دورہ پاکستان کے لئے سری لنکا کے ون ڈے اور ٹی 20 اسکواڈز کا اعلان - ایکسپریس اردو

مزید پڑھئے؛

11.9.2019

مزید پڑھئے؛

سری لنکن ون ڈے ٹیم کی قیادت لاہیرو تھریمانے جب کہ ٹی 20 اسکواڈ کی قیادت ڈاسن شناکا کریں گے

سری لنکا نے رواں ماہ کے آخری ہفتے شروع ہونے والے دورہ پاکستان کے لیے اپنے اسکواڈ کا اعلان کردیا ہے۔

آئی لینڈرز کے ٹی ٹوئنٹی اسکواڈ کے کپتان ڈاسن شناکا ہوں گے، دیگر کھلاڑیوں میں سدیرا سمارا وکرما،اویشکا فرنینڈو، شہیان جے سوریا، اوشنڈا فرنینڈو،اینجیلو پریرا، منود بھانوکا، وانندو ہسورنگا،لکشمن سندیکان،نووان پرادیپ،کاسن راجیتھا ،لاہیرو کمارا،اسورو اڈانا،بھانوکا راجا پکسا شامل ہیں۔

مزید پڑھ: Express News

پاکستان کیخلاف ون ڈے اور ٹی ٹوینٹی سیریز کیلئے سری لنکن ٹیم کا اعلانپاکستان کیخلاف ون ڈے اور ٹی ٹوینٹی سیریز کیلئے سری لنکن ٹیم کا اعلان کردیا گیا، ون ڈے کیلئے 15 اور ٹی ٹوئنٹی کیلئے سولہ رکنی اسکواڈ کا اعلان کیا گیا ہے۔ ریگولر کپتانوں کی ڈیموتھ کرونارتنے اور لاستھ مالنگا کی غیر موجودگی میں ون ڈے کی قیادت لاہیرو تھری مانے جبکہ ٹی ٹؤئنٹی کی ڈاسن […]

جسٹس قاضی فائزاورجسٹس کے کے آغا کے ریفرنسزپرکارروائی روک دی گئی،چیف جسٹس پاکستاناسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ جوڈیشل کونسل نے جسٹس قاضی فائزاورجسٹس کے کے

مودی کے رکنِ اسمبلی کے خلاف طالبہ کے ساتھ جنسی زیادتی کا مقدمہ درج - ایکسپریس اردورکن اسمبلی اپنے آشرم میں مسلسل ایک سال تک جسمانی تشدد اور جنسی زیادتی کرتا رہا، متاثرہ لڑکی

سری لنکا کے سینئر کھلاڑیوں کی ہٹ دھرمی، پاکستان کا دورہ کرنے سے انکارکولمبو: (دنیا نیوز) سری لنکن کھلاڑیوں کی ہٹ دھرمی نے اپنے ہی بورڈ کی ماننے سے انکار کردیا۔ سینئر سری لنکن کرکٹرز نے پاکستان کا دورہ کرنے سے انکار کر دیا۔

سری لنکا سینئرز کو دورہ پاکستان کے لیے قائل نہ کرسکاکرکٹ سری لنکا اپنے سینئر کھلاڑیوں کو پاکستان آنے کے لئے قائل نہ کرسکا۔ دس صف اول کے

سری لنکن بورڈ کا دورۂ پاکستان سے انکار پر کھلاڑیوں کے خلاف ایکشنسری لنکن بورڈ کا دورۂ پاکستان سے انکار پر کھلاڑیوں کے خلاف ایکشن تفصيلات جانئے: DailyJang

تبصرہ لکھیں

Thank you for your comment.
Please try again later.

تازہ ترین خبریں

خبریں

11 ستمبر 2019, بدھ خبریں

پچھلا خبر

نواز شریف کوپلی بارگین نیب سے ہی کرنا ہوگی ، وزیر داخلہ

اگلا خبر

برقعے کے دفاع میں بولنے والا برطانوی ایم پی کون ہے؟
پچھلا خبر اگلا خبر