اس حمام میں سب ننگے سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع یا برباد نہیں ہوگا: شہبازشریف

28/06/2022 4:45:00 PM

اس حمام میں سب ننگے، سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع یا برباد نہیں ہوگا: شہبازشریف

اس حمام میں سب ننگے، سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع یا برباد نہیں ہوگا: شہبازشریف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع یا برباد نہیں ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ 75 سال ہوگئے، بلند و بانگ دعوے

کیے لیکن عمل سے دامن خالی ہے، اس حمام میں ہم سب ننگے ہیں، مجھ سمیت ہم سب کی ذمہ داری ہے، لیکن رونے سے بات نہیں بنے گی، ایسے فیصلے کرنے ہوں گے جنہیں مدتوں تک کوئی بدل نہ سکے۔ ایکسپریس نیوز کے مطابق کنونشن سنٹراسلام آباد میں ٹرن آراوٴنڈ پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ ہماری اصل منزل خود انحصاری ہے، فیصلوں پرمشاورت جمہوری عمل ہے، صاحب ثروت حضرات نے سپر ٹیکس کو صبر شکر سے قبول کیا ہے، سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع نہیں ہوگا اور سرکاری اخراجات پر خرچ نہیں کیا جائے گا، بلکہ یہ 230 ارب روپے ملکی ترقی و خوش حالی کےلیے استعمال ہوں گے، 14 ماہ میں معاشی استحکام لانے کی کوشش کریں گے، معاشی استحکام سیاسی استحکام سے جڑا ہے۔ ڈپٹی کنوینئر ایم کیو ایم کنور نوید جمیل کی طبیعت خراب ،ہسپتال منتقل انہوں نے کہا کہ خود انحصاری ہی قوم کی سیاسی، معاشی آزادی کی ضمانت ہے، بنگلہ دیش میں 6 ارب ڈالر کی لاگت سے بڑا انفرا اسٹرکچر بنایا گیا، پاکستان میں وسائل اور ہنرمند لوگوں کی کمی نہیں، ریکوڈک میں اربوں روپے کا خزانہ دفن ہے، ابھی تک ہم نے ایک دھیلہ نہیں کمایا مگر اربوں روپے ضائع ہو گئے، مقدمات کی مد میں ہم نے اربوں روپے ضائع کیے۔ انہوں نے کہا کہ کوئلہ دنیا بھر میں بہت مہنگا ہوگیا ہے، بجلی پلانٹ چلانے کےلیے کوئلہ درآمد کرنے کا سوچا تو زرمبادلہ کے ذخائر ختم ہونے کا خدشہ تھا، اب جولائی میں افغانستان سے کوئلہ آنا شروع ہوجائے گا، پاکستانی روپے میں یہ کوئلہ خریدا جائے گا، ایک سال میں 2 ارب ڈالر کی بچت ہوگی، اس کوئلے سے بجلی کے پلانٹس چلائے جائیں گے۔ کورونا سے ہلاکتوں کا سلسلہ ایک بار پھر شروع، مسلسل دوسرے روز 2افراد جاں بحق شہباز شریف نے مزید کہا کہ پوری دنیا اس وقت معاشی بحران کا شکار ہے، گزشتہ حکومت نے گیس کے سستے اور لانگ ٹرم معاہدے نہیں کیے، گزشتہ حکومت نے ترقیاتی منصوبوں کو التوا کا شکار رکھا، بہت بڑے چیلنجز کا سامنا ہے ،کیاکیابتاؤں مگر حل کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ اگر کام کرنے کی نیت ہو تو راستے خود بن جاتے ہیں، اتحادی حکومت پاکستان کے چاروں صوبوں پر محیط ہے، ہمیں اپنی ذاتی پسند ونا پسند سے بالاتر ہو کر ملک کی ترقی کیلئے کام کرنا ہوگا، ریڈ ٹیپ ازم، پرمٹ راج اور این او سی کے چکروں کو ختم کرنا چاہتا ہوں۔.اسلام آباد: وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع یا برباد نہیں ہوگا۔ کنونشن سنٹراسلام آباد میں ٹرن آراوٴنڈ پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ ہماری اصل منزل خود انحصاری ہے، فیصلوں پرمشاورت جمہوری عمل ہے، صاحب ثروت حضرات نے سپر ٹیکس کو صبر شکر سے قبول کیا ہے، سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع نہیں ہوگا اور سرکاری اخراجات پر خرچ نہیں کیا جائے گا، بلکہ یہ 230 ارب روپے ملکی ترقی و خوش حالی کےلیے استعمال ہوں گے، 14 ماہ میں معاشی استحکام لانے کی کوشش کریں گے، معاشی استحکام سیاسی استحکام سے جڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خود انحصاری ہی قوم کی سیاسی، معاشی آزادی کی ضمانت ہے، بنگلہ دیش میں 6 ارب ڈالر کی لاگت سے بڑا انفرا اسٹرکچر بنایا گیا، پاکستان میں وسائل اور ہنرمند لوگوں کی کمی نہیں، ریکوڈک میں اربوں روپے کا خزانہ دفن ہے، ابھی تک ہم نے ایک دھیلہ نہیں کمایا مگر اربوں روپے ضائع ہو گئے، مقدمات کی مد میں ہم نے اربوں روپے ضائع کیے۔ یہ بھی پڑھیں: افغانستان سے کوئلہ ڈالرز کے بجائے روپوں میں درآمد کرنے کی منظوری ان کا کہنا تھا کہ 75 سال ہوگئے، بلند و بانگ دعوے کیے لیکن عمل سے دامن خالی ہے، اس حمام میں ہم سب ننگے ہیں، مجھ سمیت ہم سب کی ذمہ داری ہے، لیکن رونے سے بات نہیں بنے گی، ایسے فیصلے کرنے ہوں گے جنہیں مدتوں تک کوئی بدل نہ سکے۔ انہوں نے کہا کہ کوئلہ دنیا بھر میں بہت مہنگا ہوگیا ہے، بجلی پلانٹ چلانے کےلیے کوئلہ درآمد کرنے کا سوچا تو زرمبادلہ کے ذخائر ختم ہونے کا خدشہ تھا، اب جولائی میں افغانستان سے کوئلہ آنا شروع ہوجائے گا، پاکستانی روپے میں یہ کوئلہ خریدا جائے گا، ایک سال میں 2 ارب ڈالر کی بچت ہوگی، اس کوئلے سے بجلی کے پلانٹس چلائے جائیں گے۔ شہباز شریف نے مزید کہا کہ پوری دنیا اس وقت معاشی بحران کا شکار ہے، گزشتہ حکومت نے گیس کے سستے اور لانگ ٹرم معاہدے نہیں کیے، گزشتہ حکومت نے ترقیاتی منصوبوں کو التوا کا شکار رکھا، بہت بڑے چیلنجز کا سامنا ہے ،کیاکیابتاؤں مگر حل کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ اگر کام کرنے کی نیت ہو تو راستے خود بن جاتے ہیں، اتحادی حکومت پاکستان کے چاروں صوبوں پر محیط ہے، ہمیں اپنی ذاتی پسند ونا پسند سے بالاتر ہو کر ملک کی ترقی کیلئے کام کرنا ہوگا، ریڈ ٹیپ ازم، پرمٹ راج اور این او سی کے چکروں کو ختم کرنا چاہتا ہوں۔.نے سب سے منافع بخش دھندوں کے اجارہ داروں پر محض ایک سال کے لئے عائد کیا ہے۔اندھی نفرت وعقیدت میں تقسیم ہوئے معاشرے میں روایتی اور سوشل میڈیا پر چھائے عمران خان صاحب کے متوالوں نے مذکورہ ٹیکس کو ’’آخری کیل‘‘ ٹھہرانا شروع کردیا جو وطن عزیز میں سرمایہ کاری کی حوصلہ شکنی کرے گا۔کساد بازاری کو گھمبیر تر بناتے ہوئے مہنگائی کے جان لیوا موسم میں لاکھوں افراد کو بے روزگار بنادے گا۔ ’’سپرٹیکس‘‘ کے خلاف اجارہ داروں نے مفتاح اسماعیل کی تقریر کے دوران ہی کراچی سٹاک ایکس چینج میں ’’یک دم‘‘ جی گھبرادینے والی ’’مندی‘‘ کا ماحول بھی بنادیا۔ثابت کردیا کہ اپنے بھاری بھر کم منافعوں سے وہ مزید ایک دھیلہ بھی ریاست کو خلق خدا کی مشکلات حل کرنے کے لئے فراہم کرنے کو تیار نہیں ہیں۔حکومت اس جانب قدم بڑھائے تو ’’مافیا‘‘ کی صورت یکجا ہوکر ’’لٹ گئے‘‘ کا واویلا مچانا شروع ہوجاتے ہیں۔ عمران خان کا دورہ لاہور:ضمنی انتخابات کی مہم سنبھال لی ان کی حمایت کو حکومت کے سیاسی مخالفین ہی سینہ تان کر کھڑے نہیں ہوجاتے۔میڈیا کا وافر حصہ بھی ان سے ’’ہمدردی‘‘ دکھانے کو مجبورہوجاتا ہے۔یہ ہمدردی نظر نہ آئے تو اخباروں اور ٹیلی وژن چینلوں سے سیٹھوں کے دئیے اشتہار غائب ہونا شروع ہوجاتے ہیں۔’’سپر ٹیکس‘‘ جیسی پیش قدمی کے بے لاگ تجزیہ کی گنجائش لہٰذا مفقود ہوجاتی ہے۔ مفتاح اسماعیل کی تقریر سے قبل شکر گڑھ سے براہ راست منتخب ہوئی مہناز اکبر دانیال نے بھی اپنے جذبات پر قابل ستائش کنٹرول دکھاتے ہوئے جن خیالات کا اظہار کیا وہ صحت عامہ کے اہم ترین مسئلہ کی بابت اجارہ اداروں کی سفاک پھرتیاں بے نقاب کرنے کے حوالے سے چشم کشا تھے۔چند ہی روز قبل اس کے شوہر دانیال عزیز چودھری ایک خوفناک حادثے سے دو چار ہوئے تھے ۔اس موضوع پر آگے بڑھنے سے قبل مجھے اعتراف کرنا ہے کہ مہناز اور دانیال کئی حوالوں سے میرے لئے خاندان کے قریب ترین رکن ہیں۔کئی نسلوں اور دہائیوں سے ہمارے سکھ اور دُکھ سانجھے ہیں۔