بہتری کی’یقین دہانی‘کے باوجود تاجر بےیقینی کا شکار کیوں؟

کاروباری طبقے کے مسائل: فوج اور حکومت کی ’یقین دہانیوں‘ کے باوجود پاکستانی تاجر بے یقینی کا شکار کیوں؟

9.10.2019

کاروباری طبقے کے مسائل: فوج اور حکومت کی ’یقین دہانیوں‘ کے باوجود پاکستانی تاجر بے یقینی کا شکار کیوں؟

وزیراعظم عمران خان اور جنرل قمر جاوید باجوہ کی تاجروں اور کاروباری شخصیات سے ملاقات میں یقین دہانیوں کے باوجود پاکستانی کارخانہ دار اور تاجر بےیقینی کا شکار ہے اور احتجاج کا سلسلہ تھمتا دکھائی نہیں دیتا۔

آرمی چیف سے ملاقات میں وفاقی وزیر برائے معاشی امور حماد اظہر اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے چیئرمین شبر زیدی، اور مشیر خزانہ حفیظ شیخ بھی موجود تھے۔ اس ملاقات میں موجود چند کاروباری شخصیات نے بی بی سی کو بتایا کہ ’انھیں حکومتی عہدیداروں کو اپنے مسائل بتانے کا موقع ملا اور حکومتی اقدامات کے حوالے سے معلومات ملیں۔‘

Drama bazi krta han tajir

اس صورتحال کے حوالے سے بی بی سی نے تاجران کی نمائندہ تنظیموں کے عہدیداران کے علاوہ ان کاروباری شخصیات سے بات کی جو آرمی چیف سے ملاقات میں بھی موجود تھے۔

وہ آرمی چیف سے ملاقات کرنے والے وفد کا بھی حصہ تھے۔ انھوں نے بتایا کہ ’کارخانہ داروں کا مسئلہ اس وقت یہ ہے کہ ملکی معیشت کا پہیہ سست روی کا شکار ہو گیا ہے۔‘

’اب تقریباً دو ماہ سے ایسا ہو گیا ہے کہ گاڑیوں کی پیداوار پچاس فیصد کم ہو گئی ہے۔ کچھ لوگوں کے پاس پیسہ نہیں ہے اور کچھ ٹیکس کے قوانین سخت ہو گئے ہیں۔ اس طرح کاروں کی مانگ میں کمی ہوئی ہے۔‘

زبیر طفیل کے مطابق اس شرط سے تاجر کے ساتھ ساتھ کارخانہ دار کو بھی مسئلہ ہو رہا ہے۔

وہ بھی زبیر طفیل سے اتفاق کرتے ہیں۔ بی بی سی سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ’کارخانہ دار کو کوئی مسئلہ تو ہو گا جس کی وجہ سے وہ شور کر رہا ہے۔ ہر خریدار کارڈ دکھانا نہیں چاہتا اور ہو سکتا ہے کارخانہ دار بھی اتنی پیداوار دکھانا نہیں چاہتا جتنی وہ کر رہا ہے۔‘

’اب طے یہ پایا ہے کہ نیب سرمایہ کاروں کو اب ٹیکس کے کسی بھی قسم کے معملات پر تنگ نہیں کرے گا۔ یہ کام ایف بی آر کرے گا اور یہ ہے بھی اسی کا کام۔‘

یاد رہے کہ پاکستان میں احتساب کے قومی ادارے نیب کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال نے اس ملاقات کے بعد چھ اکتوبر کو اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ ان کا محکمہ ٹیکس سے متعلق تمام مقدمات کو واپس لے رہا ہے اور آئندہ ٹیکس سے متعلق کسی مقدمے کی تحقیق نہیں کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کو قرضوں کی ادائیگی کرنا تھی اور اسے آمدن میں خسارے کا بھی سامنا تھا۔ اس کے لیے اسے شرح سود بھی بڑھانا پڑی اور ڈالر بھی مہنگا ہوا۔ اسی طرح بجلی بھی مہنگی ہوئی کیونکہ اس پر دی جانی والی چھوٹ حکومت نہیں اٹھا سکتی تھی۔

عقیل کریم ڈھیڈی کا کہنا تھا کہ انھیں امید ہے کہ رواں ماہ میں حکومت اور تاجروں کے درمیان شناختی کارڈ کی شرط پر بھی معاملات طے پا جائیں گے۔

ان کے خیال میں کسی بھی کاروباری شخص کے لیے سب سے بڑا مسئلہ غیر یقینی کی صورتحال ہوتی ہے۔ ’جب ہم بجٹ بنا رہے ہوتے تھی تو ہمیں یہ نہیں یقین ہوتا تھا کہ کیا شرح سود یہی رہے گی یا نہیں، کیا مہنگائی بڑھے گی یا نہیں وغیرہ۔‘

