چینی فارنزک رپورٹ: ’ترین، زرداری، شریف خاندان سمیت چھ بڑے گروپس نے فراڈ اور ہیرا پھیری کی‘

چینی فورینزک رپورٹ: ’ترین، زرداری، شریف خاندان سمیت چھ بڑے گروپس نے فراڈ اور ہیرا پھیری کی‘

21/05/2020 4:45:00 PM

چینی فورینزک رپورٹ: ’ترین، زرداری، شریف خاندان سمیت چھ بڑے گروپس نے فراڈ اور ہیرا پھیری کی‘

پاکستان میں چینی کے بحران سے متعلق فارنزک رپورٹ میں پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والی اہم کاروباری شخصیت جہانگیر ترین، سابق حکمران شریف خاندان، گجرات کے چوہدری برادران، پنجاب اور سندھ پر فراڈ اور ہیرا پھیری جیسے الزامات عائد کیے گئے ہیں۔

Image captionچینی بحران پر قابو پانے کے لیے وفاقی حکومت نے یوٹیلیٹی سٹورز کو سبسڈی دینے کا اعلان کیا ہےشہزاد اکبر کے مطابق کمیشن رپورٹ میں الزام لگایا گیا ہے کہ ’گنے والے کسان کو مسلسل نقصان پہنچایا گیا، انھیں لوٹا گیا۔ شوگر ملز نے انتہائی کم داموں میں کاشتکار کو قیمت ادا کی ہے۔ ملز مالکان نے جس وقت 140 روپے سے کم قیمت پر گنا خریدا اس وقت سپورٹ پرائز 190 روپے بنتی تھی۔‘

پی آئی اے طیارہ حادثہ کی تحقیقات میں معاونت، ایئر بس کمپنی کی ٹیم جائے حادثہ پر پہنچ گئی ملک میں شدید گرمی کا راج، سندھ میں آج بھی پارہ 48 تک جانے کا امکان طیارہ حادثہ تحقیقات، فرانسیسی ٹیم کی کراچی آمد، جائے حادثہ کا دورہ شیڈول

انھوں ںے بتایا کہ ’تحقیقات کے بعد اس گنے کی قیمت میں اس وقت اضافہ کیا گیا جب حکومت نے کمشن بنانے کا اعلان کیا۔‘ شہزاد اکبر کے مطابق ’مل مالکان نے عوام کے ساتھ زیادتی کی ہے اور انھیں لوٹا ہے۔‘’پیداواری قیمت میں فرق‘شہزاد اکبر نے بتایا کہ کمیشن کی رپورٹ کے مطابق ’مل مالکان نے پیداواری قیمت بڑھائی اور آڈٹ کے مطابق چینی کی فی کلو قیمت پر اوسطاً 13 روپے کا فرق سامنے آیا ہے۔‘

ان کے مطابق ’کمیشن کا کہنا ہے کہ سنہ 2018 میں ملز کی طرف سے 52 روپے چھ پیسے قیمت رکھی گئی جبکہ یہ 40 روپے چھ پیسے بنتی تھی۔شہزاد اکبر نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ’ملز نے 2019-20 میں یہ قیمت 62 روپے مقرر کی جبکہ کمیشن کے مطابق یہ قیمت صرف 46 روپے چار پیسے بنتی تھی۔ ان کا کہنا ہے کہ کمیشن کے مطابق گنا کم قیمت پر خرید کر کاغذوں میں زیادہ قیمت دکھائی گئی ہے۔ ملز نے اپنے نقصان کو بھی اس پیداواری قیمت میں دکھایا ہے۔‘

شوگر کمیشن نے مل مالکان کے اس موقف سے اتفاق نہیں کیا ہے۔’عام آدمی کے ساتھ زیادتی‘شہزاد اکبر کے مطابق کمیشن کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ’پیداواری قیمت میں ہر سال 12 سے 13 روپے کا فرق نظر آ رہا ہے۔ چینی کا بحران پیدا کرنے کے لیے دانستہ ہیرا پھیری کی گئی ہے، جس کا فائدہ مل مالکان اور نقصان عوام کو ہوتا ہے‘۔

