لوگوں سے بھرا کمرہ عدالت دیکھ کر چیف جسٹس پاکستان برہم - ایکسپریس اردو

  • 📰 ExpressNewsPK
  • ⏱ Reading Time:
  • 23 sec. here
  • 2 min. at publisher
  • 📊 Quality Score:
  • News: 12%
  • Publisher: 53%

پاکستان عنوانات خبریں

پاکستان تازہ ترین خبریں,پاکستان عنوانات

مزید پڑھئے:

چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمد بھرا ہوا کمرہ عدالت دیکھ کر برہم ہوگئے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے فاضل بینچ نے مارگلہ ہلز تعمیرات کیس کی سماعت کی۔ دوران سماعت کمرہ عدالت لوگوں اور وکلا سے بھر گیا۔ چیف جسٹس بھرا ہوا کمرہ عدالت دیکھ کر برہم ہوئے۔ انہوں نے ریمارکس دیئے کہ سماجی فاصلہ کیوں نہیں رکھا جا رہا، ایک نشست چھوڑ کر بیٹھیں، وکلاء اور صحافی بھی سماجی فاصلہ رکھیں، جن کا کیس ہے صرف وہی لوگ کمرہ عدالت میں رکیں۔ ہم نہیں چاہتے کہ عدالت میں ایسا کچھ ہو۔

 

آپ کے تبصرے کا شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزہ لینے کے بعد شائع کیا جائے گا۔

اب ڈر لگتا ہے جب شاپنگ مال کھولے تھے تب کیوں ڈر نہیں لگا

Khudda k leay meri awaz chief justice tak puhchade.meri salary chief commissioner income tax regional tax office sukkur sind n band ker di illegally.corona ki wajah se m mery bachy bhook mar rahy h, FBR,se bara currupt virus koi nhi.

او کی ایدی جوتی چکن لگے سی؟😕😕😕😕

چیپ چسٹس نے ملک ریاض کی بیٹیوں کیجانب سے قانون کی دھجیاں اُڑانے پر نوٹس کب لینا ہے یا پھر ملک کا نام سُن کر ستُو مُک گئے یا پلاٹ کی فائل کام کرگئی

سر گروپ انشورنس ملازمن جو حق آهي ـ ڪنهن کي دانهن ڏجي ـ توهان ڪجهه ھن تي ڳالھايو ڪوشش ڪريو توهان کي دعائون ڏيندا سڀ

لوگ جمع ہون گے تو رشوت لینے کا موقع نین ملے گا اگر کسی.نے ویڈیو بنا لی تو اسلیے عدلت کے کمرے خالی رکھا کرو ریٹائرڈ ہونے کے بعد یورپ مین گھر نین لینا اس کے لیے مال کہاں سے اے گا عوام کو سوچنا چاہئے

Plz share

اگر اتنا ہی ڈر ہے تو پھر نوکری چھوڑ دو ۔۔۔۔

شاپنگ مالز اور بازار لوگوں سے بھر جائے بس کمرہ عدالت نہیں بھرنا چاہیے

Too late now.

کعنت اسکی شک پر ججوں کی دلالی کرنے والا

Logon se dar lagta hy kya

ہم نے اس خبر کا خلاصہ کیا ہے تاکہ آپ اسے جلدی سے پڑھ سکیں۔ اگر آپ خبر میں دلچسپی رکھتے ہیں تو آپ مکمل متن یہاں پڑھ سکتے ہیں۔ مزید پڑھ:

 /  🏆 13. in PK

پاکستان تازہ ترین خبریں, پاکستان عنوانات

Similar News:آپ اس سے ملتی جلتی خبریں بھی پڑھ سکتے ہیں جو ہم نے دوسرے خبروں کے ذرائع سے جمع کی ہیں۔

جسٹس فائز عیسیٰ ریفرنس میں پیشی، فروغ نسیم ایک بار پھر مستعفیوفاقی وزیر قانون فروغ نسیم اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے ہیں اور وہ سپریم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسی کے خلاف صدارتی ریفرنس میں دو جون کو ہونے والی سماعت میں وفاق کی نمائندگی کریں گے۔ یہ تماشہ کب تک چلے گا بھائی It’s Banana republic ایک یہی جج ہے جو انکے کنٹرول سے باہر ہے
ذریعہ: BBCUrdu - 🏆 11. / 59 مزید پڑھ »

جسٹس فائز عیسیٰ کیس،وفاق کی نمائندگی کیلئے فروغ نسیم مستعفیٰجسٹس فائز عیسیٰ کیس،وفاقی کی نمائندگی کیلئے فروغ نسیم مستعفیٰ SamaaTV Lutaroo ka dfa lotyra hi kr sakta h... کیااس کے علاوہ کوئی اور جھوٹ بولنے کو تیار نہیں ھوتا Koi farak ni parega
ذریعہ: SAMAATV - 🏆 22. / 51 مزید پڑھ »

چیف سلیکٹر و ہیڈ کوچ مصباح الحق کو ایک اور اہم ذمہ داری مل گئیلاہور (ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ ٹیم کے فیلڈنگ کوچ کے فیصلے کا اختیار بھی ہیڈ کوچ و چیف سلیکٹر مصباح الحق کے سپردکردیا گیا۔ نیوزی لینڈ سے تعلق رکھنے والے گرانٹ
ذریعہ: DailyPakistan - 🏆 3. / 63 مزید پڑھ »

لوگوں کو گھروں سے باہر نکلتے ہوئے منہ اور ناک کو ڈھانپنا ہوگا،وزیراعلیٰ پنجابلاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہاہے کہ کورونا سے بچنا ہے تو طرز زندگی کو بدلناہوگا،لوگوں کو گھروں سے باہر نکلتے ہوئے منہ اور ناک اوہ تیری خیر اچھا جنت اسی لیے بےحد خوبصورت ہے کیونکہ وہاں خاتم النبیین حضرت محمد مصطفٰیﷺ ہوں گے صل اللہ علیہ والہ وسلم پروانے_شمع_رسالت ﷺ نمود_عشق
ذریعہ: DailyPakistan - 🏆 3. / 63 مزید پڑھ »

حکومت آٹا، چینی معاملے کا ملبہ اپوزیشن پر ڈالنا چاہتی ہے: نفیسہ شاہپاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما ڈاکٹر نفیسہ شاہ کا کہنا ہے کہ حکومت اپنے لوگوں کو چھوڑ کر آٹا، چینی معاملے کا ملبہ اپوزیشن پر ڈالناچاہتی ہے۔ حکومت ی اپوزیشن دو ھی دوشمن ء اناج ھیں
ذریعہ: jang_akhbar - 🏆 7. / 63 مزید پڑھ »

حکومتی ناسمجھی اورعاقبت نااندیشی سے کورونا وبا تیزی سے پھیل رہی ہے، شہبازشریف - ایکسپریس اردومشترکہ مفادات کونسل کا فوری اجلاس بلایا جائے جس میں وفاق اور صوبے حالات کا ازسرنو جائزہ لے کر اقدامات کریں، شہبازشریف baba ji ab sciencedaan bn gaye hein congrates
ذریعہ: ExpressNewsPK - 🏆 13. / 53 مزید پڑھ »