Kashmir, Article 370

Kashmir, Article 370

کشمیری رہنما شاہ فیصل کو حراست میں لے لیا گیا

انڈین میڈیا کے مطابق کشمیری سیاستدان اور سابق بیورو کریٹ شاہ فیصل کو دلی سے حراست میں لے لیا گیا ہے۔ منگل کو بی بی سی کے ساتھ انٹرویو میں انھوں نے اس خدشے کا اظہار کیا تھا کہ کشمیر واپسی پر انھیں گرفتار کر لیا جائے گا۔

14.8.2019

’وہ لوگ جن کا خیال تھا کہ انڈیا انھیں دھوکہ نہیں دے گا، یہ جو ہمارے ساتھ کیا گیا ہے، یہ جو سلسلہ پانچ اگست 2019 کو شروع ہوا ہے، یہ ہماری نسل کو دھوکہ دیا گیا ہے‘: شاہ فیصل کا حراست سے پہلے بی بی سی کو انٹرویو Kashmir Article370

انڈین میڈیا کے مطابق کشمیری سیاستدان اور سابق بیورو کریٹ شاہ فیصل کو دلی سے حراست میں لے لیا گیا ہے۔ منگل کو بی بی سی کے ساتھ انٹرویو میں انھوں نے اس خدشے کا اظہار کیا تھا کہ کشمیر واپسی پر انھیں گرفتار کر لیا جائے گا۔

’وادی میں لاک ڈاون ہے، سڑکیں سنسان، بازار بند ہیں، انٹرنیٹ، ٹی وی، موبائل نیٹ ورک معطل ہیں اور لوگ اپنے عزیز و اقارب سے رابطہ نہیں کر پا رہے ہیں۔ جموں و کشمیر کی عوام کو خوراک کی قلت کا سامنا ہے۔ جموں و کشمیر میں اس وقت جنگ سی صورتحال ہے، غیر معمولی تعداد میں سکیورٹی فورسز موجود ہیں۔ کشمیر کی تمام سیاسی قیادت کو گرفتار یا حراست میں لیا گیا ہے۔‘

’ہم لوگوں کو بنا کسی وجہ کے قید کر دیا گیا ہے، ہمارے دو سابق وزرا اعلیٰ نظر بند ہیں۔ لہذا جب آپ تحریک چلانے کی بات کرتے ہیں تو گذشتہ ایک ہفتے کے دوران وادی میں کسی بھی قسم کا احتجاج کرنا ناممکن ہے۔ لیکن مجھے علم ہے کہ جیسے ہی کشمیر میں پابندیاں ختم ہوں گی تو فطری تور پر وہاں مظاہروں کا آغاز ہو جائے گا۔‘

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ حیرانی کی بات ہے کہ انڈیا دنیا میں خود کو سب سے بڑی جمہوریت کہنے کا دعویدار ہے اور نریندر مودی کے وزیر اعظم بننے کے باوجود ہم سمجھتے تھے کہ یہاں چند جمہوریت پسند ادارے ہیں جو آئین کی حفاظت کریں گے لیکن سب سے حیران کن بات یہ ہے کہ جس انداز سے حکومت نے یہ اقدام اٹھایا ہے۔

جموں و کشمیر کی تعمیر نو سے متعلق بل کی انڈین لوک سبھا میں منظوری کے سوال پر شاہ فیصل کا کہنا تھا کہ ’ہم جمہوری مینڈیٹ کا احترام کرتے ہیں لیکن پارلیمنٹ کا کام جمہوریت کے اصولوں کو ختم کرنا نہیں ہے۔ پارلیمنٹرینز صرف اکثریت کی آواز نہیں بن سکتے۔

’اگر آپ غور کریں تو انڈیا کی سپریم کورٹ نے بھی پارلیمنٹ کے لیے ایک ضابطہ کار مرتب دیا ہوا ہے جس کے تحت چند ایسی چیزیں ہیں جو انڈین پارلیمنٹ بھی تبدیل نہیں کر سکتی۔ اور ہمارا خیال ہے کہ جیسا کہ سپریم کورٹ نے خود کشمیر کے آرٹیکل 370 کی بنیاد رکھی ہے تو پارلیمنٹ اس کو بھی تبدیل نہیں کر سکتی۔‘