شہزاد اکبر نے چینی کی مارکیٹ میں ڈیلیوری کے حوالے سے سٹے کے طریقہ کار پر بات کی کہ اس پر کمیشن نے تفصیل سے لکھا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’شوگر کمیشن بننے کی وجہ سے کاروباری حضرات کو جوے اور سٹے میں نقصان ہوا ہے۔ تحقیقات کا آغاز نہ ہوتا تو ابھی چینی کی قیمتوں میں اضافہ ہونا تھا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹGetty Images’اکاؤنٹس کی مد میں فراڈ‘شہزاد اکبر نے رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ چار یا پانچ فیصد گنا گڑ کے لیے بھی رکھ دیں تو پھر بھی باقی 25 فیصد مقدار کہاں گئی اس کے بارے میں معلومات نہیں دی گئیں۔شہزاد اکبر کے مطابق ’ایک عشاریہ سات ملین ٹن چینی رپورٹ ہی نہیں کی گئی۔ مل مالکان نے دو دو کھاتے رکھے ہوئے ہیں۔ ایک وہ جو اداروں کو دکھایا جاتا ہے اور دوسرا سیٹھ کے لیے کہ حقیقت میں کتنا فائدہ ہوا ہے۔‘

انھوں نے بتایا کہ کمیشن رپورٹ میں درج ہے کہ ’بے نامی ٹرانزیکشن ہوئی ہیں، جو ٹیکس چوری کا معاملہ ہے۔ مل مالکان نہ روڈ ڈویلپمنٹ دے رہے ہیں اور نہ سیلز ٹیکس دے رہے ہیں۔‘ان کا کہنا تھا کہ ’تمام ملز نے کرشنگ کی صلاحیت کو بڑھایا ہے۔ پہلے اس کے لیے اجازت چاہیے ہوتی ہے۔ مخلتف ملز نے دس ہزار سے لے کر 65 ہزار تک پیداواری صلاحیت بڑھا دی یعنی آٹھ نو ملز بغیر اجازت کے لگا دی گئی ہیں۔‘ اس ضمن میں انھوں نے جہانگر ترین کا نام بھی لیا ہے۔

کینسرمیں مبتلا نادیہ جمیل گزرتے دنوں کے ساتھ مزید حوصلہ مند - ایکسپریس اردو طیارے حادثہ کے بعد پی آئی اے کا فلائٹ آپریشنز کنٹرول سسٹم تبدیل کرنے کا فیصلہ طیارہ حادثے کے آخری لمحات، اہم سوالات اور ان کے ممکنہ جوابات

شہزاد اکبر نے کہا کہ ’اس طریقے سے یہ اکاؤنٹس فراڈ ہوا ہے۔‘برآمدات میں سبسڈیشہزاد اکبر نے الزام عائد کیا ہے کہ کمیشن کی رپورٹ کے مطابق سندھ کے وزیر اعلیٰ نے اومنی گروپ کو فائدہ پہنچانے کے لیے نو اعشاریہ تین ارب روپے کی سبسڈی دی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ ’گذشتہ پانچ سال میں 29 ارب روپے کی سبسڈی دی گئی ہے۔ اس عرصے میں مل مالکان نے 52 ارب روپے کا انکم ٹیکس دیا، جس میں سے 29 ارب کی سبسڈی میں چلے گئے۔ اس میں 12 ارب ریفنڈ ہوئے اور اس طرح کل انکم ٹیکس صرف دس ارب روپے دیا گیا ہے۔‘

کارٹلائزیشنشہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ ’شوگر ملز اس وقت اجارہ داری قائم کیے ہوئے ہیں۔ مسابقتی کمیشن اس کارٹلائزیشن کو توڑنے میں ناکام رہا ہے۔ کچھ ملز کا فورینزک آڈٹ کیا گیا ہے۔ چھ بڑے گروپس جو 51 فیصد شوگر پیدا کرتے ہیں۔ ان چھ گروپس کے نمونے لے کر فورینزک کیا گیا۔‘

ان کے مطابق ’ان ملز میں سے سب سے زیادہ حصہ یعنی 20 فیصد جہانگیر ترین کی جے ڈی ڈبلیو ملز گروپ کا ہے۔ اس میں ہونے والی خلاف ورزیوں سے متعلق عید کے بعد وزیر اعظم کی ہدایت پر سفارشات تیار کی جائیں گی۔شہزاد اکبر کے مطابق ’اس بات کا بھی فیصلہ کیا جائے گا کہ اس فراڈ کے خلاف کون سا ادارہ ان مل مالکان کے خلاف کارروائی کرے۔

شہزاد اکبر کا کہنا ہے کہ کمیشن رپورٹ کے مطابق اس وقت حکومتی ادارے یرغمال بنے ہوئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان نے ان کی ’ذمہ داری لگائی ہے کہ اس حوالے سے سفارشات تیار کی جائیں کہ ایف بی آر، نیب، ایف آئی اے، مسابقتی کمیشن اور دیگر اداروں میں کس قسم کی اصلاحات متعارف کرانا ضروری ہیں۔‘