دانیال کے حادثے کی وجہ سے مہناز جس پریشانی سے گزری ہیں اس کے ایک ایک لمحے سے بخوبی آگاہ ہوں۔ کیا پاکستان سعودی عرب سے ادھار تیل کا دورانیہ بڑھا پائے گا؟ دانیال نارووال سے اپنے آبائی شکرگڑھ سے چند ہی کلومیٹر دور تھا تو ایک دیوہیکل ٹرک کا ٹائر پھٹ گیا۔ بے قابو ہوئے ٹرک نے دانیال عزیز کی گاڑی سے ٹکراکر اسے پاش پاش کردیا۔زخمی دانیال کی اس حادثے کے فوری بعد جو ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی اس نے میری بیوی اور بچیوں کو بوکھلادیا۔میں حوصلہ دینے کے لئے کچھ کہتا تو امید سے محروم ہوئی چیخنا شروع ہوجاتیں۔ خود کو پُرامید رکھتے ہوئے اگرچہ میں خود بھی دل میں بہت گھبرایا ہوا تھا۔ربّ کریم کا لکھ بارشکر ۔اس نے میری امید کا بھرم رکھ لیا۔ ایک ہولناک تجربے کی وجہ سے مہناز اکبر دانیال نے مگر 1122اور ڈسٹرکٹ ہسپتالوں کی اہمیت کو بخوبی جان لیا ہے۔ جمعہ کے روز قومی اسمبلی میں اس کی تقریر ذاتی نوحہ گیری نہیں تھی۔ اصرار بلکہ اس کا یہ رہا کہ اگر 1122کی ایمبولینس بروقت جائے حادثہ پہنچ کر دانیال کو نارووال کے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال نہ لے جاتی ۔وہاں متعین عملہ اگرچوکس ،فرض شناس اور اعلیٰ تربیت یافتہ نہ ہوتا تو دانیال کے بچ جانے والا معجزہ رونما نہ ہوپاتا۔ وزیراعظم نے یوٹیلیٹی سٹورز پر خریداری کیلئے استعمال ہونے والا ون ٹائم پاس ورڈ سسٹم ختم کر دیا دانیال کے خوفناک حادثے نے مہناز کوسبق سکھایا ہے کہ صحت عامہ کے لئے مختص ہوئے فنڈ محض 1122اور ڈسٹرکٹ ہسپتالوں کے نیٹ ورک کو مزید توانا اور مربوط بنانے پر ہی صرف کئے جائیں۔ہمیں ’’صحت کارڈ‘‘ جیسے چونچلوں کی ہرگز ضرورت نہیں ہے جو بیمار ہوئے کسی فرد کو سرکاری ہسپتالوں کے بجائے فقط منافع کے حصول کے لئے بنائے ’’نجی ہسپتالوں‘‘سے رجوع کو مجبور کرتے ہیں۔ ’’صحت کارڈ‘‘ بالآخر خلق خدا کی اکثریت کے بجائے منافع خوروں کو مزید منافع سرکاری خزانے کے ذریعے فراہم کرنے کا ذریعہ ہی ثابت ہوتا ہے۔ منکی پاکس سے صحت کی ہنگامی صورتحال کا خطرہ نہیں.آئندہ ہفتے پریڈ گراؤنڈ میں احتجاجی جلسے کا بھی اعلان کیا ہے۔ اپنے بیان میں عمران خان نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ملکی معیشت چلانے کی کوئی تیاری نہیں تھی، اب اشیاء کی قیمتیں مزید بڑھیں گی، حکومت نےعوام پرمزید بوجھ ڈال دیا ہے، مہنگائی سے بے روزگاری بڑھےگی اور زراعت متاثرہوگی۔ان کا کہنا تھا کہ بجٹ میں عام آدمی کا معاشی قتل کیا گیا ہے، پیٹرول و ڈیزل کی قیمت بڑھا دی ہیں اب یہ پیٹرول و ڈیزل پر لیوی لگا دیں گے۔ یتیموں کی کفالت ،المرا فاونڈیشن اور صوفیہ وڑائچ سابق وزیر اعظم نے مزید کہا کہ سپر ٹیکس کے نفاذ سے چیزیں مزید مہنگی ہوجائیں گی، سپر ٹیکس کی وجہ سے کارپوریٹ ٹیکس 39 فیصد پر چلا جائے گا، بھارت اور بنگلادیش میں کارپوریٹ ٹیکس 25 فیصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ کئی انڈسٹریز نے لوگوں کو نکالنا شروع کردیا ہے۔ سپر ٹیکس کے بعد اسٹاک مارکیٹ پرمنفی اثر آیا ہے، سپر ٹیکس سے پیداواری لاگت بڑھ جائےگی۔تنخواہ دار طبقے پر نئے ٹیکس کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ تنخواہ دار طبقے کے ٹیکس میں مزید اضافہ کردیا گیا ہے، تنخواہ دار پہلے سے مشکل میں تھا مزید ٹیکس بڑھا دیا۔ سود کے خلاف فیصلہ، سٹیٹ بینک اور نجی بینکوں نے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا حکومتی رہنماؤں پر تنقید کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ نیب ترامیم کےذریعے پاکستان کوناکام ریاست بنانےکی طرف لے جارہے ہیں، موجودہ حکومت نے انصاف کا نظام تباہ کردیا ہے، ان کے ذہن میں تھا کہ کیسے این آر او ٹو لینا ہے۔ عمران خان نے ایک بار پھر احتجاج کی کال دے دی.

مزید پڑھ:
Daily Pakistan »
Loading news...
Failed to load news.

سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع نہیں ہوگا، وزیراعظم - ایکسپریس اردو14 ماہ میں معاشی استحکام لانے کی کوشش کریں گے، شہباز شریف Bus London bank me safely deposit kr den gy.. جی بالکل کیونکہ وہ تو میاں صاحب کے اکاونٹ میں جاے گا نئے فلیٹ جو لینے ہیں ھاھاھاھاھا یہ بھی بہت گھٹیا ہے۔ سارا پیسہ لوٹ کر کہے گا کہ ضائع نہیں ہونے دیا

سپر ٹیکس کیخلاف واویلا اور مہناز دانیال کا کرب’’سپرٹیکس‘‘کےخلاف اجارہ داروں نے مفتاح اسماعیل کی تقریر کے دوران ہی کراچی سٹاک ایکس چینج میں ’’یک دم‘‘جی گھبرادینے والی ’’مندی‘‘ کا ماحول بھی بنادیا 👇 مکمل کالم SuperTax Economy StockExchange javeednusrat MiftahIsmail MoIB_Official GovtofPakistan

تنخواہ دار طبقے پر ٹیکس لگائے جانے کے حکومتی فیصلے پر عمران خان کا ردعمل آگیااسلام آباد (ویب ڈیسک) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے حکومت کی جانب سے تنخواہ دار طبقے پر ٹیکس عائد کرنے کے فیصلے پر تنقید کی ہے اور

گاڑیوں پر ٹیکس میں کمی کردی گئیاسلام آباد(مانیٹر نگ ڈیسک) فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر)نے ترمیمی فنانس بل 2022ءکے تحت گاڑیوں پر سی وی ٹی (کیپیٹل ویلیو ٹیکس )کم کر دیا۔ نیوز ویب سائٹ

حکومت نے ادویات پرعائد 17 فیصد سیلز ٹیکس واپس لے لیا، فارما ایسوسی ایشن - ایکسپریس اردوادویات کی قیمتوں میں اضافے کے حوالے سے حکومت سے مذاکرات جاری رہیں گے، چیئرمین فارما سیوٹیکل ایسوسی ایشن قاضی منصور Good Step

حکومت کا ادویات پر عائد 17 فیصد سیلز ٹیکس واپس لینے کا فیصلہفارماسیوٹیکل ایسوسی ایشن نے اسلام آباد میں ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ حکومت نے ادویات پر عائد 17 فیصد سیلز ٹیکس واپس لے لیا ہے۔ Very good decision. Excellent وہ پوچھنا تھا کہ زہر سستا ہوا یا نہیں