاکھ خاندانوں کو ادا کی جائے گی۔تاہم انھوں نے اس امداد کو ناکافی قرار دیتے ہوئے کہا کہ چار مہینوں کے لیے ایک خاندان کی ضروریات پوری کرنے کے لیے یہ رقم بہت کم ہے۔ ایک مہینے میں تین ہزار روپے کے ذریعے ایک خاندان کی کفالت بہت مشکل ہے۔

’معاشی ترقی کی رفتار مزید سست ہو گی‘ملازمت سے فارغ ہونے سے لے کر بغیر تنخواہ پر چھٹی پر بھیجے جانے والے ملازمین ان لاکھوں دیہاڑی دار مزدوروں کے علاوہ ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر اپنا روزگار کماتے ہیں۔یہ سب افراد کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لاک ڈاؤن کے نتیجے میں معاشی سرگرمیوں کے رک جانے کی وجہ سے شدید متاثر ہوئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹGetty Imagesپاکستانی معیشت جو کورونا وائرس کی وبا پھوٹنے سے پہلے بھی خراب تھی اس میں مزید ابتری کورونا وائرس کی وجہ سے آئی ہے۔ملک کی معاشی ترقی کے اعشاریوں میں تنزلی کی وجہ سے پہلے ہی بیروزگاری کی شرح بلندی کی طرف گامزن تھی اور اس میں مزید اضافہ کورونا وائرس کے نتیجے میں معاشی پہیے کے رک جانے کی وجہ سے ہوا ہے۔

پاکستان کے لیے 50 کروڑ ڈالر کا اعلان عوام شدید مہنگائی کے باعث حکومت سے نجات چاہتی ہے، آصف زرداری - ایکسپریس اردو بھارت کی جانب سے پاکستان میں فالس فلیگ آپریشن کا خطرہ ہے: وزیر اعظم

بین الاقوامی مالیاتی اداروں کی جانب سے کردہ اعدادوشمار کے مطابق پاکستان میں جی ڈی پی کی شرح میں اس مالی سال دو سے ڈھائی فیصد رہنے کی توقع ہے۔ کورونا وائرس سے پہلے جی ڈی پی تین فیصد رہنے کی پیش گوئی کی گئی تھی۔پاکستانی معیشت کے تازہ ترین جائزوں میں ایشیائی ترقیاتی بینک، عالمی بینک اور موڈیز نے ملکی معیشت کے کورونا وائرس کے جھٹکوں سے مزید خراب ہونے کی پیشنگوئی کی ہے۔

’شرح سود کم کیے بغیر تعمیراتی پیکج بے فائدہ ہو گا‘وفاقی حکومت نے تعمیراتی شعبے کے لیے ’مراعاتی پیکج‘ اور چودہ اپریل سے اسے کھولنے کا اقدام معیشت کی خراب صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے اٹھای ہے تاکہ کورونا وائرس کی وجہ سے بیروزگاری کی بلند شرح پر قابو پایا جا سکے۔

وفاقی حکومت نے تعمیراتی شعبے کو باقاعدہ صنعت کا درجہ دے کر اسے سرمایہ کاری کے لیے پرکشش بنایا ہے تاکہ اس شعبے اور اس سے منسلک اسٹیل، فولاد، لکڑی، سیمنٹ، بھٹوں، بجلی کے آلات اور ہارڈ ویئر سمیت دوسرے شعبوں میں کام کی رفتار کو تیز کیا جا سکے۔معیشت کے ماہرین نے تعمیراتی شعبے کے لیے مراعات کو سراہا تاہم اس سلسلے میں انھوں نے مزید اقدامات کی ضرورت پر زور دیا۔

ڈاکٹر پاشا کا کہنا ہے حکومت کی جانب سے تعمیراتی شعبے کے لیے مراعاتی پیکج بڑی اہمیت کا حامل ہے اور اس سے حکومت روزگار کے مواقع پیدا کر سکتی ہے تاہم ان کے مطابق حکومت کو تعمیراتی شعبے میں طلب کے پہلو کو بھی مدنظر رکھنا چاہیے۔تعمیراتی شعبہ مکان تو بنا دے گا لیکن ملک میں گیارہ فیصد کے بلند شرح سود پر لوگوں کا بینکوں سے قرض لینا مشکل ہو گا۔

ڈاکٹر پاشا کے خیال میں اگر حکومت تعمیراتی شعبے میں طلب کو بڑھانا چاہتی ہے تو اسے شرح شود کو پانچ سے چھ فیصد تک گرانا ہوگا تاکہ لوگ مکان خریدنے کے لیے بینکوں سے سستے قرضے لے سکیں۔ مزید پڑھ: BBC News اردو »

