جاپانی نوجوان شادی سے کیوں انکار کرنے لگے؟

28/06/2022 9:01:00 PM

مزید پڑھیں

جاپانی نوجوان شادی سے کیوں انکار کرنے لگے؟ arynewsurdu

مزید پڑھیں

28 جون 2022جاپان جہاں حکومت کو پہلے ہی تیزی سے کم ہوتی آبادی کے باعث افرادی قوت کی کمی کا سامنا ہے وہاں نوجوان بھی اب شادی سے گریز کرتے نظر آتے ہیں۔شادی کرنا ہر نوجوان کی خواہش ہوتی ہے، کچھ نوجوان تو کم عمری سے ہی اپنے سر پر سہرے سجنے کے خواب دیکھنے لگتے ہیں لیکن ہر نوجوان ایسا نہیں کم از کم جاپان میں تو ایسے نوجوان بڑی تعداد میں ملیں گے جو شادی کے نام سے ہی دو بھاگتے ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق جاپان میں 25 فیصد نوجوان شادی نہیں کرنا چاہتے اور 30 سے 40 برس کی عمر کا ہر چوتھا جاپانی شخص شادی کے نام سے دور بھاگتا ہے جس سے پہلے سے ہی آبادی کی کمی سے دوچار ملک کی حکومت کی پریشانی میں مزید اضافہ ہورہا ہے۔اس حوالے سے تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ نوجوانوں کی بڑی تعداد کا شادی سے انکار بڑھتا ہوا معاشی دباؤ کے ساتھ معاشرتی ذمے داریوں سے آزاد زندگی گزارنے کی خواہش کا عکاس ہے کیونکہ نوجوانوں کا ماننا ہے کہ وہ تنہا زیادہ پرسکون زندگی گزار سکتے ہیں۔

مزید پڑھ:
ARY News Urdu »

Game Set Match with sawera pasha and Adeel azhar - Exclusive Talk with Asif Iqbal - SAMAATV

#gamesetmatch #AsifIqbal #fifaworldcup2022 #samaatv ➽ Subscribe to Samaa News ➽ https://bit.ly/2Wh8Sp8➽ Watch Samaa News Live ➽ https://bit.ly/3oUSwAPStay u... مزید پڑھ >>

Shno bola lo ahce kara gye They have been neutralized. مہنگائی ہے۔۔۔۔ٹینشن ہے

بھارتی خاتون ٹیچر کو پاکستانی نوجوان سے دوستی مہنگی پڑ گئی، واہگہ بارڈر پر دھر لیاگیابھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے ضلع ریوا سے تعلق رکھنے والی 24 سالہ اسکول ٹیچر نے سوشل میڈیا ویب سائٹ پر لاہور کے ایک نوجوان سے دوستی کر لی۔ عشق نہیں آساں مصیبتوں کے سمندر سے گزرنا پڑتا ہے۔

بھارتی 24 سالہ خاتون ٹیچر کو پاکستانی نوجوان سے محبت مہنگی پڑ گئینئی دہلی (ویب ڈیسک)پاکستانی نوجوان لڑکے کی محبت میں گرفتار ہونے والی بھارتی لڑکی کو پاکستان آنے کی کوششوں کے دوران واہگہ بارڈر پر گرفتار کر لیا گیا ۔ نجی

نوجوان نسل میں زبانوں کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہوگا مریم اورنگزیبنوجوان نسل میں زبانوں کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہوگا، مریم اورنگزیب MarriyumAurangzeb PMLN MoIB_Official GovtofPakistan pmln_org Marriyum_A 👇DetailNews MoIB_Official GovtofPakistan pmln_org Marriyum_A ڈڈو کی زبان کیسی ہے ؟ MoIB_Official GovtofPakistan pmln_org Marriyum_A اب ہم کھا رہے ہیں نا نوچ کھسوٹ کے ۔ تو اب چین آیا ۔

