آئی ایس آئی کیسے کام کرتی ہے؟ - BBC News اردو

آئی ایس آئی کیسے کام کرتی ہے؟

26/10/2021 4:58:00 PM

آئی ایس آئی کیسے کام کرتی ہے؟

اس ادارے کے بارے میں ایسا کیا ہے کہ پاکستان کے اندر اور باہر سے اسے تنقید کا سامنا رہتا ہے؟ ایسا کیوں ہے کہ سیاسی تناظر میں کسی بھی اغوا، قتل، دھمکی کا الزام آئی ایس آئی پر دھر دیا جاتا ہے؟

انھوں نے کہا کہ ’افغانستان میں امن مذاکرات ہوں تو پاکستان اس میں موجود ہوتا ہے، طالبان کابل میں حکومت بنائیں تو دنیا ہماری طرف دیکھتی ہے، افغانستان سے مغربی سفارتکاروں کے انخلا کا معاملہ ہو تو ہماری مدد درکار ہوتی ہے، آپ جس بھی معاملے کی بات کریں، اس میں ہماری اہمیت دکھائی دے گی۔‘

سعودی عرب نے عمرہ زائرین کے قیام کی مدت 10 کے بجائے 30دن کردی اسکول بند کرنے کا اعلان لیبیا کی عدالت نے قذافی کے بیٹے کو صدارتی انتخاب لڑنے کی اجازت دے دی - ایکسپریس اردو

افغان دارالحکومت کابل پر طالبان کے قبضے کے بعد سے اب تک عہدے پر مدت ملازمت مکمل کرنے والے ڈی جی آئی ایس آئی نے دو بار کابل کے دورے کیے ہیں جہاں وہ سینئر طالبان رہنماﺅں سے ملے۔ اسی وقت پاکستان واشگنٹن میں افغانستان صورتحال پر مخصوص توجہ مبذول کیے امریکہ کے ساتھ بات چیت کر رہا تھا۔

1979 سے 2021 تک کے عرصے کے دوران آئی ایس آئی افغان صورتحال اور اس کے پاکستان پر پڑنے والے اثرات سے نمٹنے میں مصروف رہی۔ ایک سابق ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل آئی ایس آئی نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بی بی سی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’بلاشبہ یہ آئی ایس آئی کی بہت بڑی کامیابی ہے کہ ہم نے پاکستان کو بڑے نقصان یا افغان صورتحال کے نتیجے میں آنے والے بڑے منفی اثرات سے بچایا اور گزشتہ چالیس سال کے دوران خطے میں اپنے سلامتی کے اہداف کو حاصل کیا۔‘ headtopics.com

آئی ایس آئی کا تنظیمی ڈھانچہآئی ایس آئی کی بنیادی ذمہ داری ملک کی مسلح افواج کا عملی اور نظریاتی تحفظ یقینی بنانا ہے جس کا اظہار اس ادارے کے نام یعنی انٹر سروسز انٹیلی جنس سے عیاں ہوتا ہے۔ آئی ایس آئی میں سویلین بھی اعلیٰ عہدوں پر فائز ہیں لیکن وہ اس ادارے کے تنظمی ڈھانچے میں غلبہ یا طاقت نہیں رکھتے۔

مصنف ڈاکٹر ہین ایچ کیسلنگ نے اپنی کتاب ’آئی ایس آئی آف پاکستان‘ میں اس ادارے کا 'آرگنائزیشنل چارٹ' (تنظیمی خاکہ) شامل کیا ہے۔ جرمن سیاسی ماہر ڈاکٹر کیسلنگ کی اسے کتاب کے مطابق انھوں نے 1989 سے 2002 کا عرصہ پاکستان میں گزارا ہے۔ انھوں نے اپنی کتاب میں واضح کیا ہے کہ یہ ایک جدید آرگنائزیشن ہے جس کی توجہ کا بنیادی محور خفیہ معلومات جمع کرنا ہے۔ ان کے مطابق سات ڈائریکٹوریٹس اور محکموں کی متعدد پرتیں یا تہوں کے علاوہ 'وِنگز' (منسلک شعبے) ہیں جو کسی بھی جدید انٹیلی جنس ایجنسی کی طرح آئی ایس آئی میں بھی ہیں۔

آئی ایس آئی کے تنظیمی ڈھانچے میں فوج کا غلبہ زیادہ ہے، اگرچہ بحریہ اور فضائیہ سے تعلق رکھنے والے افسران بھی تنظیم کا حصہ ہیں۔ ڈی جی آئی ایس آئی غیر ملکی انٹیلی جنس ایجنسیوں اور اسلام آباد میں قائم غیر ملکی سفارت خانوں میں تعینات فوجی اتاشیوں سے رابطوں کے مرکز کا کردار ادا کرتے ہیں۔ اسی طرح درپردہ وہ انٹیلی جنس امور پر وزیراعظم کے چیف ایڈوائزر کے طور پر کام کرتے ہیں۔

ایک سینئر فوجی افسر نے بی بی سی کو بتایا کہ مسلح افواج آرمی، ائیر فورس اور نیوی میں ایک الگ انٹیلی جنس ایجنسی ہوتی ہے جس میں ملٹری انٹیلی جنس، ائیر انٹیلی جنس اور نیول انٹیلی جنس شامل ہیں جو اپنی اپنی متعلقہ فوج کے لیے ضروری معلومات جمع کرتی اور فرائض بجا لاتی ہیں۔ headtopics.com

حکومت نے سود کی مد میں‌ ادائیگی کے لیے 3 ہزار ارب روپے قرض لیا، علی محمد خان اظہر محمود نے بطور ہیڈ کوچ ٹیم کو جوائن کرلیا آئی ایم ایف نے قرض کے بدلے ہمارا سب کچھ لکھوا لیا: گورنر پنجاب چودھری سرور

آئی ایس آئی اور ان افواج کی ہر متعلقہ انٹیلی جنس ایجنسی کے امور کار میں کبھی کبھار ایک ہی قسم کی معلومات بھی اکٹھی کر لی جاتی ہیں کیونکہ سب ہی فوجی پیش رفت پر نظر رکھتی ہیں اور دشمن کی چالوں اور حرکتوں کی نگرانی کرتی ہیں۔ لیکن فوج کی ترکیب میں دیگر انٹیلی جنس ایجنسیوں کے مقابلے میں آئی ایس آئی سب سے بڑی، سب سے زیادہ مؤثر اور طاقتور انٹیلی جنس ایجنسی سمجھی جاتی ہے۔

آئی ایس آئی ملک میں سب سے بڑی اور وسیع انٹیلی جنس ایجنسی تصور ہوتی ہے لیکن اس میں افرادی قوت کتنی ہے، اس بارے میں مقامی میڈیا یا غیر سرکاری شعبے میں کوئی تخمینہ یا اندازے دستیاب نہیں ہیں۔ آئی ایس آئی کے بجٹ کو کبھی عوام کے سامنے نہیں لایا گیا تاہم واشنگٹن میں قائم فیڈریشن آف امریکن سائنٹسٹس کی کئی برس پہلے کی جانے والی تحقیق کے مطابق ’آئی ایس آئی میں دس ہزار افسران اور سٹاف ممبر ہیں، جن میں مخبر اور اطلاع دینے والے افراد شامل نہیں۔ اطلاعات کے مطابق یہ چھ سے آٹھ ڈویژنز پر مشتمل ہے۔‘

،تصویر کا ذریعہPrime Minister's Office, Pakistan،تصویر کا کیپشنپاکستان میں حالیہ دنوں میں یہ بحث بھی ہوتی رہی ہے کہ آخر ڈی جی آئی ایس آئی کی تعیناتی سے متعلق قواعد کیا ہیں (فائل فوٹو)'کاؤنٹر انٹیلی جنس آپریشنز'فوجی ماہرین کا کہنا ہے کہ آئی ایس آئی کا 'آرگنائزیشنل ڈیزائن' (تنظیمی نقشہ) بنیادی طور پر اسے 'کاؤنٹر انٹیلی جنس آپریشنز' (جوابی خفیہ کارروائیوں) پر توجہ مرکوز کرنے والی انٹیلی جنس ایجنسی بناتا ہے۔ لیکن اس کی کیا وجہ ہے؟

بریگیڈئیر (ر) فیروز ایچ خان وہ افسر تھے جنہوں نے پاکستان کی سکیورٹی اسٹیبلشمنٹ میں کلیدی عہدوں پر فرائض انجام دیے اورEating Grassکے عنوان سے کتاب تصنیف کی۔بریگیڈئیر (ر) فیروز ایچ خان نے اپنی کتاب میں لکھا ہے کہ ’پاکستان کے تیسرے آمر جنرل ضیا الحق کو افغانستان میں سویت یونین کی مداخلت نے پریشان کر دیا تھا۔ اس پریشانی کے پیچھے بڑی وجہ بلاشبہ یہ حقیقت کارفرما تھی کہ طاقت کے نشے میں بدمست عالمی قوت ہمارے ملک کے دروازے پر دستک دے رہی تھی۔ ایسی صورتحال میں کارٹر انتظامیہ کی طرف سے فراہم کی جانے والی فوجی اور مالی مدد اطمینان کا ذریعہ تھی لیکن فوجی آمر کے لیے امریکی پیشکش ایک اور طرح کی پریشانی کا باعث تھی۔ امریکی مدد پاکستان کی معیشت کو توانا کرے گی اور فوجی استعداد کار میں اضافہ کرے گی لیکن دوسری طرف امریکہ کے ساتھ انٹیلی جنس تعاون کے لیے زیادہ معلومات اور پاکستان کے اندر نگرانی کی سرگرمیاں درکار ہوں گی جس سے پاکستان کے قومی راز محفوظ رکھنے کی مشکل درپیش آسکتی تھی۔‘ headtopics.com

مزید پڑھ: BBC News اردو »

قرضوں کے بھیانک دائرے میں پھنسے ہوئے ہیں، وزیراعظم

ملک چلانے کیلئے پیسے نہیں اس لئے قرض لیناپڑتا...;