تاہم ان کا کہنا تھا کہ ’یہ وہ تبدیلی کا عمل ہے جس میں سے ہر ایک کو گزرنا پڑتا ہے۔‘

پرچون اور تھوک کا کام کرنے والے تاجروں کے بارے میں ایک خیال یہ بھی ہے کہ پچاس ہزار روپے سے زائد کی خریداری پر قومی شناختی کارڈ کی شرط ان کے حکومت سے تنازع کی بنیادی وجہ نظر آتی ہے۔

انجمن تاجران لاہور رجسٹرڈ کے نائب صدر راجہ امجد حسین بھی اس سے اتفاق کرتے ہیں۔ ان کی مطابق پاکستان میں زیادہ تر کاروباری افراد تعلیم یافتہ نہیں ہیں اور ان کے لیے یہ آسان کام نہیں۔

’ان کا مطالبہ یہ ہے کہ انھیں ایک فِکسڈ ٹیکس دیا جائے یعنی چند ہزار روپے جو کہ حکومت کے لیے قابلِ قبول نہیں ہے۔‘

اجمل بلوچ کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ یہ سمجھتے ہیں کہ 'حکومت اس قسم کے ضابطے آئی ایم ایف سے کیے گئے معاہدے کی شرائط کے نتیجے میں لاگو کر رہی ہے۔'

لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر عرفان اقبال شیخ نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ تاجروں کے بنیادی طور پر تین بڑے مسائل ہیں۔

'حکومت نے سب کچھ ایک ہی وقت میں کرنا چاہا جس کی وجہ سے کاروباری حلقوں میں بے چینی پھیلی اور کاروبار متاثر ہوئے۔'

مزید پڑھ: BBC News اردو

کیوں ہیں شکار؟ جلدی بتائیں ناں ورنہ میری جان نکل جائے گی اور ذمہ داری آپ پر ہوگی ہائے اللہ جلدی بتائیں ناں کیونکہ حکومت ٹیکس چوروں ذخیرہ اندوزوں سے ٹیکس وصول کر رہی ہے جبکہ یہ چوروں اور ذخیرہ اندوزوں کو اچھا نہیں لگا کہ وہ ٹیکس کیوں دیں حکومت کو بلیک میل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں my poetry waqat lagta hay mulkon ko badalnay main inqalab kahan aik din main aata hay

They are not used to documentation دنیا کا سب سے گندا کاروباری طبقہ پاکستانی ھے ان کو نہ ملک سے پیار ہے نہ انسانوں سے کوئی ہمدردی بس پیسہ پیسہ پیسہ PashtunEnemyPakMedia PashtunEnemyPakMedia PashtunEnemyPakMedia PashtunEnemyPakMedia GFarooqi ٹیکس چوروں کی وجہ سے ملک ترقی نہیں کرتا چلیں پھر ملتے ہیں لنگر پر۔۔😁😁😁😁

میرے پاکستانیو نہ میں نے کبھی گھر سے کھایا ہے نا میں کبھی آپکو گھر سے کھانے دوں گا 😂😂😂😂😂😂 یہ تاجر آج تک عوام سے سیلز ٹیکس لیتے آئے ہیں جو کہ ان کےاپنے جیبوں میں جاتا تھا اب پہلی بار عوام کا ٹیکس حکومت کے پاس جا رہا تو چیخ رہے ہیں ، یہ مافیاز ہیں جن کا ملک سے کوئی ہمدردی نہیں

چینی وزیراعظم اور عمران خان کا گرمجوشی کا انداز عظیم دوستی کا مظہر ہے: فردوس عاشقVeheeli nakammi Uff..the intolerable,inarticulate &cring-worthy Dr_FirdousPTI

حکومت نے کہا خریدوفروخت میں شناختی کارڈ جمع کرانا لازم، تاجر سراپا احتجاج کیونکہ چوری پھڑی جائے گی پاکستانی تاجر ٹیکس نہیں دیں گے، فضل الرحمن کی احتجاج کے لیے کروڑوں اربوں میں پیسے دنبے کے لیے تیار ہیں پھر احتجاج بھی کرتے ہیں There will be no positive economic results until 2025, it will be the time when all poor die and rich will fly to UK and USA.

Ae bare waday rung baaz ne بے یقینی نہیں ٹیکس چور ذخیرہ اندوزوں کا گروہ ہے یہ تاجر نما لٹیرے Is govt k pas awami flah ka koi program hi ni jis trh berizgari r mehgai hoi is ki phly msal he ni phr govt ka ak he maqsad lgta he hr mkalif ko jail me dalo media ko bnd kro ta k ye kisi ki sun b na sakey بہت سادہ ہے تاجر ٹیکس نہیں دینا چاہتے

دنیا بھر کے صنعتکار ایسے ممالک میں سرمایہ کاری کرنا پسند کرتے ہیں جہاں امن ، سلامتی ، اعلی انسانی اقدار اور صحت مند جمہوریت جیسے بنیادی حالات میسر ہوں۔ اور پاکستان میں ان تمام عوامل کا فقدان ہے۔ پاکستان میں بہترین ماحول صرف ایک صنعت کے لئے ہے ، وہ ہے دہشت گردی۔ Industrialists of the world like to invest there, where basic conditions like peace, security, human values ​​and democracy are available. And Pakistan lacks all these factors. Pakistan has the best environment for only one industry, that is terrorism.