٭٭اس خبر کو رپورٹ میں شامل مزید تفصیلات اور اس پر ردعمل سے اپ ڈیٹ کیا جا رہا ہے۔خیال رہے کہ اس سے قبل چینی بحران پر انکوائری رپورٹ شائع ہو چکی ہے۔چینی کے بحران پر تحقیاقتی رپورٹ میں کیا تھا؟تحقیقات میں الزام عائد کیا گیا کہ جہانگیر ترین کی ’جے ڈی ڈبلیو‘ شوگر ملز اور ’جے کے کالونی-

II‘ کا ذکر کرتے ہوئے کہا گیا کہ سال 2018-19 کے دوران سب سے زیادہ فائدہ جہانگیر ترین کی شوگر ملز کو پہنچایا گیا ہے۔جے ڈی ڈبلیو نے کل چینی کی پیداوار 640،278 ٹن کی جس میں سے 121،621 برآمد کی گئی جو کل برآمدات کا15.53 فیصد بنتا ہے۔ جہانگیر ترین کو حکومت کی طرف سے 56 کروڑ سے زائد سبسڈی ملی جو کل دی گئی سبسڈی کا 22.52 فیصد بنتا ہے۔

Producer of Turkish drama Resurrection: Ertugrul wishes to collaborate with Pakistanis پتوکی: پھاٹک کراس کرتے ہوئے کار ٹرین کی زد میں آ گئی، 4 افراد جاں بحق PM, UAE crown prince discuss ways to promote bilateral cooperation - 92 News HD Plus

جہانگیر ترین کی ہی جے کے کالونی-IIنے 70،815 ٹن چینی کی پیداوار کی اور 1،000 ٹن برآمد کر لی اور پھر اس پر مزید سبسڈی بھی حاصل کی۔وفاقی وزیر خسرو بختیار کے قریبی رشتہ دار کے ’آر وائی کے گروپ‘ نے 31.17 فیصد چینی برآمد کی اور 18.31 فیصد سبسڈی حاصل کی جو 45 کروڑ سے زائد بنتی ہے۔

دیگر کمپنیوں میں ’الموئیز انڈسٹریز‘ اور ’تھل انڈسٹری کارپوریشن‘ ہیں جنھیں کل سبسڈی کا 16.46 فیصد دیا گیا۔کمیشن رپورٹ کے سامنے آنے کے بعد جہانگیر ترین نے ٹوئٹر پر اپنا موقف دیتے ہوئے کہا تھا کہ انھیں تین ارب روپے کی ملنے والی سبسڈی میں سے ڈھائی ارب کی سبسڈی مسلم لیگ ن کے گذشتہ دور میں دی گئی جب وہ اپوزیشن میں تھے۔

Some points to note on sugar inquiry report1..My companies exported 12.28% while my market share is 20% so less than I could Have2.Export was on first comeFirst serve basis مزید پڑھ: BBC News اردو »

یہ صاحب اُس ملک کو لوٹا گیا جس کا کوئی وارث جس ملک سے اگر کو ئی ہمدردی کرتا بھی ہے تو صرف اس لیے تاکہ آنے والے وقتوں میں وہ خود اس کے مفلوج خزانوں پر ڈاکہ مار سکے.یہ لوٹنے والے ارب پتی سے کھرب پتی بن گئے میرے ملک کا ہر فرد ہزاروں سے اب لاکھوں کا مقروض ہو گیا. چینی رپورٹ کا خلاصہ ۔۔سبسڈی دینے والے ہیرو اورسبسڈی لینےوالے زیرو۔ ایکسپورٹ کی اجازت دینے والی وفاقی حکومت قوم کی محسن اور اس سےفائدہ اٹھانے والےمل مالکان چور۔لوٹ مار کے مواقع دینے والی حکومت زندہ باد اور موقع سے فائدہ اٹھا کرلوٹ مارکرنےوالےمردہ باد۔ یہ ہےتحریک انصاف کا انصاف

aajeel_dars NiaziSelectionFailed NiaziCheeniChor رزلٹ انشااللہ زیرو... Only Imran Khan can do this. Not taking any influence from JKT who is the pillar of pti. یے رپورٹ ٹیکنیکلی انتقامی کاروائی ہے جس کا اشارہ شیخ رشید نے بتادیا ہے کے نیب عید کے بعد دیا ہوا ٹاسک شروع کرےگی۔ یہ فیصلے تو وفاقی اور صوبائی کابینہ اور اکنامک کونسل میں ہوتے ہیں جن کی سربراہی وزیر اعلیٰ اور وزیراعظم کرتے ہیں. کیا وہ بھی اس کی ذمہ داری قبول کریں گے

چلو رپورٹ تو آگئ کیا آگے بھی کچھ نہ کچھ ہو گا یہ معاملہ یہیں رفع دفع کردیا گیا What will do this report? Will state took their mills in government custody? Will formers get paid? Will Court not give them so called zamant and free them? Will they all go to jail? We can't see any one in power in jail. Even 90 percent of these crrpt