Allah khair karega کورونا کی وبا دیہاڑی دار طبقے کے روزگار کو نگل رہی ہے۔ ایک مزدور کی فریاد سنیے اور اپنے آس پاس موجود ایسے افراد کی مدد کیجیے۔ پر اپ نے گھبرانا نہیں ہے 😂😂😂 ایک کروڑ تو وہ ہیں جن کے پاس روزگار تھا اور وہ جو 2 کروڑ پہلے ہی بروز گار تھے ان کا کون ذمہ دار ہو گا یا اللہ سب پر رحم کر آمین SaranKhaliq7

سب سے زیادہ نقصان یورپ اور امریکہ کا ھو گا ھم پہلے جیسے تھے کرونا وائرس کے بعد بھی ایسے رھے گے Definitely! And it will be our lower class peole Fake news media DHumdan indeed pakistani economy is being destroyed yet government as persisting with this stupid lockdown Yes a massive change in economic conditions in Pakistan after this outbreak. Which will affect every segment of society.

Allah raham karain 😥😥😥 کوئی بات نہیں ہم تو پہلے سے ہی بیروز گار ہیں Afsoos Ye such hy Aur koi bad news hay tu wo bhee chala du. BBC is a fake and paid news source. Don't generate panic and discontentment in our society. Go to your Lords who pay you. It's like telling, everyone in BBC will die, isn't it true!

جھوٹ، پروپیگنڈا جہاں حکومت کرونا وائرس کے خلاف متحرک ہے وہیں پر پولیو کیسز میں اضافے کا بھی خطرہ ہے۔ لاک ڈاؤن کے باعث پولیو ورکز بھی گھر تک محدود۔ اور ان کے لیے بھی حفاظتی اقدامات ہونے چاہیں تاکہ پاکستان کے ہر چھوٹے بچے پولیو کے قطروں سے محروم نا ہوں۔ ImranKhanPTI UsmanAKBuzdar Dr_FirdousPTI Fake news

پہلے کونسا روزگار تھا GOD HELP US Ase tweet ki positive side bhi hone chahiye ☹️ Tu yahan pehly bara mansha hi bethy houe sary ہو گئے ہیں

پاکستان میں وہیل شارک کے نمونے سے اس کی عمر کا تعین - Pakistan - Dawn News

پاکستان میں وہیل شارک کے نمونے سے اس کی عمر کا تعین - Pakistan - Dawn News

اسٹاک مارکیٹ : کاروبار کے آغاز پر تیزی کا رحجان،250 سے زائد پوائنٹس کا اضافہاسٹاک مارکیٹ : کاروبار کے آغاز پر تیزی کا رحجان،250 سے زائد پوائنٹس کا اضافہ Pakistan StockExchange KSE100 Index Increase PSX FinMinistryPak a_hafeezshaikh Covid_19 CoronaUpdate CoronavirusOutbreak pid_gov

طالبان کا قیدیوں کے تبادلے پر افغان حکومت سے مذاکرات ختم کرنے کا اعلانطالبان کا قیدیوں کے تبادلے پر افغان حکومت سے مذاکرات ختم کرنے کا اعلان Afghan Taliban End Talks Afghan Govt Prisoner Swap suhailshaheen1 ashrafghani MoDAfghanistan moiafghanistan ARG_AFG Afghanistan suhailshaheen1 ashrafghani MoDAfghanistan moiafghanistan ARG_AFG isi کا غلام suhailshaheen1 ashrafghani MoDAfghanistan moiafghanistan ARG_AFG هم طالب جیسا کویی ISI کا غلام نهی طالب دال خور کا کویی فرمایش قبول نا هوجایگاه اگر یی مذاکرات ناکام هوگیا همارا اگلا پروگرام شروع هوجایگا طالب دهشتگردو کا اعدام

”پاکستان کرکٹ کا برازیل ہے“ وسیم اکرم نے کس آسٹریلین سے یہ بات کہی؟لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق کپتان اور سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم نے قدرتی ٹیلنٹ کی وجہ سے پاکستان کو کرکٹ کا برازیل قرار

’وہاب، عامر نے ٹیسٹ نہ کھیلنے کے فیصلے سے پاکستان کو نقصان پہنچایا‘پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق کی طرح وقار یونس بھی وہاب ریاض اور محمد عامر کے ٹیسٹ نہ کھیلنے کے فیصلے پر خاصے برہم دکھائی دیتے ہیں۔ اور کوئی نہیں بچا کیا اتنا سال عامر باہر رہا تب؟ April That's right that's the real basic it's a real worst decision specially from both these but still it's all just doesn't matter now we've got some excellent new pace battery of Husnain Nasim Abbas Shahin Akif Dilbar & many more .