جنوبی افریقہ : نائٹ کلب میں 20 نوجوان مردہ پائے گئے

طالبہ کو یونیورسٹی میں قتل کرنے والے نوجوان نے خودکشی کر لیطالبہ کو یونیورسٹی میں قتل کرنے والے نوجوان نے خودکشی کر لی arynewsurdu

پاکستانی نوجوان کی محبت میں گرفتار بھارتی لڑکی واہگہ بارڈر پر گرفتارپاکستانی نوجوان کی محبت میں گرفتار بھارتی لڑکی واہگہ بارڈر پر گرفتار arynewsurdu Tussi mohobtan krlo phle

ویب ڈیسک 28 جون 2022 جاپان جہاں حکومت کو پہلے ہی تیزی سے کم ہوتی آبادی کے باعث افرادی قوت کی کمی کا سامنا ہے وہاں نوجوان بھی اب شادی سے گریز کرتے نظر آتے ہیں۔ شادی کرنا ہر نوجوان کی خواہش ہوتی ہے، کچھ نوجوان تو کم عمری سے ہی اپنے سر پر سہرے سجنے کے خواب دیکھنے لگتے ہیں لیکن ہر نوجوان ایسا نہیں کم از کم جاپان میں تو ایسے نوجوان بڑی تعداد میں ملیں گے جو شادی کے نام سے ہی دو بھاگتے ہیں۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق جاپان میں 25 فیصد نوجوان شادی نہیں کرنا چاہتے اور 30 سے 40 برس کی عمر کا ہر چوتھا جاپانی شخص شادی کے نام سے دور بھاگتا ہے جس سے پہلے سے ہی آبادی کی کمی سے دوچار ملک کی حکومت کی پریشانی میں مزید اضافہ ہورہا ہے۔ اس حوالے سے تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ نوجوانوں کی بڑی تعداد کا شادی سے انکار بڑھتا ہوا معاشی دباؤ کے ساتھ معاشرتی ذمے داریوں سے آزاد زندگی گزارنے کی خواہش کا عکاس ہے کیونکہ نوجوانوں کا ماننا ہے کہ وہ تنہا زیادہ پرسکون زندگی گزار سکتے ہیں۔ جاپانی حکومت کی جانب سے رواں ماہ جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملک میں 30 سے 40 برس کی درمیانی عمر کے لوگوں کی تعداد بڑھتی جارہی ہے جو شادی نہیں کرنا چاہتے جس کی وجہ سے حکومت کی تشویش میں بھی اضافہ ہورہا ہے کیونکہ ان کی آبادی پہلے ہی کم ہورہی ہے اور نوجوانوں کا یہ اقدام مستقبل قریب میں ملک میں افرادی قوت میں کمی کا مسئلہ مزید بڑھا سکتا ہے۔ ایسا ہی جاپانی شہری "شو” بھی ہے، 37 سالہ شو کے مطابق وہ شادی کے بغیر مطمئن زندگی گزار رہا ہے۔ اس کے پاس روزگار ہے، جس سے اس کی آرام دہ زندگی کے اخراجات پورے ہورہے ہیں وہ اپنے دوستوں سے باقاعدگی سے ملاقات کرتا رہتا ہے اس کے کئی دیگر اور بھی مشاغل ہے، شو کے مطابق اس کے پاس صرف ایک بیوی نہیں ہے لیکن وہ اس کے بغیر بھی بہت خوش ہے۔ .بعد میں یہ دوستی شادی کے عہد وپیماں میں بدل گئی، خاتون نے نئی دہلی میں پاکستانی ہائی کمیشن سے رابطہ کیا اور تمام دستاویزات پوری کرنے کے بعد پاکستان کا ویزا حاصل کر لیا۔ فوٹو جنگ نیوز 14 جون کو مذکورہ خاتون گھر والوں کو بتائے بغیر گھر سے نکل پڑی، گھر والوں نے اس کی گمشدگی کی رپورٹ پولیس میں درج کروادی جس نے تمام ہوائی اڈوں، ریلوے بکنگ سینٹرز اور بارڈر حکام کو الرٹ کردیا۔ یہ بھی پڑھیں ویڈیو: ارطغرل غازی کی 'اصلحان خاتون' واہگہ بارڈر کی تقریب دیکھ کر حیران جمعرات کے روز جب خاتون واہگہ بارڈر پر پاکستان جانے کے لیے امیگریشن کاؤنٹر پر پہنچی توحکام نے اس بارے میں فوری طور پر مدھیہ پردیش پولیس کو آگاہ کردیا جس نے اسے حراست میں لینے کا کہا۔ امیگریشن حکام نے خاتون کو مقامی دارالامان پہنچا دیا جہاں سے اسے گزشتہ روز مدھیہ پردیش پولیس کے حوالے کردیا گیا۔ دریں اثنا مدھیہ پردیش پولیس واقعہ کو دوسرا رنگ دینے کی کوشش کررہی ہے۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ نوین بھسین کا کہنا ہے کہ خاتون کو پاکستان سے نامعلوم نمبروں سے فون کالز مل رہی تھیں جس کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ نوٹ: یہ خبر.Jun 27, 2022 | 14:00:PM نئی دہلی (ویب ڈیسک)پاکستانی نوجوان لڑکے کی محبت میں گرفتار ہونے والی بھارتی لڑکی کو پاکستان آنے کی کوششوں کے دوران واہگہ بارڈر پر گرفتار کر لیا گیا ۔ نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے ضلع ریوا سے تعلق رکھنے والی 24 سالہ سکول ٹیچر نے سوشل میڈیا ویب سائٹ پر لاہور کے ایک نوجوان سے دوستی کر لی۔بعد میں یہ دوستی شادی کے عہد وپیماں میں بدل گئی، خاتون نے نئی دہلی میں پاکستانی ہائی کمیشن سے رابطہ کیا اور تمام دستاویزات پوری کرنے کے بعد پاکستان کا ویزا حاصل کر لیا۔14 جون کو مذکورہ خاتون گھر والوں کو بتائے بغیر گھر سے نکل پڑی، گھر والوں نے اس کی گمشدگی کی رپورٹ پولیس میں درج کروادی جس نے تمام ہوائی اڈوں، ریلوے بکنگ سینٹرز اور بارڈر حکام کو الرٹ کردیا۔ جمشید دستی کا خشک روٹیاں گلے میں لٹکا کر مہنگائی کے خلاف احتجاج جمعرات کے روز جب خاتون واہگہ بارڈر پر پاکستان جانے کے لیے امیگریشن کاؤنٹر پر پہنچی توحکام نے اس بارے میں فوری طور پر مدھیہ پردیش پولیس کو آگاہ کردیا جس نے اسے حراست میں لینے کا کہا۔امیگریشن حکام نے خاتون کو مقامی دارالامان پہنچا دیا جہاں سے اسے گزشتہ روز مدھیہ پردیش پولیس کے حوالے کردیا گیا۔ دریں اثنا مدھیہ پردیش پولیس واقعہ کو دوسرا رنگ دینے کی کوشش کررہی ہے۔پولیس سپرنٹنڈنٹ نوین بھسین کا کہنا ہے کہ خاتون کو پاکستان سے نامعلوم نمبروں سے فون کالز مل رہی تھیں جس کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔.شہباز شریف چھ عالمی زبانیں بولتے ہیں، انہیں زبان کی اہمیت کا پتا ہے حکومت ملک میں بولی جانے والی زبانوں کے تنوع کے لئے کوشاں ہے پاکستان میں 80زبانیں بولی جاتی ہیں جن میں سے 26زبانیں گمنام ہو رہی ہیں جدید دنیا میں کئی زبانیں تیزی سے معدومیت کی جانب بڑھ رہی ہیں، زبانوں کے تحفظ کیلئے ڈاکومنٹیشن کی ضرورت ہے عمران خان کا دورہ لاہور:ضمنی انتخابات کی مہم سنبھال لی زبان کی اہمیت کو پی ٹی وی کی سکرین اور ریڈیو کی آواز میں شامل کریں گے وفاقی وزیر اطلاعات کا علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی میں لینگویج ڈاکومنٹیشن کے موضوع پر انٹرنیشنل ٹریننگ ورکشاپ کے افتتاحی سیشن سے خطاب وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ نوجوان نسل میں زبانوں کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہوگا،پاکستان میں 80زبانیں بولی جاتی ہیں جن میں سے 26زبانیں گمنام ہو رہی ہیں، زبانوں کی ڈاکومنٹیشن وقت کی اہم ضرورت ہے،شہباز شریف چھ عالمی زبانیں بولتے ہیں، انہیں زبان کی اہمیت کا پتا ہے،۔