’چند جماعتوں نے پہلے ہی اس کو چیلنج کیا ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ یہ ایک طویل لڑائی ہو گی۔ میں جانتا ہوں کہ سپریم کورٹ کے لیے بھی اس کو واپس کرنا آسان نہیں ہوگا جو ایک اکثریت رکھنے والی حکومت نے کیا ہے۔ یہ سپریم کورٹ کے ججوں کے لیے بھی آسان نہیں ہو گا کہ حق کا ساتھ دے سکیں۔‘

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ملک میں مذاکرات کے لیے ماحول نہیں رہا، ’صرف ہمارے لیے ہی نہیں بلکہ ہر کسی کے لیے ختم ہو گیا ہے۔ وہ لوگ جو ملک میں مفاہمت اور مذاکرات کی سیاست کے حامی تھے پانچ اگست کو ان کے منھ پر طمانچہ مارا گیا ہے۔

پروگرام کے میزبان کی جانب سے اس سوال پر کہ کیا آپ اب اپنے آپ کو علحدگی پسند سمجھتے ہیں، شاہ فیصل کا کہنا تھا کہ ’میں اپنے آپ کو مرکزی دھارے کے سیاستدان یا علحیدگی پسند کی اصلاحات کی قید میں بند نہیں کرنا چاہتا کیونکہ یہ انڈین حکومت کا بیانیہ ہے۔

شاہ فیصل نے کہا کہ انھیں کشمیر کے مسئلے پر عالمی برادری کے ردعمل نے بہت مایوس کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ’اس علاقے پر خطے کی تین جوہری طاقتیں اپنے حق کی دعویدار ہیں اور یہ ایک فلیش پوائنٹ ہے اور اس کو ایسے نہیں چھوڑا جاسکتا۔ عالمی برادری کو کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا نوٹس لینا ہو گا۔‘

انھوں نے اس بات پر زور دیا کہ یہ وقت ہے جب صرف کشمیری عوام کا بیانیہ سنا جائے کیونکہ ماضی میں ہمیشہ سے کشمیر کے بیانیے کو یا تو انڈیا کے بیانیے یا پاکستان کے بیانیے کے ساتھ ملا کر سنا گیا ہے۔

شاہ فیصل جموں و کشمیر کی سیاسی جماعت پیپلز موومنٹ کے رہنما ہیں۔ان کا تعلق وادی کشمیر کے علاقے کپواڑہ سے ہے۔

مزید پڑھ: BBC News اردو

وادی میں دسویں روز بھی لاک ڈاؤن، کشمیری بدستور گھروں میں محصور

کشمیری خواتین کو برطانوی وزارت خارجہ کی حمایت کی اشد ضرورت ہے: سعیدہ وارثیسعیدہ وارثی اس سلسلے میں کیا کردار ادا کر رہی ہیں اس کی نہیں صرف سچے مسلمانوں کی ضرورت ہے

کشمیری خواتین کو فوری حمایت کی ضرورت ہے، سعیدہ وارثیکشمیری خواتین کو فوری حمایت کی ضرورت ہے، سعیدہ وارثی ويڈيو لنک: DailyJang

اللہ تعالیٰ کشمیری بھائیوں کی مشکلات کو آسان کرے، سرفراز احمدکراچی: قومی کرکٹ ٹیم کےکپتان سرفراز احمد دعا گو ہیں کہ اللہ تعالیٰ کشمیری بھائیوں کی مشکلات کو آسان کرے۔ عید الاضحیٰ کی نماز کی ادائیگی کے بعد کشمیری عوام سے یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے

پاکستان کی کشمیری مسلمانوں کو مذہبی آزادی سے محروم کرنے کی مذمت - Pakistan - Dawn Newsکشمیر کی انتہائی پیچیدہ صورت حال میں عالمی رد عمل اور مزمت کی ضرورت ہے۔ بگڑتے کشمیری حالات بھارت کے جنگی عزائم کا مظاہرہ کرتے ہیں۔

کشمیری بھائیوں کو کسی موڑ پر تہنا نہیں چھوڑیں گے: صدرِ مملکتکشمیری بھائیوں کو کسی موڑ پر تہنا نہیں چھوڑیں گے: صدرِ مملکت تفصیلات جانئے: DailyJang

تبصرہ لکھیں

Thank you for your comment.
Please try again later.

تازہ ترین خبریں

خبریں

14 اگست 2019, بدھ خبریں

پچھلا خبر

وزیر خارجہ کا روسی ہم منصب کو فون،مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر بریفنگ - ایکسپریس اردو

اگلا خبر

اسلامو فوبیا کے واقعات دنیا کے امن کیلیے خطرہ بن سکتے ہیں: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی