اسلام آباد: سرکاری تعلیمی اداروں میں اسکول بیگ لانے کی جھنجھٹ ختم

20/01/2022 1:50:00 PM

نئے تعلیمی سال میں یہ سسٹم لایا جائے...;

Samaatv, Islamabad

بچوں کے لیے اسکول بیگ کندھے پر اٹھا کر تعلیمی اداروں میں لیکر جانا ایک مشکل کام تصور کیا جاتا ہے ، پڑھیےafr12336 کی رپورٹSamaaTV

نئے تعلیمی سال میں یہ سسٹم لایا جائے...;

- Posted: Jan 20, 2022 | Last Updated: 1 hour agoSAMAA |Posted: Jan 20, 2022 | Last Updated: 1 hour agoفائل فوٹواسلام آباد کے وفاقی سرکاری تعلیمی اداروں میں اسکول بیگ لانے کی جھنجھٹ ختم کر دی گئی۔ایک تقریب سے خطاب میں ڈی جی وفاقی نظامت تعلیمات اکرام علی ملک نے اعلان کیا کہ پرائمری کلاسز تک کے بچے اسکول بیگ نہیں لائیں گے۔

ڈی جی کا کہنا تھا کہ نئے تعلیمی سال میں اسلام آباد کے تعلیمی اداروں میں یہ سسٹم لائیں گے، جس کے تحت کتابوں کا ایک سیٹ گھر اور ایک اسکول میں رکھا جائے گا۔یاد رہے کہ بچوں کے لیے اسکول بیگ کندھے پر اٹھا کر تعلیمی اداروں میں لیکر جانا ایک مشکل کام تصور کیا جاتا ہے اور اسکی وجہ سے بچوں کو پھٹوں میں شکایت بھی رہتی ہے۔

مزید پڑھ:
SAMAA TV »

News Beat with Paras Jahanzaib | 25 September 2022

#Newsbeat #parasjahanzaib #samaatv ➽ Subscribe to Samaa News ➽ https://bit.ly/2Wh8Sp8➽ Watch Samaa News Live ➽ https://bit.ly/3oUSwAPStay up-to-date on the m... مزید پڑھ >>

این سی او سی: تعلیمی اداروں کو ہفتے میں 3 دن کرنے کی تجویزZbrdst SaadCho35449015 Dramay fir shoro.....

تعلیمی اداروں میں بڑے پیمانے پر کورونا ویکسینیشن کا فیصلہپاکستان بھر میں کورونا وائرس قابو میں نہ آ سکا، ملک میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو کنٹرول کرنے کے لیے بنائے گئے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ والے علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن لگانے اور تعلیمی اداروں میں بڑے پیمانے پر کورونا ویکسنیشن کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

این سی او سی اجلاس۔۔تعلیمی اداروں کے حوالے سےاہم خبر سامنے آ گئیکورونا وائرس کی تشویشناک صورتحال کے پیش نظر این سی او سی کے اہم اجلاس میں تعلیمی اداروں کی صورتحال کا بھی جائزہ لیا گیا۔ اگر آپکو اردو ادب اور شاعری سے دلچسپی ہے تو برائے مہربانی ہمارے اکاؤنٹ کو فالو کریں۔ شکریہ اگر آپکو اردو ادب اور شاعری سے دلچسپی ہے تو برائے مہربانی ہمارے اکاؤنٹ کو فالو کریں۔ شکریہ

والدین کیلئے اہم خبر ، این سی او سی کا تعلیمی اداروں کے حوالے سے بڑا اعلاناسلام آباد : کورونا کی بگڑتی صورتحال کے پیش 10 فیصد سے زائدشرح والے شہروں میں 50 فیصد حاضری کے ساتھ تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کر دیا۔ Kya Alan E5z8 Kuch bhe nhi bgherti bs enki

اسلام آباد: کورونا کیسز میں اضافہ کے باعث مزید 9 تعلیمی ادارے سیلوفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں عالمی وبا کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ کے باعث مزید 9 تعلیمی اداروں کو سیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ڈی ایچ او اسلام آباد نے

کورنا وائرس کے وار تیزلاہور میں تعلیمی اداروں سے متعلق کیا فیصلہ ہواہے ؟ وزیر تعلیم مراد راس نے اعلان کر دیالاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )صوبائی وزیر تعلیم مراد راس نے کہاہے کہ پہلی سے چھٹی جماعت تک بچوں کی ایک دن میں حاضری 50 فیصد ہو گی اور یہ پابندی 31 جنوری

SAMAA | - Posted: Jan 20, 2022 | Last Updated: 1 hour ago SAMAA | Posted: Jan 20, 2022 | Last Updated: 1 hour ago فائل فوٹو اسلام آباد کے وفاقی سرکاری تعلیمی اداروں میں اسکول بیگ لانے کی جھنجھٹ ختم کر دی گئی۔ ایک تقریب سے خطاب میں ڈی جی وفاقی نظامت تعلیمات اکرام علی ملک نے اعلان کیا کہ پرائمری کلاسز تک کے بچے اسکول بیگ نہیں لائیں گے۔ ڈی جی کا کہنا تھا کہ نئے تعلیمی سال میں اسلام آباد کے تعلیمی اداروں میں یہ سسٹم لائیں گے، جس کے تحت کتابوں کا ایک سیٹ گھر اور ایک اسکول میں رکھا جائے گا۔ یاد رہے کہ بچوں کے لیے اسکول بیگ کندھے پر اٹھا کر تعلیمی اداروں میں لیکر جانا ایک مشکل کام تصور کیا جاتا ہے اور اسکی وجہ سے بچوں کو پھٹوں میں شکایت بھی رہتی ہے۔ تازہ ترین .Published On 18 January,2022 04:36 pm اسلام آباد:(دنیا نیوز) ملک بھر میں کورونا وائرس کے نئے ویرینٹ اومی کرون کے کیسز میں اضافے کے بعد تعلیمی اداروں کو ہفتے میں 3 دن کرنے کی تجویز سامنے آگئی ہے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر (این سی او سی ) کا دوسرا اہم اجلاس ہوا جس میں تعلیمی اداروں کی صورتحال کا بھی جائزہ لیا گیا جبکہ اجلاس میں نئی بندشوں کے حوالے سے مختلف تجاویز زیر غورآئیں۔ اجلاس میں ‏تعلیمی اداروں کو ہفتے میں 3 دن کرنے اور اسلام آباد میں 7 روز کے لیے سکولز کو آن لائن کرنے کی بھی تجویز زیر غور آئی۔ ذرائع کے مطابق این سی او سی اجلاس میں تعلیمی اداروں میں جاری ٹیسٹنگ پر بریفنگ ‏دی گئی ، ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنے والے تعلیمی اداروں کو سیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا جبکہ تعلیمی اداروں میں سٹوڈنٹس و ٹیچرز کی لازمی ویکسینیشن کے لیے اقدامات پر زور دیا گیا ۔  ملک میں کورونا کا پھیلاؤ تیز، 24 گھنٹوں میں مثبت کیسز کی شرح 9.نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کے اجلاس میں ملک میں کورونا وائرس کی موجودہ صورتِ حال کا جائزہ لیا گیا، جبکہ 10 فیصد اور اس سے زائد کورونا کیسز والے علاقوں میں ایس او پیز کے نفاذ کا فیصلہ کر لیا گیا۔ این سی او سی کے مطابق اجلاس میں وفاقی اکائیوں کی مشاورت کے بعد کورونا وائرس کی ایس او پیز پر عمل درآمد کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ملک میں کورونا مثبت کیسز کی شرح ساڑھے 9 فیصد کے قریب ہو گئی نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹرکے مطابق کورونا وائرس کے کیسز کی 10 فیصد شرح سے زائد والے شہروں میں تعلیمی سرگرمیاں محدود کر دی گئی ہیں، جہاں 12 سال سے کم عمر کے بچے متبادل دن اسکول جائیں گے۔ 10 فیصد سے کم کورونا شرح والے علاقوں کے ہوٹلوں اور ریسٹورنٹس میں ویکیسن شدہ افراد کو اِن ڈور اور آؤٹ ڈور ڈائننگ کی اجازت ہو گی، 10 فیصد سے زائد شرح والےعلاقوں میں اِن ڈور ڈائننگ پر 24 جنوری سے مکمل پابندی عائد ہو گی، ٹیک اویز کی سہولت 24 گھنٹے کھلی رہے گی، جبکہ 10 فیصد سے زائد شرح والے علاقوں میں ویکسین شدہ افراد کو آؤٹ ڈور ڈائننگ کی اجازت ہو گی۔ کورونا کی 10 فیصد شرح سے زائد والے اضلاع اور شہروں میں انڈور تقریبات پر پابندی عائد کر دی گئی، 10 فیصد شرح سے زائد والے اضلاع اور شہروں میں آؤٹ ڈور تقریبات میں 300 افراد شرکت کر سکیں گے۔ 10 فیصد سے کم کورونا شرح والے شہروں میں اِن ڈور تقریبات میں 300 ویکسینیٹڈ افراد شرکت کر سکیں گے جبکہ آؤٹ ڈور تقریبات میں 500 ویکسینیٹڈ افراد شرکت کر سکیں گے۔ شادی و تقریبات سے متعلق ایس او پیز و پابندیاں 24 جنوری سے 15 فروری تک نافذ ہوں گی۔ 10 فیصد سے زائد کورونا کیسز شرح والے اضلاع میں جم، سینما، مزاروں، پارکس پر 50 فیصد افراد کو جانے کی اجازت ہو گی، جبکہ کبڈی، پولو، کراٹے، باکسنگ سمیت دیگر کھیلوں پر مکمل پابندی عائد ہو گی۔ ان علاقوں میں پبلک ٹرانسپورٹ 70 فیصد گنجائش کے ساتھ چلائی جائے گی، ٹرینیں 80 فیصد گنجائش کے ساتھ چلائی جائیں گی، دفاتر میں کام نارمل اوقات کار میں چلیں گے، تاہم گھر سے کام کرنے کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ این سی او سی کے مطابق ان پابندیوں کا اطلاق 20 جنوری سے 31 جنوری تک ہو گا، پابندیوں سے متعلق نظرِ ثانی 27 جنوری کو کی جائے گی۔ واضح رہے کہ وفاقی وزارتِ صحت کے حکام نے بتایا ہے کہ کراچی سمیت ملک کے 7 شہروں میں کورونا کیسز کی مثبت شرح 10 فیصد سے زائد ہو گئی ہے۔ پاکستان کورونا مریضوں کے حوالے سے مرتب کی گئی فہرست میں 42 ویں نمبر پر ہے، تاہم یہاں کورونا کیسز کی شرح میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور یہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بڑھ کر ساڑھے 9 فیصد کے قریب ہو گئی، ایکٹیو کیسز کی تعداد 44 ہزار 717 تک جا پہنچی۔ ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں کورونا وائرس کے مثبت کیسز کی شرح 40 فیصد سے تجاوز کر گئی۔ حیدر آباد میں کورونا وائرس کے مثبت کیسز کی شرح 14 فیصد، وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 12 فیصد ہو گئی۔ کورونا وائرس کے مثبت کیسز کی شرح راولپنڈی میں 10 اعشاریہ 26 فیصد، مظفر آباد میں 21 فیصد اور پشاور میں 11 فیصد کے قریب پہنچ گئی۔ ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں کورونا وائرس کے مثبت کیسز کی شرح 40 فیصد سے تجاوز کر گئی۔ دوسری جانب پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے مزید 5 ہزار 472 کیسز سامنے آئے ہیں، مزید 8 مریض اس موذی وباء کے سامنے زندگی کی بازی ہار گئے، اس کے مزید 628 مریض شفایاب ہو گئے، جبکہ مثبت کیسز کی شرح 9 اعشاریہ 48 فیصد پر آ گئی۔ پاکستان بھر میں اب تک 29 ہزار 37 کورونا وائرس کے مریض انتقال کر چکے ہیں جبکہ اس موذی وائرس کے کُل مریضوں کی تعداد 13 لاکھ 38 ہزار 993 ہو چکی ہے۔ قومی خبریں سے مزید.این سی او سی اجلاس میں نئی بندشوں کے حوالے سے مختلف تجاویز پر غور کیا گیا ،تعلیمی اداروں کو ہفتے میں 3 دن  بند کرنے کے حوالے سے بھی تجویز دی گئی جبکہ اسلام آباد میں 7 روز کے لیے سکولز کو آن لائن کرنے کی بھی تجویز ہے۔ یہ بھی پڑھیں: سعودی عرب کا عمرہ زائرین کیلئے نیا سرکلر جاری این سی او سی اجلاس میں تعلیمی اداروں میں جاری ٹیسٹنگ پر بریفنگ  بھی دی گئی ، ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنے والے تعلیمی اداروں کو سیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔تعلیمی اداروں میں سٹوڈنٹس و ٹیچرز کی لازمی ویکسینیشن کے لیے اقدامات پر زور دیا گیا ہے۔  یہ بھی پڑھیں:.