جنھوں نے بدعنوانی نہیں کی انکو ضرور کچھ پالیسیوں سے پریشانی ہے لیکن وہ مستقل مزاجی کے ساتھ کاروبار کر رہے ہیں انھیں یقین ہے کہ جلد ہی حالات سازگار ہونگے, ایک نئی معاشی ٹیم,حکمران نئے تازہ ہوا کا جھونکا اور بد عنوانی کے خلاف ہیں مستحکم,بہتر اور شاندار مستقبل پاکستان کا منتظر ہے.

گورننس کا چیلنج اور عوام کا اضطرابگورننس کا چیلنج اور عوام کا اضطراب بیرونی چیلنجوں میں آج سب سے بڑا چیلنج کشمیر پر بھارت کا پیدا کردہ بحران اور اسی تناظر میں جنونی بھارتی حکمرانوں SaeedAasi India Kashmir Pakistan

اس کی سب بڑی وجہ بیورو کریسی ہے جو پچھلے 40 سال سے کاروبار کے نام پر سابقہ حکمرانوں کے لئے کالا دھن سفید کرتے رہے اور اب ان پر NAB کا شکنجہ محسوس ہو رہا ہے, اگر یہ لوگ پہلے ہی ملک کے وسیع تر مفاد میں غلط طریقوں پر عمل نا کرتے تو ان کو کسی طرح کا ڈر نا ہوتا.1/1 کیونکہ ان کو پاکستان کی تاریخ میں پہلی دفعہ سنجیدگی سے ٹیکس دینے کی عادت ڈالی جارہی ہے۔

سالے تم کو کس نے کھا کون سے تاجر ٹیکس چو ملک ریاض اور میاں منشا سب چور اندر ھو گئے So sad it's all just a real big failure of this gov't specially our bureaucracy is totally failed to deliver in these circumstances there's lot's of loopholes big corruption in almost every single field it's all just shameful& still after one year they're just failed to deliver.

Qk gade aor kuttu wali biryani ka asar abi tuk nahi otra Basically this shows very soon Pakistan will have new PM face ... A new puppet will about to come. Because they are not used to pay taxes they are used to cheating and other corrupt practices and they want the old system where rulers and ruled both cheat

حرام منہ کو لگا ہوا ہے اتنی جلدی صاف نہیں ہوتا سب بکواس ہے کوئی بے یقینی نہیں سب تاجر پیسہ بنا رہے ہیں اور صرف ڈرامے کر رہے ہیں بے یقینی کے اہم سوال ہے ملک غیر یقینی صورتحال ہے

نیب کا شہباز شریف کو ایک اور کیس میں نوٹس جاری کرنے کا فیصلہنیب کا شہباز شریف کو ایک اور کیس میں نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ ShahbazSharif NAB Notification PMLN WestManagmentCompany Corruption Investigation president_pmln pmln_org pid_gov Marriyum_A MoIB_Official Dr_FirdousPTI PTIofficial

ایران کا امریکی پابندیوں سے متاثٖر ہونے کا اعتراف، تیل کی صنعت خسارے کا شکارتہران: ایرانی وزیر تیل بیژن زنگنہ نے امریکی پابندیوں سے متاثر ہونے کا اعتراف کرتے ہوئے عزم کا اظہار کیا کہ ان پابندیوں کے خلاف مزاحمت بھی جاری رکھیں گے۔ If Pakistan wants to come out of economy crisis they should join Turkey Russia and Iran and some other regional countries like China on money unit,, one way of coming out of economic slavery ,

مولانا فضل الرحمان کا حکومت کیخلاف آزادی مارچ اور دھرنا اسلام آبادہائیکورٹ میں چیلنجاسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)مولانا فضل الرحمان کا حکومت کیخلاف آزادی مارچ اور

ایف بی آر نے بلڈرز اور ڈویلپرز کیلئے انکم ٹیکس کا خصوصی مسودہ تیار کر لیا

تبصرہ لکھیں

Thank you for your comment.
Please try again later.

تازہ ترین خبریں

خبریں

09 اکتوبر 2019, بدھ خبریں

پچھلا خبر

اویغوروں سے’بدسلوکی‘: امریکہ کی چینی حکام پر ویزہ پابندیاں

اگلا خبر

پاکستان اور ٹوئٹر انتظامیہ کے مابین معاہدہ،ٹوئٹر پر بھارتی اجارہ داری کا خاتمہ