اگر بی بی سی کو پتا چل جائے کے آئی ایس آئی کیسے کام کرتی ہے تو پھر آئی آیس آئی کہاں کی ، وہ کیسے کام کرتی ہے صرف وہی جانتے ہیں ، باقی سب مفروضے ہیں جعلی ٹرولز بھرتی کرکے قوم کے پیسے جھوٹے پراپیگنڈے میں صرف کرکے :) پاک فوج کی عظمت کو سلام لوگوں کا قتل عام، اغواء برائے تاوان، دہشتگردی، چوری ڈکیتی، منشیات فروشی، یہی کام کرتی۔

تم لوگوں کو ککھ بھی نہیں پتا وہ کيسے کام کرتی ہے يہ وہ آپ کو کيوں بتاۓگی ؟ کشمیر فتح کرے تب ھم مانے ISI کام نہیں کرتی تھوڑے سے صحافیوں اور دو تین چینل کو فون کر کر کے ڈراتے ہیں کچھ بلوچستان والوں کو ہفتہ کے ہفتہ مارتے ہیں پہلے پشتون کو مارتے تھے لیکن اللہ کا شکر ہے اب وہ خود ہی کافی ہیں ایک دوسرے کو مارنے کے لیے امریکہ سے تعلقات بہتر ہونے کے بعد 😂

لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم ڈی جی آئی ایس آئی تعینات، نوٹی فکیشن جاری - ایکسپریس اردولیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم ڈی جی آئی ایس آئی تعینات، نوٹی فکیشن جاری DGISI Notification dates are wrong

Yeh agency itni sasti nahi hy k har chutiya itna k kaam krne ka tareqa janta ho.. bbcurdu ap ko chotiya nahi kaha pls dont mind کوئی کام نہیں کرتی ہڈحرا م ۔۔کاپی پیسٹ کرتی اور پیسے ادا نہیں کرتی کاپی رائٹس کے ۔۔ ISI آئی ایس آئی ہر کام مکمل رازداری اور پلاننگ اور اللّٰہ پر توکل کرکے کرتی ہے یہی وجہ ہے کہ دنیا سے اٹھنے والا دشمن کا شور بتاتا ہے کہ آئی ایس آئی کامیاب ہوچکی ہے 😎

Same Like Saheen Bowling thrash the opposite if they’re against us okay, and don’t tweet like that wasted ! BBC urdu ko BBC walay dosri baar salaan nahi daitay aur BBC urdu ko ISI ka pata hay.....wah ki chawal mari hay. کبھی ایم آئی سکس کا بھی بتا دینا vigo?

لیفٹیننٹ جنرل ندیم انجم ڈی جی آئی ایس آئی تعیناتنوٹیفکیشن جاری اطلاق 20 نومبر سے ہوگا05:45 PM, 26 Oct, 2021, اہم خبریں, پاکستان, اسلام آباد : وزیر اعظم عمران خان نے لیفٹیننٹ جنرل ندیم انجم کو ڈی جی آئی ایس آئی تعینات کرنے کا نوٹیفکیشن جاری وگڑے دگڑے داں پیر ڈنڈا آخر ملکی سلامتی کا بول بالا ہو گیا، جو چووولیں مارنے پر تلا ہوا، اسے دھول چاٹنی پڑی

وزیراعظم نے نئے ڈی جی آئی ایس آئی کی تقرری کی منظوری دے دی -اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے نئے ڈی جی آئی ایس آئی کی تقرری کی منظوری دے دی۔ اے آر وائی نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم کی بطور ڈی جی آئی ایس آئی تقرری کا نوٹی فکیشن جاری کیا گیا۔ اعلامیے کے مطابق ڈی جی […] 🤣 وہ بس بتانا یہ تھا ابا ابا ہوتا ہے نکا نکا ہوتا ہے یوتھیو اعلان ختم ہوا Aik dafa phr thook k chat liya

وزیراعظم نے ڈی جی آئی ایس آئی کی تقرری کی منظوری دے دی -لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم کی بطور ڈی جی آئی ایس آئی تقرری کا نوٹی فکیشن جاری مزید پڑھیں : ARYNewsUrdu DGISI NadeemAnjum

سیف علی جنجوعہ کا یوم شہادت ڈی جی آئی ایس پی آر کا خراج عقیدتسیف علی جنجوعہ کا یوم شہادت ،ڈی جی آئی ایس پی آر کا خراج عقیدت ISPR PakArmy Pays Tribute NaikSaifAliJanjua Martyrdom Anniversary OfficialDGISPR GovtofPakistan Pakistan

جامع مذاکرات کیلئے پاکستان تیار ہے، کیا بھارت بھی تیار ہے؟ اسد عمروفاقی وزیر اسد عمر کا کہنا ہے کہ جامع مذاکرات سے مستقبل میں امن اور خوش حالی حاصل ہوسکتی ہے، جس کے لیے پاکستان تیار ہے، کیا بھارت بھی تیار ہے؟ تفصیلات جانیے: DailyJang