ھاھاھا عمران ترین بزدار اور اسد عمر کو بچا لیا گیا پہلے سبسڈی تب دی گئی جب پیداوار زیادہ تھی اور ملک میں قیمت نہی بڑھی اور اب تو قیمت پچاس فی صد بڑھا کر عوام کے جیب پر سو ارب کا ڈاکہ ڈال دیا گیا

چینی آٹا بحران رپورٹ: کیا حکومت رپورٹ منظر عام پر لائے گی؟ملک میں کورونا وائرس سے نمٹنے کے ساتھ ساتھ حکمراں جماعت کو جو سب سے بڑے چیلنج کا سامنا ہے وہ آٹے اور چینی کے بحران سے متعلق ایف آئی اے کی رپورٹ آنے کے بعد عوام میں اپنی بظاہر کھوئی ہوئی ساکھ اور مقبولیت کو بحال کرنا ہے۔ ایک نیا معاذ کھلے گا رپورٹ وزیراعظم کو پیش کر دی گئی ہے اب دیکھیں آفیشلی یا ان آفیشلی کیسے پبلک تک پہنچتی ہے d most disgusting thieving rogues who robbed Pakistan mercilessly n amassed wealth w/ pelf n corrupt financial practices

چینی بحران سے متعلق انکوائری کمیشن کی رپورٹ پبلک کرنے کا اعلان - Pakistan - Dawn News

وفاقی کابینہ کااجلاس ، چینی بحران کی فرانزک رپورٹ جاری کرنے یانہ کرنےکی منظوری کاامکاناسلام آباد : وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس میں ک چینی بحران کی فرانزک رپورٹ جاری کرنے یانہ کرنے کی منظوری دی جائے گی ARYNEWSOFFICIAL شوگر انکوائری رپورٹ کو پبلک کرنے یا نہ کرنےکے بارے میں فیصلہ ہم کریں گے کرنل_کی_بیوی ARYNEWSOFFICIAL ARYNEWSOFFICIAL Good

چینی بحران سے متعلق انکوائری کمیشن کی فرانزک رپورٹ پبلک کرنے کا اعلان - Pakistan - Dawn NewsSAY NO TO ONLINE EXAMS. TAKE EXAMS WHEN UNIVERSITY WILL REOPENS OR PROMOTE US ON THE BASES OF INTERNAL MARKS. boycottuol SayNoToOnlineExams hecpkofficial fawadchaudhry ArifAlvi Shafqat_Mahmood ImranKhanPTI wewantjustice

وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس، چینی بحران پر تحقیقاتی رپورٹ پیش کی جائے گیاسلام آباد : وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس آج ہوگا ، جس میں چینی بحران پر تحقیقاتی رپورٹ پیش کی جائے گی۔ ہوگا کچھ بھی نہں 10 سال عدالت میں کبھی یہ چکر کبھی یہ چکر ہونا کچھ وی نہیں جو مرضی کرلو ایک حل ہے، ان چینی چوروں کو دھوپ میں کان پکڑا کر لتر ماریں جائیں مانتے ہیں یا نہی اور کاروائی کر دی جائے ImranKhanPTI waqas_amjaad zartajgulwazir saniakamran143 PTIofficial خان کی وفاقی کابینہ بس نام کی کابینہ ہے ،ان کے فیصلوں کو چپراسی مافیا بھی تسلیم نہیں کرتے ۔ مافیاز کون کنٹرول کر رہا ہے ۔ وجہ صرف یہ ہے کہ پارلیمنٹ میں دو تہائی اکثریت نہ ہونے کی وجہ سے ہر مافیاز زور پکڑ چکا ہے

جہانگیرترین نے چینی تحقیقاتی کمیشن کی رپورٹ کو جھوٹ کا پلندہ قرار دے دیا - ایکسپریس اردوہمیشہ دیانت داری سے کاروبار کیا ہے پورا ٹیکس اداکرتا ہوں اور تمام الزامات کا جواب دوں گا، پی ٹی آئی رہنما کا ٹوئٹ ہر چور ڈاکو یہی کہتا ہے چینی چوری کی رپورٹ جو آج پیش کی گئی اس کےمطابق حکومت نے خود سسبڈی دی خودایکسپورٹ کی اجازت دی خود قیمت بڑھائی خود چینی بحران پیدا کیا اور” خان “کی ATM مشینز کے علاوہ جو مل مالکان حکومت کی اس سکیم میں ساتھ تھے وہ چور ہیں اور حکومت بےقصور ہے چوروں کا سہولتکارکون ہوا؟ رسوائ پر کوئ کاروائ کریں گے ؟