مریم اورنگزیب نے علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی میں لینگویج ڈاکومنٹیشن کے موضوع پر انٹرنیشنل ٹریننگ ورکشاپ کے افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ آپ کی زبان ہی آپ کی شناخت ہے۔انہوں نے کہا کہ زبانوں کے تحفظ کے لئے عالمی سطح پر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے، حکومت ملک میں بولی جانے والی زبانوں کے تنوع کے لئے کوشاں ہے۔وفاقی وزیر کا کہنا ہے کہ جدید دنیا میں کئی زبانیں تیزی سے معدومیت کی جانب بڑھ رہی ہیں، زبانوں کے تحفظ کیلئے ڈاکومنٹیشن کی ضرورت ہے۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ نوجوان نسل کو اپنے ثقافتی ورثے سے آشنا کرنے کی ضرورت ہے، ترقی کے لئے کثیر السانی کلچر ضروری ہے۔انکا کہنا ہے کہ زبان مختلف کلچرز کو اکٹھا کرتی ہے، زبانوں کی ڈاکومنٹیشن کے حوالے سے ایونٹ کے انعقاد پر علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کو خراج تحسین پیش کرتی ہوں۔وفاقی وزیر نے کہا کہ ہماری تاریخ زبان کی اہمیت کو بیان کرتی ہے، موجودہ دور میں نوجوان نسل اپنے کلچر اور تاریخ سے دور ہے، نوجوان نسل میں زبانوں کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہوگا۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ پاکستان میں تقریبا 80زبانیں بولی جاتی ہیں جن میں سے 26زبانیں گمنام ہو رہی ہیں، ملک کے باہر اپنی زبان کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا، اپنی زبان سے ہی اپنی شناخت ہوتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ چار روزہ ورکشاپ ایک ایسے باب کا آغاز ہے جہاں زبان کی اہمیت کو سمجھنے میں مدد ملے گی، حکومت علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کو لنگوئسٹک مینجمنٹ سسٹم کے لئے ہر ممکن تعاون فراہم کرے گی۔ا نہوں نے بتایا کہ وزیراعظم شہباز شریف خود بھی چھ عالمی زبانیں بولتے ہیں، انہیں زبان کی اہمیت کا بخوبی اندازہ ہے، زبان سماجی تعلق کو پروان چڑھاتی ہے، زبان ایک ایسی طاقت ہے جو ثقافتوں کو تقویت دیتی ہے، زبان کو محفوظ کرنے میں ہی قوموں کی بقا ہے، اس سے ہماری قومی شناخت کو تقویت ملے گی، بدقسمتی سے ہمارے نصاب میں ان چیزوں کا فقدان ہے، نوجوان نسل کا اپنی زبانوں سے تعلق پیدا کرنا ہوگا، حکومت ایک نصاب پر عمل پیرا ہے، زبانوں کی ڈاکومنٹیشن وقت کی اہم ضرورت ہے۔پی ٹی وی اور ریڈیو پاکستان کے پلیٹ فارمز کو اس اقدام کے فروغ کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے، زبان کی اہمیت کو پی ٹی وی کی سکرین اور ریڈیو کی آواز میں شامل کریں گے، یہ تسلسل پر مبنی پروگرام ہوگا جو پاکستان کے عوام تک پہنچایا جا سکتا ہے۔.